مہلب بن ابی صفرہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مہلب بن ابی صفرہ
(عربی میں: المهلب بن أبي صفرة الأزدي خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
مہلب بن ابی صفرہ

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 632  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
وفات جنوری 702 (69–70 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
مرو  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Umayyad Flag.svg سلطنت امویہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ والی،  عسکری قائد  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
عسکری خدمات
عہدہ جرنیل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں عسکری رتبہ (P410) ویکی ڈیٹا پر

اموی دور کے ایک مشہور سپہ سالار مہلب بن ابی صفرہ تھے۔ جنہوں نے خوارج کے خلاف جنگوں میں ناموری حاصل کی وہ دراصل عبداللہ بن زبیر کے حامیوں میں سے تھے جنہوں نے خوارج کے استیصال کی ذمہ داری سونپی۔ جب اہل بصرہ نے ان کے پاس نافع خارج کی زیادتیوں کی شکایت کی تو مہلب نے متعدد خونریز لڑائیوں کے بعد نافع کو قتل کر دیا اور خوارج کو بصرہ سے پرے دھکیل دیا۔

خوارج نے اس کے بعد فارس میں سر اٹھایا۔ ان کے مقابلے کے لیے عمر بن عبداللہ اور مصعب بن زبیر نے بیک وقت کارروائی کی۔ خارجی دو طرف سے گھراؤ کی وجہ سے مدائن چلے گئے۔ مالک الاشتر نخعی اہل کوفہ کو لے کر ان کے مقابلے کے لیے مدائن پہنچے تو وہ رے کی طرف نکل گئے۔ اس پورے عرصے میں خارجیوں نے عوام پر بے پناہ ظلم کیا اور حاملہ عورتوں کے پیٹ سے بچے نکال کر ان کو بھی قتل کر ڈالا۔ مصعب بن زبیر اور مہلب بن ابی صفرہ کو یہ ذمہ داری سونپی گئی کہ وہ ان کی قوت کو ختم کر دیں اور مہلب نے مسلسل آٹھ ماہ تک ان پر ہر طرف سے حملے کرکے ان کی قوت کو توڑا

اسی دوران میں عبدالملک بن مروان نے عبد اللہ بن زبیر کی خلافت کا خاتمہ کر دیا۔ لیکن خوارج کے استیصال کے لیےاموی حکومت نے مہلب ہی کا تعاون حاصل کرنے کا فیصلہ کیا اور خالد بن عبد اللہ والئی کوفہ کے بھائی عبید اللہ کو ہٹا کر مہلب کو دوبارہ سالار بنایاگیا۔ خلیفہ نے والئی کوفہ کو یہ واضح ہدایت بھیجی کی خوارج کے خلاف کوئی کارروائی مہلب کی رائے کے خلاف نہ کی جائے۔ مہلب کی موثر کارروائی کے نتیجہ کے طور پر خوارج منتشر ہو گئے۔ رامہرمز کے خوارج کا استیصال بھی مہلب ہی نے کیا ابھی وہ اس مہم میں مشغول ہی تھے کہ بشیر بن مروان کی موت کی خبر سن کر کوفی و بصری اپنے گھروں کو لوٹ گئے۔ حجاج بن یوسف گورنر کوفہ و بصرہ مقرر ہوا تو اس نے ان لوگوں کو سختی سے ڈانٹا جو مہلب کا ساتھ چھوڑ کر آ گئے تھے چنانچہ دونوں جگہ کے فوجی واپس مہلب کے پاس جا پہنچے مہلب نے ان کی مدد سے رامہرمز کے خوارج کو منتشر کر دیا

مہلب بن ابی صفرہ نے اپنی پوری زندگی خوارج کے خلاف جنگوں میں بسر کی اور اس معاملہ میں ان کی خدمات کو بے مثال تسلیم کیا جاتا ہے ۔