ٹویٹر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
Twitter, Inc.
قسم ذاتی
بنیاد مارچ 21، 2006 (2006-03-21)[1]
مرکزی دفتر/دفاتر سان فرانسسکو, ریاستہائے متحدہ[2]
علاقہ خدمت عالمی
بانی/بانیان Jack Dorsey, Noah Glass,
Evan Williams, Biz Stone
کلیدی شخصیات Jack Dorsey (Chairman)
Dick Costolo (CEO)
صنعت جالبین
مالیہ Increase2.svg امریکی ڈالر$140 ملین (2010 est.)[3]
عملہ 900+ (2012)[4]
ویب سائٹ Twitter.com
پروگرامنگ زبان جاوا اسکرپٹ,[5] روبی,[5] Scala,[5] جاوا[5][6]
الیگزا درجہ negative increase 10 (February 2013)[7]
قسم ویب سائٹ سماجی جالکاری خدمت، microblogging
اندراج Required to post, follow, or be followed
مندرج صارفین 500 ملین[8] (active July 2012)
زبانیں متعدد الالسنہ
آغاز جولائی 15، 2006 (2006-07-15)[9]
حالیہ درجہ فعال

ٹویٹر فیس بک کی طرح ایک سماجی جبالہ ہے۔ یہ سماجی رابطے کاایک بڑا ذریعہ ہے۔اس کا آغاز 2001ء میں ہوا۔ دنیا بھر میں اس کے استعمال کرنے والوں کی تعداد 200000000 کے قریب ہے۔ اس جبالہ کے ذریعے آپ دوسرے لوگوں کو مختصر پیغا مات بھیج سکتے یا کسی اور کی طرف سے بھیجا گیا پیغام پڑھ سکتے ہیں ۔ ان مختصر پیغامات کو ٹوئیٹس کہا جاتا ہے۔ اس موقع کے صارفین کو ایک سہولت ملتی ہے کہ وہ اپنے پروفائل میں وقتاً فوقتاً ایسے پیغامات بھیج سکیں (مختلف زبانوں میں ، جن میں اردو بھی شامل ہے) جو 140 حروف کے اندر ہوں۔ یہ پیغامات موبائل کے ذریعے بھی بھیجے جا سکتے ہیں اور پڑھے بھی جا سکتے ہیں۔ اگر آپ کا بلاگ ہے ، تو آپ اپنے ٹویٹر کھاتے میں اپنے بلاگ کا ربط شامل کر سکتے ہیں، جس سے یہ ہوگا کہ جب بھی آپ اپنے بلاگ پر کوئی پوسٹ کریں تو خودکار طور پر بلاگ پوسٹ کا عنوان اور پوسٹ کے چند ابتدائی جملے ، بلاگ پوسٹ ربط کے ساتھ آپ کے ٹویٹر پروفائل پر شائع ہو جاتے ہیں۔ اسی طرح کسی فورم کے مخصوص زمرہ جات کو بھی شامل کیا جا سکتا ہے۔ ٹویٹر کے استعمال کنندگان کسی بھی صارف کے پیغامات کو جنہیں ٹویٹس کہا جاتا ہے کی پیروی کر سکتے ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Cite error: حوالہ بنام Dorsey2006 کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا ().
  2. "رابطہ کریں". اصل سے جمع شدہ 2012-05-30 کو. 
  3. Cite error: حوالہ بنام NYT-Twitter_Hacked کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا ().
  4. Kafka، Peter (April 3, 2012). "Twitter Expands European Business". All Things Digital. Dow Jones & Company. اخذ کردہ بتاریخ April 3, 2012. 
  5. ^ 5.0 5.1 5.2 5.3 Humble، Charles (July 4, 2011). "Twitter Shifting More Code to JVM, Citing Performance and Encapsulation As Primary Drivers". InfoQ. اخذ کردہ بتاریخ January 15, 2013. 
  6. Cite error: حوالہ بنام Twitter_coding کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا ().
  7. "Twitter.com Site Info". الیگزا انٹرنیٹ. اخذ کردہ بتاریخ 2013-02-03. 
  8. "Twitter Passed 500M Users In June 2012, 140M Of Them In US; Jakarta ‘Biggest Tweeting’ City". TechCrunch. July 30th, 2012. 
  9. Cite error: حوالہ بنام launch کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا ().