کوآلا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اضغط هنا للاطلاع على كيفية قراءة التصنيف

کوآلا

Koala
دور: 0.7–0 ملین سال

Middle Pleistocene – Recent

کوآلا

صورت حال

أنواع غير مهددة أو خطر انقراض ضعيف جدا (IUCN 3.1)[1]
اسمیاتی درجہ نوع[2][3]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی درجہ (P105) ویکی ڈیٹا پر
جماعت بندی
المملكة: جانور
الطائفة: ممالیہ
الصنف الفرعي: Marsupialia
الرتبة: Diprotodontia
الرتيبة: Vombatiformes
الفصيلة: Phascolarctidae
الجنس: Phascolarctos
النوع: P. cinereus
سائنسی نام
Phascolarctos cinereus[2][3][4]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی نام (P225) ویکی ڈیٹا پر
Georg August Goldfuss ، 1817  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی نام (P225) ویکی ڈیٹا پر
حمل کی مدت 35 دن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مدت حمل (P3063) ویکی ڈیٹا پر
Koala range (red – native, purple – introduced)
Koala range (red – native, purple – introduced)

مرادفات [5][6]
  • Lipurus cinereus Goldfuss, 1817
  • Marodactylus cinereus Goldfuss, 1820
  • Phascolarctos fuscus Desmarest، 1820
  • Phascolarctos flindersii Lesson، 1827
  • Phascolarctos koala J.E. Gray، 1827
  • Koala subiens Burnett، 1830
[[file:|16x16px|link=|alt=]]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں کومنز نگارخانہ (P935) ویکی ڈیٹا پر
کوآلا پتے کھاتے ہوئے

کوآلا یا کوالا ایک سبزہ خور جانور ہے جو مشرقی آسٹریلیا میں پایا جاتا ہے۔ یہ حیاتیاتی تنوع کی درجہ بندی میں Phascolarctidae خاندان میں پایا جانے والا واحد جانور ہے۔
کوآلا کو عام طور پر کوآلا بھالو بھی کہا جاتا ہے کیونکہ یہ دیکھنے میں ایک چھوٹے بھالو سے مشابہت رکھتا ہے۔ یاد رہے کہ اس کو بھالو اس کی بھالو سے مشابہت کی وجہ سے کہا جاتا ہے ورنہ یہ حقیقی بھالو نہیں ہے۔ اس کا درست نام صرف کوآلا ہی ہے۔

شکل و جسم[ترمیم]

کوآلا کے جسم پر گندمی مائل پارے کی مشابہت والی نرم فر ہوتی ہے اور اس کی چہرے کی نسبت بڑی، گلابی یا کالی ناک ہوتی ہے۔ کوآلا کے پنجے انتہائی تیز ہوتے ہیں جس کی مدد سے وہ درختوں وغیرہ پر چڑھنے اور پتے نوچنے کا کام لیتے ہیں۔ ان کی سننے اور سونگھنے کی حس نہایت تیز ہوتی ہے جبکہ ان کی دیکھنے کی صلاحیت نہایت اچھی نہیں ہوتی۔

زندگی[ترمیم]

