تبادلۂ خیال:زرکاغذ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

This template should be substituted on the article talk page.

Untitled[ترمیم]

مضمون بہتر بنانے پر جناب کاشف عقیل صاحب کا بہت بہت شکریہ ًًًًShahab 17:29, 23 مئی 2011 (UTC)

  • میرے خیال میں یہ مقالہ ابھی منتخب مقالہ نہیں بنایا جاسکتا، اِس میں اِصلاح کی بڑی گنجائش ہے۔ پہلی بات تو یہ کہ اِس کے عنوان کا تلفّط واضح نہیں ہے، لفظ سکہ میں ’’ک‘‘ پر تشدید ہونا چاہئے یعنی ’’سکّہ‘‘، دوسری بات یہ کہ مضمون میں کاغذی سکّے کی جامع یا سلیس تعریف درج نہیں کی گئی ہے۔ --محبوب عالم 06:19, 14 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • اور اس کے ساتھ ساتھ حوالہ جات بھی ٹھیک درج نہیں ہیں۔ یہ ویکیپیڈیا کا مضمون کم کسی اخبار کا کالم زیادہ لگتا ہے - ارون ریجینلڈ 07:22, 14 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • یہ مقالہ ویکیپیڈیا کے طرز کے مطابق نہیں ہے۔ سب سے اہم بات یہ کہ مقالہ ہٰذا جس مضمون کے متعلق ہے اُس بارے زیادہ متن اِس میں موجود نہیں اور غیر متعلقہ اشیاء یعنی دیگر مضامین کے متعلق اِس میں کافی متن موجود ہے مثلاً سکے۔ یہ مقالہ صرف اور صرف کاغذی سکے کے متعلق ہونا چاہئے، اِس ضمن میں انگریزی ویکیپیڈیا کے مقالے Banknote سے استفادہ کیا جاسکتا ہے۔ میں بھی اِس مقالہ کی طرف کچھ توجہ دینے کی کوشش کرونگا۔۔۔۔ --محبوب عالم 10:26, 14 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • یہ درست ہے کہ مضمون انگریزی banknote کا متبادل نہیں۔ یہ مضمون سکّہ کی تاریخ، فلسفہ اور ارتقاء بارے ہے۔ banknote پر علیحدہ مضمون لکھا جا سکتا ہے۔ تمام احباب سے گذارش ہے کہ مضمون کا اسلوب بہتر بنانے میں مدد دیں۔ ارون صاحب نے حوالہ جات سے متعلق جن خامیوں کی نشاندہی کی ہے وہ دور کی جائیں۔ --Urdutext 11:21, 14 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • جناب سکہ کے لئے الگ مقالہ موجود ہے۔ مقالہ ہٰذا میں سکّہ کے متعلق تقریباً تمام متن اِس مقالہ میں منتقل کرنا چاہئے۔ یہ مقالہ صرف banknote کے متعلق ہونا چاہئے کیونکہ کاغذی سکّہ کا مطلب banknote ہی ہوتا ہے۔ اِس مقالہ میں فقط کاغذی سکّہ کی تاریخ درج کی جاسکتی ہے۔۔ --محبوب عالم 12:13, 14 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • مذکورہ مضمون en:Fiat money سے زیادہ قریب ہے۔ اس کا اسلوب بہتر بنانے کی ضرورت ہے تاکہ یکطرفہ ہونے کا الزام نہ لگے۔ مثلاً "کاغذی سکّہ موجودہ دنیا کا سب سے بڑا دھوکہ ہے" کی بجائے لکھا جا سکتا ہے کہ "اقتصادیات کے ایک نکتہ نظر کے مطابق کاغذی سکّہ کو موجودہ دنیا کا سب سے بڑا دھوکہ ہے" --Urdutext 23:57, 14 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • براۓ مہربانی حوالہ جات کے لۓ مستند ذرائع استعمال کریں اور blogspot کے blogs کا استعمال تو بلکل نا کیا کریں۔ blogspot پر اکثر باتیں تسدیق شدہ نہیں ہوتیں۔ research اور journal articles استعمال کریں - ارون ریجینلڈ 07:34, 15 جولا‎ئی 2011 (UTC)
  • گو کہ currency کے لیے current کی مناسبت سے اردو میں ---- سکہ رائج الوقت ---- کی اصطلاح دیکھنے میں آتی ہے لیکن یہ بہرحال سکہ کی حیثیت برائے coin کے تبدیل نہیں کرتی اور سکہ کا متبادل coin کے لیے ہی بہتر ہے۔
  1. currency = زرِزمانہ
  2. coin = سکہ
  3. note = رُقعہ (دونوں انگریزی معنوں 1 یاداشت اور 2 رقم کے لیے اردو میں 1962ء سے رقعہ ہی مستعمل ہے؛ دیکھیے۔
  4. banknote = رقعۂ مصرف
  5. paper note = رقعۂ کاغذ (کاغذی رقعہ)
  6. paper currency = زرِکاغذ
  7. currency note = زرِرقعہ

