امریندر سنگھ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
امریندر سنگھ
Captain Amarinder Singh.jpg 

مناصب
وزیر اعلیٰ پنجاب   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
26 فروری 2002  – 1 مارچ 2007 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png پرکاش سنگھ بادل 
پرکاش سنگھ بادل  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
رکن سولہویں لوک سبھا[1]   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکن مدت
26 مئی 2014  – 2016 
حلقہ انتخاب امرتسر 
پارلیمانی مدت 16ویں لوک سبھا 
وزیر اعلیٰ پنجاب   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آغاز منصب
16 مارچ 2017 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png پرکاش سنگھ بادل 
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 11 مارچ 1942 (78 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پٹیالہ  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of India.svg بھارت[1]
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت انڈین نیشنل کانگریس[1]  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ مہارانی مہیندر کور  ویکی ڈیٹا پر والدہ (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان[1]  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر باضابطہ ویب سائٹ (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

کیپٹن امریندر سنگھ (پیدائش 11 مارچ 1942ء)[2] ایک بھارتی سیاست دان جو بھارتی پنجاب کے موجودہ اور چھبیسویں وزیر اعلیٰ ہیں۔[3] وہ پٹیالہ سے قانون ساز اسمبلی کے رکن[4] ہونے کے علاوہ انڈین نیشنل کانگریس کے ریاستی گروپ پنجاب پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ہیں۔[5] وہ 2002ء سے 2007ء تک بھی بھارتی پنجاب کے وزیر اعلیٰ رہے ہیں۔[6] ان کے والد یادویندر سنگھ پٹیالہ کی نوابی ریاست کے آخری مہاراجا تھے۔[6] انہوں نے سنہ 1963ء سے سنہ 1966ء تک بھارتی فوج میں خدمات بھی سر انجام دیں۔[7] سنہ 1980ء میں پہلی مرتبہ لوک سبھا کی نشست جیتے تھے۔[6] وہ اس وقت پنجاب اردو اکیڈمی کے چیئرمین کے طور پر بھی خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔[8]

نجی زندگی[ترمیم]

امریندر سنگھ پٹیالہ کے مہاراجا یادویندر سنگھ اور مہارانی موہندر کور کے صاحبزادے ہیں، اس شاہی سلسلے کا تعلق سدھو براڑ نسب کے پھلکیاں خاندان سے ہے۔[9] انہوں نے ویلہم بوائز اسکول اور لارنس اسکول سناور سے تعلیم حاصل کی۔[10] اس کے بعد دی دون اسکول، دہرہ دون سے تعلیم پائی۔[11] ان کا ایک بیٹا رانیندر سنگھ اور ایک بیٹ جے ایندر کور، جو دہلی کے کاروباری شخص گرپال سنگھ سے شادی شدہ ہے۔[12] ان کی بیوی، پرنیت کور رکن پارلیمان اور سنہ 2009ء سے 2014ء تک وزیر مملکت برائے امورِ خارجہ رہیں۔

ان کی بڑی بہن ہیمندر کور کی شادی سابق وزیر خارجہ کنور نٹور سنگھ سے ہوئی تھی۔ ان کا شرومنی اکالی دل (ا) کے صدر اور سابق آئی پی ایس آفیسر سمرنجیت سنگھ من سے بھی رشتہ ہے۔ سمرنجیت سنگھ من کی بیوی اور امریندر سنگھ کی بیوی پرنیت کور بہنیں ہیں۔

فوجی زندگی[ترمیم]

وہ قومی دفاعی اکادمی اور بھارتی فوجی اکادمی سے تعلیم حاصل کرنے کے بعد جون 1963ء میں بھارتی فوج میں شامل ہوئے اور سنہ 1965ء کے اوائل میں سبکدوش ہو گئے۔ انہوں نے دوبارہ فوج میں شمولیت اختیار کی اور وہ 1965ء کی پاک بھارت جنگ میں کیپٹن تھے۔[13][14] انہوں نے سکھ رجمنٹ میں بھی خدمات سر انجام دیں۔[15]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت https://eci.gov.in/files/category/97-general-election-2014/
  2. "Punjab Live: Modi Congratulates Amarinder, Wishes Him Happy B'Day". دی کوِنٹ. مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 مارچ 2017.  Check date values in: |access-date=, |archive-date= (معاونت)
  3. "Amarinder Singh sworn in as Punjab CM". دی ہندو. دی ہندو. 16 مارچ 2017. مؤرشف من الأصل في 24 دسمبر 2018. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2017. 
  4. گوسوامی، دیو. "Punjab election results 2017: Full list of winners". انڈیا ٹوڈے. لِونگ میڈیا انڈیا لمیٹڈ. مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2017.  Check date values in: |access-date=, |archive-date= (معاونت)
  5. "Congress In States – Punjab". inc.in. آل انڈیا کانگریس کمیٹی. مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2017.  Check date values in: |access-date=, |archive-date= (معاونت)
  6. ^ ا ب پ "Who is Capt Amarinder Singh? Everything you need to know". دی انڈین ایکسپریس. ایکسپریس ویب ڈیسک. 16 مارچ 2017. مؤرشف من الأصل في 24 دسمبر 2018. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2017. 
  7. "Captain Amarinder back in charge in Punjab for second time". دی نیو انڈین ایکسپریس. PTI. 16 مارچ 2017. مؤرشف من الأصل في 24 دسمبر 2018. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2017. 
  8. "Punjab Urdu Academy". www.punjaburduacademy.com (انگریزی میں). مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 2018-02-16.  Check date values in: |archive-date= (معاونت)
  9. "JIND". www.royalark.net. مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ.  Check date values in: |archive-date= (معاونت)
  10. شرما، پراتُل (19 جنوری 2012). "Captain goes all guns blazing: Congress's Amarinder Singh insists he hasn't mellowed and is sure of victory in Punjab as he takes on the Badals". ڈیلی میل. لندن. مؤرشف من الأصل في 24 دسمبر 2018. 
  11. "'Seven Doscos in 15th Lok Sabha'". دی انڈین ایکسپریس. 31 مئی 2009. 
  12. "Himachal Pradesh CM's daughter to wed Amarinder's grandson". مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ.  Check date values in: |archive-date= (معاونت)
  13. 1965 War, the Inside Story: Defence Minister Y.B. Chavan's Diary of India-Pakistan War. اٹلانٹک پبلشر اینڈ ڈسٹ. 1 جنوری 2007. صفحات xii. اخذ شدہ بتاریخ 13 مارچ 2017.  Check date values in: |access-date=, |date= (معاونت)
  14. "Cong, SAD lay claim to Abdul Hamid Hold parallel rallies to pay homage". دی ٹریبیون انڈیا. 9 ستمبر 2003. مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 مارچ 2017.  Check date values in: |access-date=, |date=, |archive-date= (معاونت)
  15. "Army's account of 1965 war padded, says Capt's new book". ہندوستان ٹائمز. مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 مارچ 2017.  Check date values in: |access-date=, |archive-date= (معاونت)