کیڈمیئم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

کیڈمیئم (Cadmium) ایک کیمیائی عنصر ہے جس کی علامت Cd اور ایٹمی ماس نمبر 48 ہے۔ یہ دھات ہے اور 1817 میں جرمنی میں دریافت ہوئی۔

silverکیڈمیئمindium
Zn

Cd

Hg
اظہار
silvery bluish-gray metallic
عمومی خصوصیات
نام ، علامت ، عدد کیڈمیئم ، Cd ، 48
عنصری زمرہ transition metal
Category notes Alternatively considered a post-transition metal
گروہ ، دور ، احصار 125 d
معیاری جوہری کمیت 112.411گ/مول
برقی تشکیل [Kr] 5s2 4d10
برقات فی خول 2, 8, 18, 18, 2 (Image)
طبعی خصوصیات
حالت ٹھوس
کثافت (قریباً د ح ک) 8.65 گ/سم3
مائع کثافت (ن پ پر) 7.996 گ/سم3
نقطۂ پگھلاؤ 594.22 ک، 321.07 °س، 609.93 °ف
نقطہ کھولاؤ 1040 ک، 767 °س، 1413 °ف
حرارت ائتلاف 6.21 کلوجول/مول
حرارت تبخیر 99.87 کلوجول/مول
حرارت اضافی (25 °س) 26.020 جول/(مول.کیلون)
بخاری دباؤ
P/Pa 1 10 100 1 k 10 k 100 k
at T/K 530 583 654 745 867 1040
جوہری خصوصیات
تکسیدی حالتیں 2, 1 (mildly basic oxide)
برقی منفیت 1.69 (Pauling scale)
آئنسازی توانائیاں پہلی: 867.8 کلوجول/مول
دوسری: 1631.4 کلوجول/مول
تیسری: 3616 کلوجول/مول
جوہری رداس 151 پیکومیٹر
کوویلینٹ رداس 144±9 پیکومیٹر
وانڈروال رداس 158 پیکومیٹر
متفرق
قلمی ساخت hexagonal
مقناطیسی ترتیب diamagnetic[1]
برقی مزاحمیت (22 °C) 72.7 nΩ·m
حر ایصالیت (300 ک) 96.6 واٹ/(میٹر.کیلون)
حرارتی پھیلاؤ (25 °C) 30.8 µm·m−1·K−1
آواز کی رفتار
(باریک سلاخ)
(20 °C) 2310 میٹر/سیکنڈ
یانگ مطبقی 50 GPa
قص مطبقی 19 GPa
جثہ مطبقی 42 GPa
پوئیسن نسبت 0.30
موس سختی 2.0
برینل سختی 203 MPa
کاس عدد 7440-43-9
مستحکم ہمجاء
اصل مقالہ: کیڈمیئم کے ہمجاء
iso NA half-life DM DE (MeV) DP
106Cd 1.25% >9.5×1017 y εε2ν - 106Pd
107Cd syn 6.5 h ε 1.417 107Ag
108Cd 0.89% >6.7×1017 y εε2ν - 108Pd
109Cd syn 462.6 d ε 0.214 109Ag
110Cd 12.49% 62 تعدیلوں کیساتھ Cd مستحکم ہے
111Cd 12.8% 63 تعدیلوں کیساتھ Cd مستحکم ہے
112Cd 24.13% 64 تعدیلوں کیساتھ Cd مستحکم ہے
113Cd 12.22% 7.7×1015 y β 0.316 113In
113mCd syn 14.1 y β 0.580 113In
IT 0.264 113Cd
114Cd 28.73% >9.3×1017 y ββ2ν - 114Sn
115Cd syn 53.46 h β 1.446 115In
116Cd 7.49% 2.9×1019 y ββ2ν - 116Sn

یہ دھات 321 ڈگری سنٹی گریڈ پر پگھلتی ہے۔

کیڈمیئم کا استعمال کم ہوتا جا رہا ہے مگر یہ اب بھی نکل کیڈمیئم بیٹری اور سولر سیل میں بہت استعمال ہوتا ہے۔ جوہری بجلی گھروں میں اسے فالتو نیوٹرون جذب کرنے کے لیئے استعمال کیا جاتا ہے اس طرح نیوکلیئر ری ایکشن کی رفتار قابو میں رہتی ہے۔ نیوٹرون جذب کر کے کیڈمیئم گاما رے خارج کرتا ہے۔

