گلیلیو گلیلی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
گلیلیو گلیلی
(اطالوی میں: Galileo Galilei خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
Galileo.arp.300pix.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 15 فروری 1564[1][2][3]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
پیسا[2][4][5]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 8 جنوری 1642 (78 سال)[1][6][7][8][9][10][11][12]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
رہائش پیسا
پادووا
فلورنس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
مذہب کیتھولک ازم[13]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مذہب (P140) ویکی ڈیٹا پر
طبی کیفیت اندھا پن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں بیماری (P1050) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
تعلیمی اسناد پروفیسر[14]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیمی اسناد (P512) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ماہر فلکیات[15][16]،فلسفی[15]،ریاضی دان[15][3]،طبیعیات دان[15][17]،موجد،منجم،جامع العلوم،استاد جامعہ[3]،سائنس دان[18][19]،مہندس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان لاطینی زبان،اطالوی زبان[7]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
شعبۂ عمل فلکیات،طبیعیات،میکانیات،فلسفہ،ریاضی[3]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شعبۂ عمل (P101) ویکی ڈیٹا پر
الزام
الزامات بدعت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں جرم کی سزا (P1399) ویکی ڈیٹا پر
دستخط
Galileo Galilei Signature 2.svg 

گلیلیو گلیلی 15 فروری 1564ء میں اطالیہ کے علاقے تسکانی کے شہر پیزا میں پیدا ہوا۔

تعارف[ترمیم]

گلیلیو (انگریزی: Galileo) ایک اطالوی ماہر فلکیات اور فلسفی تھا۔ سائنسی انقلاب پیدا کرنے میں گالی لیو کا کردار اہم ہے۔ وہ شاقول اور دوربین كا نامور موجد ہے- گالی لیو نے اشیا کی حرکات، دوربین، فلکیات کے بارے میں بیش قیمت معلومات فراہم کیں۔ اسے جدید طبیعیات کا باپ کہا جاتا ہے۔

وفات[ترمیم]

گلیلیو اپنى عمر كے آخرى حصے ميں اندھا رہا اور اس نے 8 جنوری 1642ء میں وفات پائی۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب اجازت نامہ: CC0
  2. ^ ا ب http://www-history.mcs.st-andrews.ac.uk/Biographies/Galileo.html
  3. ^ ا ب پ ت https://www.ncbi.nlm.nih.gov/pmc/articles/PMC2564400/
  4. http://www-history.mcs.st-andrews.ac.uk/Biographies/Galileo.html — اخذ شدہ بتاریخ: 10 دسمبر 2014 — اجازت نامہ: CC0
  5. http://www-history.mcs.st-andrews.ac.uk/Biographies/Galileo.html — اخذ شدہ بتاریخ: 25 فروری 2017 — مدیر: الیکزینڈر پروکورو — عنوان : Большая советская энциклопедия — اشاعت سوم — باب: Галилей Галилео — ناشر: Great Russian Entsiklopedia, JSC
  6. مصنف: ارتھر بری — عنوان : A Short History of Astronomy — ناشر: جون مرے
  7. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11903931b — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  8. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11903931b — اخذ شدہ بتاریخ: 22 اگست 2017 — خالق: John O'Connor اور Edmund Robertson
  9. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: http://snaccooperative.org/ark:/99166/w6833x7s — بنام: Galileo Galilei — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  10. فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/cgi-bin/fg.cgi?page=gr&GRid=1899 — بنام: Galileo Galilei — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  11. ISFDB author ID: http://www.isfdb.org/cgi-bin/ea.cgi?157256 — بنام: Galileo Galilei — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  12. Babelio author ID: https://www.babelio.com/auteur/wd/94264 — بنام: Galilée — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  13. After 350 Years, Vatican Says Galileo Was Right: It Moves — ناشر: The New York Times Company اور A.G. Sulzberger — شائع شدہ از: 31 اکتوبر 1992
  14. اجازت نامہ: CC0
  15. ^ ا ب پ ت اجازت نامہ: CC0 نقص حوالہ: نادرست <ref> ٹیگ؛ نام "d37a1568cd970bec95bc3c12b1364b2bc36512b0" مختلف مواد کے ساتھ کئی بار استعمال ہوا ہے۔
  16. مصنف: Govert Schilling — صفحہ: 31
  17. http://www.infoplease.com/biography/science-mathematicians.html
  18. http://www.nytimes.com/2003/08/12/science/12ESSA.html
  19. http://www.nytimes.com/2009/06/02/science/02essay.html?pagewanted=all