مندرجات کا رخ کریں

ویمنز پریمیئر لیگ (کرکٹ)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
ویمنز پریمیئر لیگ (WPL)
ممالکبھارت
منتطمبھارتی کرکٹ کنٹرول بورڈ
صدردفاترکرکٹ سینٹر، ممبئی، مہاراشٹر
فارمیٹٹوئنٹی20 کرکٹ
پہلی بار2023
فارمیٹراؤنڈ روبن اور پلے آف
ٹیموں کی تعداد5
ٹی وینشرکاروں کی فہرست
ویب سائٹwplt20.com
سیزن

ویمنز پریمیئر لیگ (WPL) جسے اسپانسرشپ وجوہات کی بنا پر (TATA WPL) کے نام سے بھی جانا جاتا ہے بھارت میں ہونے والی خواتین کی فرنچائز ٹوئنٹی20 لیگ ہے۔ . یہ بھارتی کرکٹ کنٹرول بورڈ (BCCI) کے زیر اہتمام ہے۔[1][2][3]

پہلا سیزن مارچ 2023 میں ممبئی اور نوی ممبئی میں کھیلا جائے گا جس میں پانچ فرنچائزز حصہ لیں گی۔[4][5]

تاریخ

[ترمیم]

بھارت میں خواتین کا پہلا بڑا ٹی ٹوئنٹی مقابلہ خواتین کا ٹی ٹوئنٹی چیلنج تھا۔ یہ 2018 میں واحد میچ کے ٹورنامنٹ کے طور پر شروع ہوا اور اسے 2019، 2020 اور 2022 میں منعقدہ تین ٹیموں کے تین میچوں کے مقابلے تک بڑھا دیا گیا۔

فروری 2022 میں بی سی سی آئی کے صدر سوربھ گانگولی نے بھارت میں مردوں کے بڑے ٹوئنٹی20 ٹورنامنٹ انڈین پریمیئر لیگ کا خواتین کا ورژن شروع کرنے کے منصوبوں کا اعلان کیا[6] جو خواتین کے ٹی20 چیلنج کی جگہ لے گی۔ اگست تک منصوبے زیادہ ترقی یافتہ تھے[7][8] اور اکتوبر میں بی سی سی آئی نے اعلان کیا کہ وہ پانچ ٹیموں کے ٹورنامنٹ پر غور کر رہے ہیں جو مارچ 2023 میں ہوگا۔[9][10] اس لیگ کو غیر رسمی طور پر ویمنز انڈین پریمیئر لیگ کے نام سے جانا جاتا تھا۔ تاہم 25 جنوری 2023 کو بی سی سی آئی نے اسے باضابطہ طور پر ویمنز پریمیئر لیگ کا نام دیا۔[1]

28 جنوری 2023 کو بی سی سی آئی نے 2027 تک لیگ کے ٹائٹل اسپانسرشپ کے حقوق کے لیے بولیاں طلب کیں۔[11] اس نے اسے ٹاٹا گروپ کو نامعلوم رقم میں فروخت کیا۔[2]

تنظیم

[ترمیم]
بریبورن اسٹیڈیم
ڈی وائی پاٹیل اسٹیڈیم

بی سی سی آئی مردوں کے انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) مقابلے کا بھی اہتمام کرتا ہے اور ڈبلیو پی ایل کے لیے لیگ کا ڈھانچہ آئی پی ایل کی ساخت پر مبنی ہے۔[12][13][14]

ابتدائی طور پر پانچ ٹیمیں ہوں گی جو ایک دوسرے کے خلاف ڈبل راؤنڈ رابن فارمیٹ میں کھیلیں گی۔ جس میں سب سے زیادہ پوائنٹس کے ساتھ سر فہرست تین ٹیمیں پلے آف مرحلے میں داخل ہوں گی۔[15][16] بی سی سی آئی کے مطابق اگر لیگ کامیاب ہوتی ہے تو آئندہ سیزن میں گیمز اور ٹیموں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔[17]

لیگ کا پہلا سیزن 4 مارچ سے 26 مارچ 2023 تک کھیلا جانا ہے اور اس میں 22 میچ ہوں گے جو تمام ممبئی کے بریبورن اسٹیڈیم اور ڈی وائی پاٹیل اسٹیڈیم میں منعقد ہوں گے۔[17][18] ہر میچ میں ایک ٹیم زیادہ سے زیادہ پانچ غیر ملکی کھلاڑی شامل کر سکتی ہے جن میں سے ایک کا تعلق آئی سی سی ایسوسی ایٹ نیشن سے ہونا چاہیے۔[4][19][20]

