یارد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
یارد ابن مہلل ایل
نام: یارد
پیدائش: 3301 قبل مسیح
وفات: 2339 قبل مسیح (961-962 سال)
بیوی: باراکا
اولاد: حنوک، اور دیگر
والدین: مہلل ایل(والد)، دینہ(والدہ)
خاندان: قینان (دادا)، متوشلح (پوتا)
قابل احترام: عیسائیت، یہودیت اور اسلام

یارد (عبرانی: ירד Yāreḏ ،Yereḏ؛ 'اترنا'؛ عربی: ’Al-Yārad أَليَارَد یا [عام طور پر]: Yārad يَارَد[1] کتاب پیدائش میں مذکور ہے جو آدم اور حوا کی چھٹی نسل ہے۔ یارد کی بنیادی تاریخ کتاب پیدائش 20–5:18 میں ہے۔[2]

بائبل میں[ترمیم]

خاندان

یارد بن مہلل ایل بن انوس بن شیث بن آدم

مندرجہ بالا نسب کا ذکر عہد نامہ عتیق (عہد نامہ قدیم) میں کیا گیا ہے۔ یارد کے باپ نام مہلل ایل اور دادا کا نام شیث ابن آدم تھا، جب مہلل ایل 65 برس کا تھا تو یارد پیدا ہوا تھا۔[3] مشتبہ تحریر کتاب جوبلی میں اس کی ماں کا نام ”دینہ“ مذکور ہے۔

کتابِ جوبلی میں بیان کیا گیا ہے کہ یارد نے ایک عورت سے شادی کری تھی جس کا نام ”باراکا“، ”بریکا“ یا ”براخا“ تھا۔ اور بائبل بھی یہ کہتی ہے کہ یارد بیٹے اور بیٹیوں کا باپ بنا تھا[4]۔ان کے بچوں میں سے صرف حنوک کا ذکر کیا گیا ہے۔حنوک جب پیدا ہوا تھا اس وقت یارد 162 برس کا تھا۔[5][6][7][8][9] کتابِ جوبلی کے مطابق، پھر حنوک نے عدنہ سے شادی کری۔اور اس کے واحد پوتے ”متوشلح“ کے نام کا ذکر کیا گیا ہے۔متوشلح کا ذکر بائبل میں بھی آیا ہے جو انسانوں میں سب سے زیادہ عرصہ حیات رہنا والا انسان ہے۔[10][11][12] اس کے علاوہ، یارد نوح اور اس کے تین بیٹوں حام، سام اور یافث کا آباو اجداد ہے۔

وصال
یارد کی مرتے وقت عمر 962 برس تھی۔ عبرانی بائبل اور سپتواینہ کے مطابق، یارد اپنے پوتے متوشلح کے بعد سب سے زیادہ عرصہ حیات رہنا والا شخص تھا۔اس کے برعکس سامری تورات کے مطابق، جب یارد پیدا ہوا تو اس کے باپ کی عمر 62 برس تھی اور جب یارد کا وصال ہوا تو اس کی عمر 847 برس تھی۔ جو نوح کو متوشلح کے بعد سب سے زیادہ عرصہ حیات رہنا والا شخص ثابت کرتا ہے۔

اسلام میں[ترمیم]

اسلام میں یارد کا ذکر قصص الانبياء‎ کے مختلف مجموعوں میں موجود ہے۔مزید برآں، ابتدائی اسلامی مورخین ابن اسحاق اور ابن ہشام نے سرورِ کائنات محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے نسب نامہ میں ہمیشہ یارد[13](عربی: ’Al-Yārad أَليَارَد یا [عام طور پر]: Yārad يَارَد) کا نام شامل کیا ہے۔

شجرہ نسب[ترمیم]

آدم
 
 
 
حوا
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
اعوان
 
 
 
قابیل ہابیل
 
عزورا
 
 
 
شیث علیہ السلام
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
حنوک انوس
 
 
 
نعوم
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
قینان
 
میولیل براحا
 
 
عیراد
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
مہلل ایل
 
دینہ راسو ایل
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
محویاایل دانی ایلہ یارد
 
باراکا
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
عدنہ
 
 
 
حنوک
 
 
 
 
متوساایل
 
 
 
 
عدنہ
 
متوشلح
 
 
 
 
 
 
عدہ
 
 
 
لامخ
 
 
 
ضلہ لامخ
 
بیت نوس
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
یوبل
 
 
نعمہ
 
 
 
 
 
نوح
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
یابل توبل قابیل یافث سام حام

حوالہ جات[ترمیم]

  1. The etymology "to descend"is according to Richard S. Hess (15 October 2007)۔ Israelite Religions: An Archaeological and Biblical Survey۔ Baker Academic۔ صفحہ 176۔ آئی ایس بی این 978-0-8010-2717-8۔ 
  2. Genesis 5:18–20
  3. 65 according to the Masoretic Text, but 165 according to the Septuagint. Larsson, Gerhard. “The Chronology of the Pentateuch: A Comparison of the MT and LXX.” Journal of Biblical Literature, vol. 102, no. 3, 1983, p. 402. www.jstor.org/stable/3261014.
  4. Genesis 5:13
  5. Genesis 5:18
  6. 5:22a
  7. 5:24
  8. Hebrews 11:5b
  9. Jude 14–15
  10. Genesis 5:18
  11. 5:21
  12. 5:27
  13. Ibn Ishāq, Sīrat Rasūl Allāh, tr. A. Guillaume (Oxford: Oxford University Press, 2004), p. 3