--سمرقندی 07:52, 15 جولا‎ئی 2011 (UTC)


By RON PAUL -2011-20-Oct (The Wall Street Journal) — To know what is wrong with the Federal Reserve, one must first understand the nature of money. Money is like any other good in our economy that emerges from the market to satisfy the needs and wants of consumers. Its particular usefulness is that it helps facilitate indirect exchange, making it easier for us to buy and sell goods because there is a common way of measuring their value. Money is not a government phenomenon, and it need not and should not be managed by government. When central banks like the Fed manage money they are engaging in price fixing, which leads not to prosperity but to disaster.

…The Fed fails to grasp that an interest rate is a price, the price of time. Attempting to manipulate that price is as destructive as any other government price control.


علامہ اقبال[ترمیم]

رعنائی تعمیر میں ، رونق میں ، صفا میں
گرجوں سے کہیں بڑھ کے ہیں بینکوں کی عمارات
ظاہر میں تجارت ہے ، حقیقت میں جوا ہے
سود ایک کا لاکھوں کے لیے مرگ مفاجات
یہ علم ، یہ حکمت ، یہ تدبر ، یہ حکومت
پیتے ہیں لہو ، دیتے ہیں تعلیم مساوات
بے کاری و عریانی و مے خواری و افلاس
کیا کم ہیں فرنگی مدنیت کے فتوحات
وہ قوم کہ فیضان سماوی سے ہو محروم
حد اس کے کمالات کی ہے برق و بخارات
ہے دل کے لیے موت مشینوں کی حکومت
احساس مروت کو کچل دیتے ہیں آلات
آثار تو کچھ کچھ نظر آتے ہیں کہ آخر
تدبیر کو تقدیر کے شاطر نے کیا مات
میخانے کی بنیاد میں آیا ہے تزلزل
بیٹھے ہیں اسی فکر میں پیران خرابات
چہروں پہ جو سرخی نظر آتی ہے سر شام
یا غازہ ہے یا ساغر و مینا کی کرامات
تو قادر و عادل ہے مگر تیرے جہاں میں
ہیں تلخ بہت بندۂ مزدور کے اوقات
کب ڈوبے گا سرمایہ پرستی کا سفینہ؟
دنیا ہے تری منتظر روز مکافات

  • مضمون کو منتخب مقالہ تک پہنچانے کے لیے سب ساتھیوں سے مدد کی درخواست ہے۔ امید ہے کہ یہ کام نئے سال کے آغاز میں مکمل کر لیا جائے گا۔
  • wiki markup کی درستگی
    • حوالہ میں سانچہ cite کا استعمال
    • عام الفاظ کو ربط نہ بنایا جاَئے
    • کسی اصطلاح کے صرف پہلے استعمال پر ربط دیا جائے
  • انگریزی اصطلاحات کو اردو اصطلاحات سے بدلنا۔ انگریزی الفاظ کو متن سے نکالنا
  • انگیریزی وکیپیِڈیا کا حوالہ قبول نہیں۔ مدونہ کے حوالوں کو بھی مستند حوالہ جات سے بدلنا۔ دعوی کے حوالے یا دعوں کی عبارت تبدیل کرنا
  • سرخ ربط والے عنوانات پر مختصر مضمون بنانا

