یوسف ناظم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
یوسف ناظم
معلومات شخصیت
پیدائش 18 نومبر 1918(1918-11-18)
جالنہ، مہاراشٹر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات جولائی 23، 2009(2009-70-23) (عمر  90 سال)
ممبئی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
قومیت بھارتی
پیشہ محکمہ مزدوری (موظف بہ طور ڈپٹی لیبر کمیشنر)

یوسف ناظم (پیدائش: 18 نومبر 1918ء – وفات: 23 جولائی 2009ء) اردو ادب میں طنز و مزاح کے نثرنگار تھے۔

پیدائش[ترمیم]

یوسف ناظم 18 نومبر 1918ء کو مہاراشٹر کے چھوٹے سے شہر جالنہ میں پیدا ہوئے تھے۔[1]

تعلیم[ترمیم]

جالنہ میں ابتدائی تعلیم کے مکمل ہونے کے بعد یوسف نے اورنگ آباد (مہاراشٹر) کے عثمانیہ کالج سے انٹرنیٹ مکمل کیا۔ انہوں نے 1942ء میں جامعہ عثمانیہ سے اردو میں بی اے کیا۔ 1944ء میں یہیں سے ایم اے اردو کی تکمیل ہوئی۔[1]

ملازمت[ترمیم]

یوسف حیدرآباد میں لیبر آفیسر کے طور پر مقرر ہوئے۔ 1960ء میں ان کو اسسٹنٹ لیبر کمشنر کے طور ترقی دی گئی۔ 1976ء میں وہ ڈپٹی لیبر کمشنر کے طور پر وظیفہ یاب ہوئے۔[1]

ادبی ذوق[ترمیم]

یوسف نے اپنی ادبی زندگی اسکولی دنوں میں غزلوں اور نظموں سے شروع کی۔ تاہم وہ 1944ء سے طنز و مزاح کا رخ کیے۔ میزان اور پیام جیسے رسالوں میں ان تحریروں کی اشاعت کے بعد وہ اس میدان میں مشہور ہو گئے تھے۔[1]

کتابیں[ترمیم]

اپنے دور میں انہوں نے سینکڑوں طنزیہ انشائیے، مختر انشائیے اور افسانے لکھے جو تیس سے زائد کتابوں میں یکجا کیے گئے۔ ان میں کیف و کم، فُٹ نوٹ، البتہ، فقط، ورنہ اور منجملہ کافی مقبول ہوئے۔[1]

کالم[ترمیم]

یوسف اپنے تبصروں اور مزاحیہ کالموں کو سیاست، انقلاب، اردو ٹائمز، کئی اردو روزناموں اور ہفتہ وار بلٹز میں لکھتے تھے۔[1]

رکنیتیں[ترمیم]

یوسف مہاراشٹر ریاستی اردو اکیڈمی کے لمبے عرصے تک معتمد رکن رہے تھے۔ وہ مہاراشٹر انجمن ترقی ہند کے صدر رہے تھے۔ وہ اپنے انتقال تک زندہ دلان بمبئی کے صدر تھے۔[1]

اعزازات[ترمیم]

یوسف ناظم کو 1984ء میں غالب ایوارڈ دیا گیا۔ 1992ء میں انہیں ہریانہ اردو اکیڈمی کی جانب سے مہندر سنگھ ایوارڈ حاصل ہوا۔ 1989ء میں مہاراشٹر حکومت کی جانب سے ایک انعام دیا گیا تھا۔[1]

انتقال[ترمیم]

23 جولائی، 2009ء کو یوسف ناظم کا ممبئی میں انتقال ہو گیا۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]