ٹیمیں

[ترمیم]
پانچ فرنچائزز کے مقامات

سرمایہ کاروں نے ابتدائی فرنچائز حقوق جنوری 2023 میں ایک نا معلوم بولی کے عمل کے ذریعے حاصل کیے جس سے کل 4,669 کروڑ (امریکی $650 ملین) کا اضافہ ہوا۔[21][22]

پانچ میں سے تین فرنچائزز (رائل چیلنجرز بنگلور، دہلی کیپٹلز اور ممبئی انڈینز) کے پاس مردوں کے آئی پی ایل میں بھی ٹیمیں ہیں۔

ٹیم شہر مالکان کپتان ہیڈ کوچ
دہلی کیپیٹلز نئی دہلی جے ایس ڈبلیو گروپجی ایم آر گروپ جوناتھن بٹی[23]
گجرات جائنٹس احمد آباد اڈانی گروپ بیتھ مونی[24] راچیل ہینس[25]
ممبئی انڈینز ممبئی انڈیاون سپورٹس ہرمن پریت کور شارلوٹ ایڈورڈز[19]
رائل چیلنجرز بنگلور بنگلور ڈیجیو[26] اسمرتی مندھانا[27] بین ساویر[28]
یو پی واریئرز لکھنؤ کیپری گلوبل الیسا ہیلی[29] جون لیوس[30]

مالی پس منظر

[ترمیم]

بی سی سی آئی پہلے پانچ سالوں کے دوران مقابلے سے حاصل ہونے والے منافع کا 80% فرنچائز مالکان میں تقسیم کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ اگلے پانچ سیزن کا 60% منافع بانٹ دیا جائے گا اور سیزن 11 سے 15 تک کے منافع کا 50% تقسیم کیا جائے گا۔ مزید برآں ٹورنامنٹ کے لیے مرکزی لائسنسنگ حقوق سے حاصل ہونے والی آمدنی کا 80% فرنچائزز کے ساتھ شیئر کیا جائے گا۔

فرنچائزز تجارتی سامان، ٹکٹوں کی فروخت اور اشتہارات کے ذریعے بھی آمدنی پیدا کریں گی۔[17][31]

کھلاڑیوں کی نیلامی

[ترمیم]

ہر فرنچائز کے لیے کھلاڑیوں کی خریداری کے لیے پہلی نیلامی 13 فروری 2023 کو ممبئی میں ہوئی۔[19][32] تقریبا 1500 کھلاڑیوں نے اپنے نام درج کروائے۔[33][34] ہر فرنچائز کے پاس خرچ کرنے کے لیے 12 کروڑ (امریکی $1.7 ملین) تھے اور اسے 15 سے 18 کے درمیان کھلاڑی خریدنے تھے جن میں سے چھ بیرون ملک کھلاڑی ہو سکتے تھے۔[12][19]

پہلی نیلامی میں ایک غیر کیپڈ کھلاڑی کی بنیادی قیمت 10 لاکھ (امریکی $14,000) اور 20 لاکھ (امریکی $28,000) کے درمیان تھی۔ محدود کھلاڑیوں کے لیے یہ 30 لاکھ (امریکی $42,000) اور 50 لاکھ (امریکی $70,000) کے درمیان تھی۔[20] آئندہ سیزنز میں ہر فرنچائز کے پَرس سائز میں ہر سال 1.5 کروڑ (امریکی $210,000) سے اضافہ کیا جائے گا۔[17]

نشرکاری

[ترمیم]

جنوری 2023 میں ویاکوم18 نے اعلان کیا کہ اس نے ٹورنامنٹ کے لیے ٹی وی اور ڈیجیٹل نشریات کے لیے عالمی میڈیا کے حقوق حاصل کر لیے ہیں۔ معاہدہ پانچ سال تک چلے گا اور اس کی قیمت 951 کروڑ (امریکی $130 ملین) تھی۔[35] لیگ کا ابتدائی سیزن بھارت میں سپورٹس18 ٹی وی چینلز اور جیو سنیما ایپ پر نشر کیا جائے گا۔ یہ دونوں ہی ویاکوم 18 کی ملکیت ہیں۔[36]