کیڈمیئم سونا اور سونا ملی دھاتوں کا نقطہ پگھلاو کم کر دیتا ہے اس لیئے سونے کے زیورات میں ٹانکہ (سولڈر) لگانے کے لیئے بڑی کثرت سے استعمال کیا جاتا ہے۔[2]

زیورات میں استعمال[ترمیم]

دوری جدول کے گروپ 12 میں زنک کیڈمیئم اور پارہ شامل ہیں اور یہ تینوں دھاتیں گرم کرنے پر نسبتاً کم درجہ حرارت پر بخارات بن کر اُڑ جاتی ہیں۔یعنی اگر سونے چاندی میں کیڈمیئم موجود ہو تو محض گرم کرنے پر یہ اڑ جاتا ہے اور سونا یا چاندی دوبارہ خالص بن جاتے ہیں۔ اس طرح سونے چاندی کی ری سائکلنگ آسان ہو جاتی ہے۔
پگھلی ہوئی حالت میں چاندی اپنے حجم سے 22 گنا زیادہ آکسیجن جذب کر لیتی ہے جو ٹھنڈا کرنے پر خارج ہو جاتی ہے۔ اس کی وجہ سے کاریگر کو کچھ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ کیڈمیئم ڈی آکسیڈائزر کا کام کرتی ہے اور چاندی میں آکسیجن جذب نہیں ہونے دیتی۔
چاندی کا قیراط کم کرنے کے لیئے اکثر تانبا ملایا جاتا ہےمگر جب تانبا آکسائیڈ بناتا ہے تو چاندی پر دھبے پڑ جاتے ہیں۔ کیڈمیئم ان دھبوں کو بننے سے روکتا ہے۔
کیڈمیئم کی ملاوٹ سے چاندی زیادہ آسانی سے پگھلتی ہے، روانی سے بہتی ہے اور اس سے تار یا چادر بنانا آسان ہو جاتا ہے۔
18 قیراط کے ہرے رنگ کے سونے میں 12.5 فیصد تک کیڈمیئم موجود ہوتا ہے۔[3]
اگرچہ کیمیاء میں کیڈمیئم کو Cd سے ظاہر کیا جاتا ہے لیکن سنار اور زیور ساز کیڈمیئم کے لیئے KDM کا تخفف استعمال کرتے ہیں۔پہلے جب سونے کے زیورات میں ٹانکا لگانا ہوتا تھا تو تابنے اور سونے کا سولڈر استعمال ہوتا تھا جو لگ بھگ 14 قیراط سونے کا ہوتا تھا۔ یعنی 22 قیراط کے زیور کو جب بعد میں پگھلایا جاتا تھا تو ٹانکے کی وجہ سے وہ لگ بھگ 20 قیراط کا رہ جاتا تھا۔ لیکن سونے اور کیڈمیئم سے بنے سولڈر میں 14 کی بجائے 22 قیراط سونا ہوتا ہے اور ایسے ٹانکے والے 22 قیراط کے سونےکے زیور کو پگھلانے سے اس کے قیراط کم نہیں ہوتے[4]

مسمومیت[ترمیم]

چونکہ کیڈمیئم کے مرکبات اور بخارات زہریلے ہوتے ہیں اس لیئے اکثر ممالک نے زیورات میں کیڈمیئم کے استعمال پر پابندی عائید کر دی ہے۔2 مئی 2011 کو جاری ہونے والے ایک قانون کے مطابق یورپی یونیئن کے ممالک میں کسی بھی زیور میں کیڈمیئم کی مقدار 0.01 فیصد (یعنی ایک کلو سونے میں 100 ملی گرام) سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے ۔
خیال کیا جاتا ہے کہ کیڈمیئم کی وجہ سے سرطان (کینسر) ہو سکتا ہے۔
تمباکو میں کیڈمیئم پایا جاتا ہے اور سگریٹ پینے والوں کو نقصان پہنچاتا ہے۔[5]

مزید دیکھیئے[ترمیم]


بیرونی ربط[ترمیم]

حوالے[ترمیم]

  1. Lide، D. R.، ed (2000). "Magnetic susceptibility of the elements and inorganic compounds". CRC Handbook of Chemistry and Physics (81st ed.). CRC Press. ISBN 978-0-8493-0481-1. http://www-d0.fnal.gov/hardware/cal/lvps_info/engineering/elementmagn.pdf. 
  2. [1]
  3. cadmium testing
  4. What do Hallmark, 916 & KDM jewellery mean?
  5. Cadmium in tobacco.

نگار خانہ[ترمیم]