قابل دست اندازی قانون

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

بھارت، سری لنکا، پاکستان اور بنگلہ دیش میں جرم کے دو زمرے کیے گئے ہیں:

(١) قابل دست اندازی قانون (Cognizable offense laws)،
(٢) ںاقابل دست اندازی قانون (Non-cognizable offense laws)۔

تعزیرات ہند کی تعریف کے مطابق قابل دست اندازی قانون ایسے جرائم ہیں جن میں گرفتاری کے لیے پولیس کو کسی وارنٹ کی ضرورت نہیں ہوتی۔ ضابطے کی رو سے پولیس کو ایسے معاملوں میں ایف آئی آر درج کرنا چاہئیے۔

اہم قابل دست اندازی جرائم[ترمیم]

  • غداری
  • مہلک اصلٰحہ سے لیس ہوکر جرم کرنا،
  • عوامی خدمت گزار کی رشوت کا معاملہ،
  • آبروریزی
  • قتل
  • عوامی خدمت گزار نہیں ہونے پر بھی غلط طریقے سے خود کوعوامی خدمت گزار دکھاکر وردی دار بادر کرنا۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

خارجی روابط[ترمیم]

بھارتی ذرائع[ترمیم]