حکیم احمد شجاع

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حکیم احمد شجاع
معلومات شخصیت
پیدائش 4 November 1893
لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 4 January 1969 (aged 76)[1]
لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ شاعر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) ویکی ڈیٹا پر

حکیم احمد شجاع (پیدائش: 4 نومبر 1893ء— وفات: 4 جنوری 1969ء) اردو اور فارسی شاعر تھے۔

سوانح[ترمیم]

ڈراما نگار اور شاعر 1914ء میں میرٹھ کالج سے بی اے کیا اور وہیں انگریزی اور تاریخ کے اسسٹنٹ پروفیسر مقرر ہوئے۔ چند ماہ بعد حیدرآباد چلےگئے۔ لیکن وہاں بھی زیادہ دیر تک نہ رہ سکے اور لاہور چلے آئے۔ لاہور سے رسالہ ہزار داستان نکالا۔ پنجاب لیجسلیٹو کونسل میں مترجم مقرر ہوئے اور تقسیم ہند سے قبل پنجاب اسمبلی میں ڈپٹی سیکرٹری کے عہدے تک پہنچے۔ تقسیم ملک کے بعد سیکرٹری بنے۔ ڈراما نگاری میں آغا حشر کا تتبع کیا۔ زیادہ تر معاشرتی ڈرامے لکھے۔ مثلا باپ کا گناہ، بھارت کا لال، آخری فرعون، جان باز، حسن کی قیمت، متعدد فلمی کہانیوں کے بھی مصنف ہیں۔ نظموں کا مجموعہ گردکارواں کے نام سے چھپ چکا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب Sarwat Ali۔ "A family tradition: Remembering Hakim Ahmad Shuja and his contributions for theatre, radio and film"۔ The News International (newspaper)۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2018۔