پینین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(پنین سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search
پینین
Pinyin
چینی 拼音
چینی صوتی حروف کے لئے منصوبہ
Scheme for the Chinese Phonetic Alphabet
سادہ چینی 汉语拼音方案
روایتی چینی 漢語拼音方案


ہانیو پینین (انگریزی: Hanyu Pinyin) (آسان چینی: 汉语拼音; روایتی چینی: 漢語拼音) جسے عام طور پر صرف پینین یا پن ین کہا جاتا ہے، اصل سرزمین چین اور کسی حد تک تائیوان میں معیاری چینی کی رومن نویسی کا رسمی نظام ہے۔ اسے عام طور پر معیاری مینڈارن چینی کو سکھانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے جو عام طور پر چینی رسم الخط میں لکھی جاتی ہے۔

پینین نظام 1950ء کی دہائی میں کئی ماہر لسانیات جن میں ژؤ یونگوانگ (Zhou Youguang) بھی شامل تھے نے تیار کیا، [1] جو اس سے قبل چینی رومن نویسی نظاموں سے اخذ کیا گیا۔ حکومت چین نے اسے 1958ء مین شائع کیا اور تب سے اس میں کئی بار تندیلیاں بھی کی جا چکی ہیں۔ [2] بین الاقوامی تنظیم برائے معیاریت نے 1982ء میں اسے بطور ایک بین الاقومی معیار اپنایا۔ [3] اس کے بعد 1986ء میں اقوام متحدہ نے بھی اسے بطور جینی رومن نویسی اپنایا۔ [1] 2009ء میں تائیوان نے بھی اسے سرکاری معیار کے طور پر اپنایا۔ [4][5] لیکن "کچھ شہروں، کاروباروں اور تنظیموں، خاص طور پر جنوبی تائیوان میں اسے قبول نہیں کیا" لہذا اس کے کئی حریف چینی رومن نویسی نظام بھی یہاں مستعمل ہیں۔ [6]

لفظ ہانیو (Hànyǔ) (آسان چینی: 汉语; روایتی چینی: 漢語) کے معنی ہان چینی لوگوں کی "گفتاری زبان" کے ہیں جبکہ (Pīnyīn) (拼音) کے لفظی معنی "صوت ہجہ" کے ہیں۔ [7]

مزید پڑھیے[ترمیم]

  • Johnson K Gao۔ Pinyin shorthand: a bilingual handbook۔ Jack Sun۔ آئی ایس بی این 9781599712512۔
  • Richard L. Kimball۔ Quick reference Chinese : a practical guide to Mandarin for beginners and travelers in English, Pinyin romanization, and Chinese characters۔ China Books & Periodicals۔ آئی ایس بی این 9780835120364۔
  • Pinyin Chinese-English dictionary (English زبان میں)۔ Beijing: Commercial Press۔ 1979۔ آئی ایس بی این 9780471867968۔
  • Yin Binyong (尹斌庸)؛ Mary Felley (1990)۔ Han yü pʻin yin ho cheng tzʻu fa (English زبان میں)۔ آئی ایس بی این 9787800521485۔

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب Margalit Fox (14 جنوری 2017)۔ "Zhou Youguang, Who Made Writing Chinese as Simple as ABC, Dies at 111"۔ The New York Times۔
  2. "Pinyin celebrates 50th birthday"۔ شینہوا نیوز ایجنسی۔ 2008-02-11۔ اخذ شدہ بتاریخ 2008-09-20۔
  3. "ISO 7098:1982 – Documentation – Romanization of Chinese"۔ اخذ شدہ بتاریخ 2009-03-01۔
  4. Shih Hsiu-Chuan (2008-09-18)۔ "Hanyu Pinyin to be standard system in 2009"۔ Taipei Times۔ صفحہ 2۔
  5. "Government to improve English-friendly environment"۔ The China Post۔ 18 ستمبر 2008۔ مورخہ 19 ستمبر 2008 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  6. John F. Copper (2015)۔ Historical Dictionary of Taiwan (Republic of China۔ Lanham: Rowman & Littlefield۔ صفحہ xv۔ آئی ایس بی این 9781442243064۔ اخذ شدہ بتاریخ 4 دسمبر 2017۔
  7. The online version of the canonical Guoyu Cidian (《國語辭典》) defines this term as: 標語音﹑不標語義的符號系統,足以明確紀錄某一種語言。 'a system of symbols for notation of the sounds of words, rather than for their meanings, that is sufficient to accurately record some language'. See this entry online.[مردہ ربط] Retrieved 14 September 2012.