--Urdutext 02:10, 1 جنوری 2012 (UTC)


مضمون بہتر بنانے پر جناب اردو ٹیکسٹ صاحب کا بہت بہت شکریہ۔

ًًًًShahab 17:22, 1 جنوری 2012 (UTC) شہاب (تبادلۂ خیالشراکتیں) 19:11, 15 اگست 2015 (م ع و) -- صارف:Shahab جو اس مقالہ کے لکھاری ہیں کی طرف سے (یہ نوٹ مقالہ سے یہاں منتقل کیا گیا)

حوالہ[ترمیم]

اس مضمون کی تیاری میں انگریزی وایکی پیڈیا کے ان مضامین سے مدد لی گئی۔

--

Government Bond Ponzi Bubble Has To Bust[ترمیم]

The main buyers of government bonds have been the big global banks, and there is only one reason they keep buying government bonds. if they don’t keep buying they will go broke as will the government.

These are the same institutions that have been bailed out by the US, European and Japanese central banks. How have the central banks bailed out the big banks? Simple, The central banks “bought” all the big banks toxic loans in exchange for newly printed paper.

So when these governments sell new bonds, one guess who are the big buyers? You are correct if you guessed that the same banks that were saved by the government now regularly buy all the government bonds being sold in order to keep the financial fraud intact.

Does any of that mean that government deficits do not matter? Or does it really mean that bond buyers know that their survival is based upon buying all the government bonds being offered them.

For example the financial media wants to make a big deal that bond rates have dropped on French, Spanish and Greek debt. But what the media does not report is that interest rates are dropping because the Euro banks are buying those new bonds using some of the billions given them by the ECB in exchange for their problem loans.


This circular game of governments buying bad loans from banks who use the money to buy government bonds eventually will spin out of control.


By Charles Biderman [1] Shahab (تبادلۂ خیال) 16:30, 8 دسمبر 2012 (م ع و)

  1. http://trimtabs.com/blog/2012/12/07/government-bond-ponzi-bubble-has-to-bust/



Senator Benton of Missouri thoroughly understood the means by which the bank had obtained its mastery over the commerce and industry of the nation, and at the session of Congress, presented a resolution in the Senate to the effect that the charter should not be renewed (Walbert 12). The bank [then] initiated a policy of expanding its loans to $71 million which were "judiciously placed among leading merchants and manufacturers, that, in the event of their being called in by the bank,` [would create] powerful pressure upon the President and Congress" (12). Senator Benton delivered the following speech to the Senate,

The government itself ceases to be independent, it ceases to be safe when the national currency is at the will of a company [Bank of the United States]. The Government can undertake no great enterprise, neither war nor peace, without the consent and co-operation of that company; it cannot count its revenues six months ahead without referring to the action of that company--its friendship or its enmity, its concurrence or opposition to see how far that company will permit money to be scarce or to be plentiful; how far it will let the money system go on regularly or throw it into disorder; how far it will suit the interest or policy of that company to create a tempest or suffer a calm in the money ocean. The people are not safe when such a company has such a power. The temptation is too great, the opportunity too easy, to put up or put down prices, to make and break fortunes; to bring the whole community upon its knees to the Neptunes who preside over the flux and reflux of paper. All property is at their mercy, the price of real estate, of every growing crop, of every staple article in the market, is at their command. Stocks are their playthings--their gambling theater, on which they gamble daily with as little secrecy and as little morality and far more mischief to fortunes than common gamblers carry on their operations۔

The Coming Battle by M. W. Walbert Shahab (تبادلۂ خیال) 19:08, 17 مارچ 2013 (م ع و)

متنخب[ترمیم]

مضمون کو "منتخب مقالہ" بنانے کے لیے کوشش کی ضرورت ہے۔ سب سے پہلے سرخ روابط پر چھوٹے چھوٹے مضامین بنا دیے جائیں۔ اس کے بعد اگر صارفین کو مواد کے کسی حصہ پر اعتراض ہو تو نشاندہی کریں۔ جہاں حوالہ کی ضرورت ہے تو فراہم کریں۔ اگر کوئی چیز ذاتی رائے ہے تو اسے حذف کیا جا سکتا ہے۔ یہ نہ ہو کہ دنیا میں زرکاغذ کا بحران پہلے آ جائے اور مقالہ بعد میں صفحہ اول پر آئے۔ --Urdutext (تبادلۂ خیال) 16:14, 30 مارچ 2013 (م ع و)