کوآلا عموما٘ رات کے وقت متحرک رہتے ہیں۔ یہ درختوں پر رہتے ہیں اور عام طور پر زمین پر اترنا پسند نہیں کرتے۔ یہ عام طور پر پتے کھا کر گذارا کرتے ہیں اور خاص طور پر گوند کے درخت کے پتے یہ نہایت رغبت سے کھاتے ہیں۔ اس کے علاوہ درختوں کی چھال اور پھل بھی شوق سے کھاتے ہیں۔ یہ زیادہ تر درختوں پر ہی رہتے ہیں اور اپنی پانی کی ضروریات عموما٘ پتوں میں موجود پانی سے پورا کر لیتے ہیں۔
کوآلا عادتا٘ تنہا پسند ہوتے ہیں لیکن پھر بھی ان کی عام زندگی میں دوسرے قریبی کوآلا سے رابطہ رکھنا ضروری سمجھتے ہیں۔ یہ رابطہ جسمانی اور صوتی دونوں صورتوں میں ہو سکتا ہے۔
کوآلا کی افزائش نسل بارے یہ معلومات ہیں کہ 35 دن کے حمل کے بعد پیدا ہونے والا کوآلا کی جسامت صرف ایک انچ کا چوتھائی ہوتا ہے اور پیدائش کے وقت اس کے کان، آنکھیں اور بال نہیں ہوتے۔ یہ پیدائش کے فورا٘ بعد اپنی ماں کے پیٹ پر موجود تھیلی میں گھس جاتا ہے اور وہیں سے یہ خوراک حاصل کرتا ہے۔ 12 مہینے یہ نومولود اپنی ماں کے پیٹ پر تھیلی میں گذارتا ہے اور اس کے بعد اسے دودھ کی ضرورت نہیں رہتی۔ عام طور پر مادر کوآلا ان بارہ مہینوں کے دوران میں دوسرے کوآلا کے لیے عمل تولید سے نہیں گذرتی۔ نوعمر کوآلا عام طور پر اپنی ماں سے اٹھارہ ماہ کی عمر میں علاحدہ ہوتے ہیں لیکن اگر مادر کوآلا دوسرے کوآلا کی افزائش نہ کرے تو بچے تین سال تک ماں کے ساتھ ہی موجود رہتے ہیں۔کوئی بھی کوآلا 2 سال کی عمر میں بلوغت کو پہنچ جاتا ہے لیکن افزائش نسل کا عمل عام طور پر 4 سال کی عمر کے بعد ہی شروع کرتا ہے۔

متفرق معلومات[ترمیم]

کوآلا حالیہ دور میں بقائی خطرے سے دوچار جانور کی قسم سمجھی جانے لگے ہیں۔ ان کی بقا کے خطرے سے متعلق کہا جاتا ہے کہ ان کی رہائشی جنگلات ناپید ہوتے جارہے ہیں اور کئی مقامات پر صرف چند ہی کوآلا باقی بچ رہے ہیں۔ لیکن یہ بھی معلومات ہیں کہ بعض جگہیں جیسے جزیرہ فرانسیسی میں بہت زیادہ کوآلا کی آبادی موجود ہے لیکن ان کی بقا اس لیے خطرے میں ہے کہ جنگلات میں دستیاب خوراک یعنی پتے اور پھل وغیرہ دن بدن کم ہوتے جارہے ہیں۔ درختوں کی کٹائی کی وجہ سے انھیں رہائش برقرار رکھنے میں بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ [7] کوآلا کی ان علاقوں میں بڑھتی آبادی کی وجہ سے یہ پہلو بھی اجاگر ہو رہا ہے کہ ان کی خوراکی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے درختوں کی کٹائی پر پابندی لگائی گئی تھی مگر اسی خوراکی ضرورت کے بڑھنے کی وجہ سے متعلقہ درختوں کی قسم، یعنی گوند کے درخت یہاں ختم ہوتے جا رہے ہیں۔ بہرحال، ایک تحقیقی رپورٹ میں یہ بات دیکھی گئی ہے کہ پچھلے بیس سال میں آسٹریلیا میں کوآلا کی آبادی میں بے انتہا کمی واقع ہوئی ہے اور ان کے رہائشی علاقوں میں سے 1800 سے زائد مقامات اب رہائش کے قابل نہ رہنے کے سبب تباہ ہو گئے ہیں۔ یہ تحقیقی رپورٹ آسٹریلیا کی فاؤنڈیشن برائے کوآلا نے کی تھی جس کے مطابق یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ کرہ ارض پر صرف 50000 کوآلا باقی بچ گئے ہیں۔ [7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ iucn نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  2. ^ ا ب پ عنوان : Integrated Taxonomic Information System — شائع شدہ از: 27 جنوری 1998
  3. ^ ا ب پ عنوان : Mammal Species of the World
  4.   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں دائرۃ المعارف حیات آئی ڈی (P830) ویکی ڈیٹا پر"معرف Phascolarctos cinereus دائراۃ المعارف لائف سے ماخوذ"۔ eol.org۔ اخذ کردہ بتاریخ 3 نومبر 2018۔ 
  5. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ Moyal p.45 نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  6. سانچہ:MSW3 Diprotodontia
  7. ^ ا ب آدم مورٹن (نومبر 10, 2009ء)۔ "صرف پچاس ہزار کوآلا باقی" (انگریزی زبان میں)۔ دی ایج۔ صفحہ 4۔