سعد حسین رضوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سعد حسین رضوی
Saad Hussain Rizvi.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 21 ستمبر 1994 (27 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
مکتب فکر بریلوی مکتب فکر
جماعت تحریک لبیک پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد خادم حسین رصوی
بہن/بھائی
حافظ انس حسین رضوی  ویکی ڈیٹا پر (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
صدر نشین (2nd )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آغاز منصب
نومبر 2020 
در تحریک لبیک پاکستان 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png خادم حسین رضوی 
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
عملی زندگی
پیشہ حافظ قرآن،  عالم،  سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان پنجابی،  اردو،  عربی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان پنجابی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

سعد حسین رضوی (پیدائش، 1994ء) علامہ خادم حسین رضوی کے بیٹے ہیں۔[1] اور خادم حسین رضوی کی وفات کے بعد ان کی سیاسی جماعت تحریک لبیک پاکستان کے امیر بنائے گئے۔خادم حسین رضوی کی وفات کے بعد ان کی جماعت کی اٹھارہ رکنی شوری نے ان کے بیٹے سعد رضوی کو تحریک لبیک کا نیا سربراہ مقرر کیا جس کا اعلان جماعت کے مرکزی نائب امیر سید ظہیر الحسن شاہ نے جنازے کے موقع پر کیا۔[2][3][4]

لاہور میں خادم حسین رضوی کے جنازے کے موقع پر ان کے بیٹے سعد رضوی نے خطاب میں اپنے والد کے مشن کو جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔

سعد حسین رضوی اس وقت لاہور میں اپنے والد کے مدرسہ جامعہ ابوزرغفاری میں درس نظامی کے آخری سال کے طالبعلم ہیں۔ درس نظامی ایم اے کے برابر مدرسے کی تعلیم کو کہا جاتا ہے۔

گرفتاری، 2021ء[ترمیم]

12 اپریل 2021ء کو سعد رضوی کو لاہور پولیس نے گرفتار کر لیا، جس کے بعد پاکستان کے کئی شہروں تحریک لبیک پاکستان اور اس کے حمایتی کارکنوں نے بطور احتجاج راستے بند کر دیے ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "TLP Chiefs Son Hafiz Saad Rizvi Appointed As New Head Of The Party". UrduPoint (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 03 جنوری 2021. 
  2. "Who is TLP's new chief?". www.thenews.com.pk (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 27 نومبر 2020. 
  3. "Tehreek-e-Labbaik: New far right campaigns against 'blasphemy'". www.aljazeera.com. 
  4. Dawn.com (4 ستمبر 2018). "'We will not bow to extremists': Govt hits back after vicious campaign targets Atif Mian".