خورشید ناظر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
خورشید ناظر
ادیب
پیدائشی نامخورشید احمد
عرفیتخورشید ناظر
قلمی نامخورشید ناظر
ولادت1944ء بہاولپور
ابتدابہاولپور، پاکستان
اصناف ادبشاعری، نثر
ذیلی اصنافصنعتِ توشیح، نعت، حمد، غیرمنقوط، سیرت نگاری، تنقید، کالم نگاری، سفرنامہ نگاری
تعداد تصانیف14
تصنیف اولکلامِ فرید اور مغرب کے تنقیدی رویے
تصنیف آخرمالک عالم سرور عالم غیر منقوط مجموعہ حمد و نعت
معروف تصانیفہرقدم روشنی(سفر نامہ حج)، بلغ العلی بکمالہ (منظوم سیرت النبی ﷺ مکمل)، کلامِ فرید اور مغرب کے تنقیدی رویے(تنقید)، حمدِ الہٰ ومدحِ محمد ﷺ (صنعت توشیح وغیرمنقوط میں ہدیہ حمدونعت)

خورشید ناظر نعت گو شاعر، ادیبِ، اُردو شاعری کی صنف’’صنعتِ توشیح‘‘ میں واحد معروف شخصیت ہیں۔ اس کے ساتھ نقاد محقق سینئر صحافی اور کالم نویس ہیں۔[1]

اصل نام[ترمیم]

اصل نام: ملک خورشید احمد والد کا نام: ملک غلام نبی ہے۔

تاریخ پیدائش[ترمیم]

تاریخ پیدائش: 2جنوری 1944ء بہاول پور میں پیدا ہوئے

قلمی نام[ترمیم]

قلمی نام خورشید ناظر ہے

شاعری[ترمیم]

خورشید ناظر کے شعری سفر کا جائزہ لیا جائے تو اندازہ ہوتا ہے کہ ان کے ہاں تجربوں کی بہتات ہے۔ مگر شعر کے فنی اور ادبی حسن پر ان کی گرفت اتنی مضبوط ہے جیسے ان کی فطرت ثانی ہو۔ حمدیہ ا شعار ایسے ہیں گویا آبشار کا بہاؤ لیکن کیا مجال کہ تخیل کی پرواز شرعی حدودو قیود سے ذرا بھی باہرہو جائے " [2] حمد اور نعت میں غیر منقوط شاعری صنعت توشیح کے استعمال کا اس قدر وسیع ذخیرہ کسی اور شاعر کے ہاں نہیں پایا جاتا اس فن میں انھوں نے خوب لوہا منوایا ہے[3]

تصانیف[ترمیم]

شائع شدہ نگارشات[ترمیم]

  • 1۔ ملک کے مختلف ادبی جرائد و اخبارات میں تنقیدی مضامین، تخلیقات نظم ونثر
  • 2۔ اخباری کالم
  • 3۔ بحیثیت مرتب اعلیٰ "حروف" چار شمارے
  • 5۔ مشتر کہ شعری مجموعہ"کرنیں"

سماجی خدمات[ترمیم]

  • 1۔ ممبر میونسپل کارپوریشن بہاول پور (1988–1992)
  • 2۔ممبر تعلیمی مشاورتی بورڈ ضلع بہاول پور
  • 3۔ ممبر پرائس کنٹرول کمیٹی ضلع بہاول پور
  • 4۔ممبر کنزیومر کونسل ضلع بہاول پور
  • 5۔ ممبر رائٹر ویلفیئر فنڈ حکومت پنجاب، بہاول پور ڈویژن

اعزازت و ایوارڈ[ترمیم]

اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور میں ان کی شخصیت اور فن پر ایم فل کی سطح کا تحقیقی مقالہ لکھا گیا ہے علاوہ ازیں ان کے سفر نامہ حج ہر قدم روشنی اور منظوم سیرت پاک بلغ العلے بکمالہ پربھی ایم فل کے مقالات میں تحقیقی کام ہو چکا ہے۔ریڈیو پاکستان بہاولپور میں ان کی خدمات کو اس طرح سراہا گیا کہ ان کی تصویر کو ریڈیو پاکستان کی گیلری میں نمایاں طور پر آویزاں کیا گیا۔ [6]

  • 1 اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کی طرف سے صد سالہ خواجہ فرید ایوارڈ
  • 2ستارہ بہاول پور ایوارڈ ( شان بہاول پور ایوارڈ 2017 ۔ )منجانب : حکومت پنجاب، بہاول پور ڈویژن بہاول پور[7]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]