الیکٹرونک اوسی لیٹر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

الیکٹرانک اوسی لیٹر ایک ایسا الیکٹرونک سرکٹ ہوتا ہے جو بار بار ایک ہی جیسا آوٹ پٹ سگنل پیدا کرتا ہے جو عام طور پر انالوگ سرکٹ میں sine wave یا ڈیجیٹل سرکٹ میں square wave کی شکل رکھتا ہے۔ ایسے اوسی لیٹر کی آوٹ پٹ کی اور بھی بے شمار شکلیں ہو سکتی ہیں۔ یہ اوسی لیٹر الیکٹرونک کی دنیا میں بے حد اہمیت کے حامل ہیں اور بہت ہی کثرت سے استعمال کیئے جاتے ہیں۔
شروع شروع میں یہ اوسی لیٹر ریڈیو سگنل کی ٹرانسمشن کے لیئے استعمال ہوئے لیکن وقت کے ساتھ انکا استعمال بڑھتا چلا گیا۔ آج یہ ریڈیو ٹرانسمٹر، ریڈیو ریسیور، گھڑی، ٹی وی، کمپیوٹر، موبائل فون، ویڈیو گیم، موسیقی کے آلات اور دوسری بے شمار الیکٹرونک اشیاء میں استعمال ہوتے ہیں۔

الیکٹرونک اوسی لیٹر کی آوٹ پٹ مختلف شکل کی ہو سکتی ہیں۔

الیکٹرونک اوسیلیٹر بنانے کے ہزاروں طرح کے سرکٹ ممکن ہیں۔ ہر سرکٹ کی خوبیاں خامیاں دوسرے سرکٹ سے مختلف ہوتی ہیں۔


ایک کوائل اور کیپیسٹر سے بناسادہ ریزوننٹ ٹینک سرکٹ


اصول[ترمیم]

اگر ایک چارج شدہ کیپیسٹر کو ایک برقی تاروں کے لچھے (کوائل) کے ساتھ متوازی جوڑ دیا جائے تو اس سرکٹ میں کچھ دیر کے لیئے برقی ارتعاش (oscillation) پیدا ہو جاتا ہے۔ لیکن جس طرح پنڈولم کا جھولنا کچھ دیر بعد رک جاتا ہے بالکل اسی طرح اس کیپیسٹر اور کوائل سے بنے resonant tank circuit کی اوسی لیشن بھی کچھ دیر بعد ختم ہو جاتی ہے۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ اوسی لیشن جاری رکھنے کے لیئے مسلسل توانائی کا مہیا ہونا ضروری ہے ورنہ یہ damped oscillation ہو گی۔ اس وجہ سے الیکٹرونک اوسی لیٹر میں لازماً ایک amplifier ہوتا ہے جو مہیا کردہ وولٹیج کی توانائی سے ان پٹ سگنل کو طاقتور آوٹ پٹ میں تبدیل کر دیتا ہے اور پھر اس آوٹ پٹ کا ایک معمولی سا حصہ فلٹر سے گزار کر دوبارہ ان پٹ میں ڈال دیتا ہے (جسے feedback کہتے ہیں)۔ اس طرح اوسی لیشن برقرار رہتی ہے۔

سادہ اوسی لیٹر کا بنیادی خاکہ۔











اگر اس سرکٹ میں فلٹر استعمال نہ کیا جائے تو غیر ضروری فریکوئنسیاں بھی ایمپلیفائر تک پہنچ کر ایمپلیفائی ہو جاتی ہیں جس سے آوٹ پٹ میں شور (noise) آ جاتا ہے۔ ویسے تو فلٹر کے لیئے LC اور RC فلٹر بھی استعمال ہو سکتے ہیں مگر سب سے بہترین نتیجہ حاصل کرنے کے لیئے کوارٹز کے piezoelectric کرسٹل استعمال کیئے جاتے ہیں۔

مزید دیکھیئے[ترمیم]