صبا دشتیاری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
صبا دشتیاری
صبا دشتیاری

معلومات شخصیت
پیدائش 1953
کراچی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات جون 1، 2011(2011-06-01)
کوئٹہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
طرز وفات قتل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
رہائش کویٹہ, پاکستان
مذہب اسلام
عملی زندگی
پیشہ اسلامیات کے پروفیسر
پیشہ ورانہ زبان بلوچی زبان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر

صبا دشتیاری بلوچستان کے ایک حریت پسند رہنما تھے۔ وہ سرکاری تعلیمی اداروں سے وابستہ ہو کر بھی پاکستان کی مرکزی قیادت کے ناقد تھے۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

صبا کراچی کے علاقے لیاری کے ایک غریب خاندان میں پیدا ہوئے۔ وہ مقامی اسکول سے پڑھنے کے بعد میں نجی طور پر گریجوئیشن کیے۔

ملازمت کی شروعات[ترمیم]

گریجوئیشن کی تکمیل کے دوران وہ حاجی عبد اللہ ہارون اسکول میں بطور استاد بھی کام کیے تھے۔

با قاعدہ ملازمت[ترمیم]

کراچی یونیورسٹی کے شعبہ اسلامک اسٹڈیز سے ماسٹرز کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد صبا بلوچستان یونیورسٹی میں بطور لیکچرار کام شروع کیے تھے۔

تصانیف[ترمیم]

صبا بیس کے قریب کتابوں کے مصنف تھے۔ اکثر کتابیں مذہب اور فلسفے کے بارے میں ہیں۔

لسانی عبور[ترمیم]

صبا ہمہ لسانی پہلو رکھتے تھے۔ وہ بلوچی کے ساتھ اردو، فارسی اور عربی زبان پر بھی عبور رکھتے تھے۔

شاعرانہ کلام[ترمیم]

صبا وہ شاعری بھی کیا کرتے اور مشاعروں میں باقاعدگی سے شریک ہوتے تھے ۔

بلوچستان تحریک سے وابستگی[ترمیم]

  • صبا لاپتہ بلوچوں کی رہائی کی جدوجہد کا عملی حصہ بن گئے تھے۔
  • وہ سرکاری اداروں، دانشوروں، ادیبوں اور صحافیوں کو بلوچستان کی شورش کا ذمہ دار سمجھتے تھے۔
  • صبا کے مطابق بلوچستان اور پاکستان کا رشتہ ایک غاصب اور غلام کا رشتہ ہے۔
  • اپنی تنخواہ کا ایک بڑا حصہ انہوں نے کتابوں کی اشاعت، جرائد اور ادبی تنظیمیوں کی مدد کے لیے مختص کر رکھا تھا۔ انہوں نے شادی نہیں کی تھی۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]