حوالہ جات

[ترمیم]
  1. ^ ا ب "Women's IPL: BCCI earns Rs 4669.99 crore windfall for 5 teams"۔ Rediff۔ 25 January 2023 
  2. ^ ا ب "WPL Title Sponsor: IPL"۔ Loksatta 
  3. "The @BCCI has named the league - Women's Premier League (WPL). Let the journey begin...." (ٹویٹ) – ٹویٹر سے  Missing or empty |date= (help)
  4. ^ ا ب "'Let the journey begin': BCCI garners Rs 4669.99 crore for sale of 5 Women's Premier League teams"۔ The Times of India (بزبان انگریزی)۔ 25 January 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جنوری 2023 
  5. "CCI, DY Patil to host WPL from March 4-26; Mumbai-Ahmedabad to play opening game"۔ Cricbuzz (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 فروری 2023 
  6. "BCCI plans to start a full-fledged women's IPL in 2023: Sourav Ganguly"۔ India Today (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2023 
  7. Shayan Acharya (12 August 2022)۔ "Women's IPL: BCCI exploring late February-March 2023 window for the T20 tournament"۔ sportstar.thehindu.com (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2023 
  8. "BCCI to hold inaugural Women's Indian Premier League in March 2023"۔ Outlook۔ 12 August 2022۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2023 
  9. "BCCI considers 5 teams, 2 venues, 20 league matches for inaugural WIPL"۔ Cricbuzz (بزبان انگریزی)۔ 13 October 2022۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 دسمبر 2022 
  10. "Inaugural Women's IPL likely to be played from March 3 to 26"۔ ESPN Cricinfo (بزبان انگریزی)۔ 9 December 2022۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 دسمبر 2022 
  11. "BCCI invites bids for Women's Premier League title sponsorship rights for 2023-2027"۔ Deccan Herald (بزبان انگریزی)۔ 28 January 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2023 
  12. ^ ا ب "Women's Indian Premier League franchises go for £465m"۔ BBC Sport۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 فروری 2023 
  13. "Stunning Prices for Cricket Teams Are a Milestone for Women's Sports"۔ NY times۔ 26 January 2023 
  14. "'Life changing'..."۔ Fox Sports۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 فروری 2023 [مردہ ربط]
  15. "Game Changer..."۔ The Guardian۔ 3 February 2023 
  16. "Women's IPL 2023 Format, Rules"۔ Time of Sports (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 جنوری 2023 
  17. ^ ا ب پ ت महिला आयपीएल लिलावात, ४००० कोटींची कमाई! [Women IPL minted 4000 crore!]۔ Lokmat (بزبان مراٹھی)۔ 23 January 2023۔ صفحہ: 6۔ اخذ شدہ بتاریخ 24 جنوری 2023 
  18. "WPL Auction starts from 13 Feb 2023"۔ Worldcup.org.in۔ 11 February 2023۔ 11 فروری 2023 میں اصل سے آرکائیو شدہ 
  19. ^ ا ب پ ت Nagraj Gollapudi (2023) Charlotte Edwards to coach Mumbai's WPL team, CricInfo, 5 February 2023. Retrieved 5 February 2023.
  20. ^ ا ب "Haldiram, Infosys, 10 IPL teams among 30-plus companies to show interest in buying teams in Women's IPL: Report"۔ TimesNow۔ 2023-01-21۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 جنوری 2023 
  21. "How Women's IPL auction could change sports in India - Times of India"۔ The Times of India (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 جنوری 2023 
  22. "Owners of Mumbai Indians, Delhi Capitals, RCB win bids to own Women's Premier League teams"۔ ESPNcricinfo۔ 25 January 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 جنوری 2023 
  23. "WPL: Jonathan Batty, Lisa Keightley, Hemlata Kala, Biju George in Delhi Capitals coaching staff"۔ ESPNcricinfo۔ 11 February 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 فروری 2023 
  24. "Beth Mooney named captain of WPL side Gujarat Giants"۔ ESPNcricinfo (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 فروری 2023 
  25. "WPL: Rachael Haynes joins Gujarat Giants as head coach"۔ ESPNcricinfo۔ 3 February 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 فروری 2022 
  26. "Smriti Mandhana: RCBची मोठी घोषणा! स्मृती मंधानाकडे सोपवली कर्णधाराची जबाबदारी"۔ eSakal - Marathi Newspaper (بزبان مراٹھی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2023 
  27. لوا خطا ماڈیول:Citation/CS1/Utilities میں 38 سطر پر: bad argument #1 to 'ipairs' (table expected, got nil)۔
  28. "WPL: UP Warriorz name Alyssa Healy as captain"۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 فروری 2023 
  29. "WPL: England national coach Jon Lewis appointed head coach of WPL team UP Warriorz"۔ ESPNcricinfo۔ 10 February 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 فروری 2023 
  30. "'Life changing'..."۔ Fox Sports۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 فروری 2023 [مردہ ربط]
  31. "Women's Premier League auction in Mumbai."۔ Times of India۔ 2 February 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 03 فروری 2023 
  32. Nagraj Gollapudi (6 February 2023)۔ "Women's Premier League to begin on March 4" 
  33. "around 1K sing up for WPL auction."۔ news18.com 
  34. "Women's IPL: Viacom 18 wins media rights, to pay INR 7.09 crore per match"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 جنوری 2023 
  35. "Women's IPL Media Rights Bagged By Viacom 18 For A Sensational Rs 951 Crore Deal"۔ Latestly۔ 16 January 2022۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 فروری 2022