ایزیوٹروپ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

دو یا زیادہ مایعات کے محلول جنہیں کسری کشید (fractional distillation) سے الگ الگ نہ کیا جا سکے، ایزیوٹروپ (Azeotrope) کہلاتے ہیں۔ چونکہ ابالنے سے ان کے اجزائے ترکیبی (composition) نہیں بدلتے اس لیے انہیں constant boiling mixture بھی کہتے ہیں۔

کسری کشید کا بنیادی اصول[ترمیم]

پوزیٹو ایزیوٹروپ کی فیز ڈایا گرام۔ جب مائع کی ترکیب Aکی حالت میں ہوتی ہے تو اس کے بخارات کی ترکیب B کی حالت میں ہوتی ہے۔ گراف کی سرخ اور کالی لکیریں جہاں ایک دوسرے سے ملتی ہیں (تیر کا نشان) اُس ترکیب پر محلول ایزیوٹروپ بن جاتا ہے۔

اگر وزن کے لحاظ سے 50 فیصد پانی اور 50 فیصد خالص شراب (ایتھائل الکحل یا ایتھینول) کو ملا کر گرم کیا جائے تو اس کے بخارات میں شراب کی مقدار 80 فیصد اور پانی کی مقدار 20 فیصد ہوتی ہے کیونکہ پانی کے مقابلے میں شراب کم تر درجہ حرارت پر ابلنے لگتی ہے۔ اگر ان بخارات کو ٹھنڈا کر کے مائع بنا لیا جائے اور پھر دوبارہ گرم کیا جائے تو شراب کی مقداردوبارہ بڑھ جائے گی اور 80 سے 87 فیصد ہو جایئگی۔ کئی دفعہ یہ عمل دُہرانے کے بعد جو محلول حاصل ہو گا اسمیں شراب کی مقدار 95.63 فیصد اور پانی کی مقدار 4.37 فیصد ہو گی۔ یہ محلول پانی اور شراب کا ایزیوٹروپ محلول ہے کیونکہ جب اسے گرم کیا جاتا ہے تو اس کے بخارات میں پانی اور شراب کی مقدار بالکل وہی ہوتی ہے جتنی محلول کی حالت میں تھی۔ اب مزید کسری کشید سے شراب میں موجود بقیہ پانی کم نہیں کیا جا سکتا۔

مثالیں[ترمیم]

قسمیں[ترمیم]

  • جب ایزیوٹروپ کے ابلنے کا درجہ حرارت اس کے دونوں خالص اجزا کے ابلنے کے درجہ حرارت سے بھی زیادہ ہوتا ہے تو اسے نیگیٹو ایزیوٹروپ کہتے ہیں۔ مثال کے طور پر نائٹرک ایسڈ اور ہائیڈروکلورک ایسڈ (نمک کا تیزاب
  • جب ایزیوٹروپ کے ابلنے کا درجہ حرارت اس کے دونوں خالص اجزا کے ابلنے کے درجہ حرارت سے بھی کم ہوتا ہے تو اسے پازیٹو ایزیوٹروپ کہتے ہیں جیسے شراب اور پانی۔ خالص شراب 78.4 °C پر ابلتی ہے۔ پانی 100 °C پر ابلتا ہے۔ مگر ان دونوں کا ایزیوٹروپ محلول 78.2 °C پر ہی ابل جاتا ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]