تاج المآثر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تاج المآثر حسن نظامی نیشاپوری کی فارسی تصنیف ہے۔ اس میں 1191ء سے 1217ء یعنی سلطان شہاب الدین غوری سے شمس الدین التمش کے دورِ حکومت تک کے حالات قلمبند ہیں۔ یہ فنِ تاریخ پر پہلی کتاب جو فارسی زبان میں دہلی میں لکھی گئی۔اسلوبِ بیان بہت مرصع ہے۔ واقعات کی تحریر سے زیادہ زبان کی خوبی پر نظر رکھی گئی ہے۔اس کتاب میں عربی الفاظ کا استعمال بھی زیادہ ہے اور کثرت سے اشعار بھی نقل کیے گئے ہیں۔[1] مصنف نیشاپور میں پیدا ہوئے لیکن خراسان کے فتنہ و فساد ست تنگ آ کر سلطان شمس الدین التمش کے عہد میں ہندوستان وارد ہوئے۔ دہلی پہنچ کر قاضی القضاۃ شریف الملک سے ان کی ملاقات ہوئی اور انہیں کے مشورے پر انہوں نے یہ تاریخ مرتب کی۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جامع اردو انسائیکلوپیڈیا (جلد-1 ادبیات)، قومی کونسل برائے فروغِ اردو زبان، نئی دہلی، 2003ء، ص 162
  2. نبی احمد سندیلوی، تذکرہ مورخین، 1936ء، ص 19