البابرتی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

البابرتی (714ھ786ھ = 1314ء1384ء) انہیں صاحب العنایہ بھی کہا جاتا ہے۔
ان کا نام محمد بن محمد بن محمود یا محمد بن محمود بن احمد بابرتی ہے۔
اكمل الدين ابو عبد الله ابن الشيخ شمس الدين ابن الشيخ جمال الدين الرومی البابرتی یہ رومی ہیں بغداد کے اطراف میں ایک گاؤں "بابرتا"کی طرف نسبت سے البابرتی مشہور ہیں۔ بعض کہتے ہیں کہ (بابرت) ارزن الروم - أرض روم کے گردو نواح میں سے ہے جو تركی میں واقع ہے۔ حنفی فقیہ، امام، محقق، باریک بین، ماہر علم حدیث اور عربی اصول وادب کے اساتذہ میں سے ہیں۔ علم حاصل کرنے کے لیے پہلے حلب اور پھر قاہرہ کے سفر کیے۔ کئی مرتبہ عہدہ قضاء پیش کیا گیا مگر آپ نے اسے قبول نہیں کیا۔ ان کی وفات مصر میں ہوئی۔

تصنیفات[ترمیم]

  • شرح تلخيص الجامع الكبير للخلاطی (فقہ)
  • العقيدة(توحيد)
  • العنایۃ في شرح الہدایہ(فقہ)
  • شرح مشارق الانوار
  • التقريرعلى اصول البزدوی
  • شرح وصیۃ الامام ابی حنيفہ
  • شرح المنار
  • شرح مختصر ابن الحاجب
  • شرح تلخيص المعانی
  • شرح الفیہ ابن معطی
  • النقود والردود
  • حاشیۃ على الكشاف
  • الارشاد( شرح الفقه الاكبر لابی حنیفۃ)[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. موسوعۃ الفقہیہ جلد1،صفحہ451،اسلامی فقہ اکیڈمی دہلی انڈیا