قومیانا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

قومیانا اس عمل کو کہتے ہیں جس کے تحت کوئی حکومت کو نجی ادارے کی کارگردگی کو اپنے تحت لے لے۔ اشتراکی دور میں نہ ادارے بلکہ کئی شعبے قومی یا حکومتی قبضے میں لے لیے گئے تھے کہ بیمہ، ہوائ سفر، بنک کاری شعبہ وغیرہ۔ یہ سارے قومیائے گئے تھے۔ تاہم اب جب کہ اشترکیت کا زوال ہو چکا ہے تو کئی ملکوں میں حساس شعبے جیسے کہ فوجی اصلٰحہ سازی اور نیوکلیائ توانائی کو نجی ملکیت کے لیے کھول دیا ہے۔

بر صغیر کے اہم ممالک جیسے کہ بھارت، پاکستان اور بنگلہ دیش میں قومیانے کا عمل کافی شد و مد سے رائج تھا۔ تاہم جدید دور میں ان ممالک میں بھی نجی ملکیت کو غیر معمولی اہمیت دی جا رہی ہے۔ بھارت میں قومیانے کے بر عکس کئی شعبوں میں جیسے کہ بجلی سازی، ٹیلی فون، موبائل، ایئرلائنز میں نجی شعبے کی اہمیت بڑھتی گئی ہے۔ راجیو گاندھی بین الاقوامی ہوائی اڈا ایسا پہلی بھارتی طیران گاہ جس کی ملکیت کا بڑا حصہ نجی نوعیت پر مشتمل ہے۔

Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