منتخب مقالہ[ترمیم]

یہ مضمون منتخب مقالہ بننے کا امیدوار ہے، یعنی کچھ عرصہ کے لیے یہ وکیپیڈیا کے صفحہ اول پر نظر آئے گا۔ براہ کرم عملی تعاون سے اسے بہتر بنائیں۔ اس سلسلہ میں بحث اس ذیلی صفحہ پر کریں۔ --Urdutext (تبادلۂ خیال) 05:53, 5 مئی 2013 (م ع و)

سکے[ترمیم]

اردو ٹیکصٹ بھائی سکے کو بھی کہیں اور منتقل کر دیں۔ کیونکہ وہ زر کاغذ نہیں۔ اور اصل مضمون کا حصہ بھی نہیں۔ جو جیز اصل مغمون کا حصہ ہے زرکاغذ کے لیے استعمال مواد اسے آپ نے کہیں اور منتقل کر دہا؟؟؟ --طاھر محمود (تبادلۂ خیال) 05:35, 26 مئی 2013 (م ع و)

  • طاہر صاحب، مضمون اصل میں رقعہ مصرف (bank note) بارے نہیں۔ اور نہ ہی سکّوں کی اقسام بارے۔ مضمون کو اس سے کوئی غرض نہیں کہ سکّے چکور ہوتے ہیں یا گول، بنک نوٹ کاغذ کا ہوتا ہے یا پالیمر کا۔ اگرچہ یہ انگریزی مضمون paper money سے ربط ہے مگر اس کا موضوع مختلف ہے۔ یہ مضمون مقایضہ سے لے کر سکّہ اور زرکاغذ سمیت قدیم زمانہ سے موجودہ دور تک زرمبادہ کی تاریخ اور غرضیت بیان کرتا ہے۔ اگر آپ چاہیں تو مضمون کا عنوان بدلا جا سکتا ہے اور دیگر وکیپیڈِیا سے ربط ہٹا کر دوسرے موضوعات (رقعہ مصرف، سکّہ وغیرہ) پر الگ مضمون لکھے جا سکتے ہیں (یا پہلے سے ہی موجود ہونگے)۔ شہاب صاحب سے بھی درخواست ہے کہ نیا عنوان تجویز کریں۔ --Urdutext (تبادلۂ خیال) 15:25, 26 مئی 2013 (م ع و)
  • میرے خیال میں اس مضمون کا نام "کاغذی سکہ بمقابلہ اصلی سکہ" ہو سکتا ہے۔

Shahab (تبادلۂ خیال) 20:58, 26 مئی 2013 (م ع و)

  • banknote پر علیحدہ مضمون بنا دیا گیا ہے۔ میرے خیال میں زرکاغذ بمعنی کرنسی درست ہے۔ نام بدلنے کی ضرورت نہیں۔ اگر نام پر اعتراض ہے تو مطلع فرمائیں۔ دوسری درخواست ہے کہ اب مضمون میں نیا مواد نہ ڈالا جائے، صرف غلطیوں کی درستگی کی جائے۔ --Urdutext (تبادلۂ خیال) 03:12, 27 مئی 2013 (م ع و)

معیار مضمون[ترمیم]

میرے خیال میں اس مضمون کو وکیپیڈیا کے معیار کے مطابق نہیں لکھا گیا مضمون میں دلچسپی پیدا کرنے کی اضافی کوشش کی گئی ہے۔خیر مضمون معلوماتی ہے مگر اسکی تصدیق بھی سحیح ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ الکاتب (تبادلۂ خیال) 21:48, 13 جون 2013 (م ع و)

  • اغلاط کی نشاندہی کریں۔ صفحہ اول پر ہونے کی وجہ سے مضمون مفقل ہے، تاہم اس عرصہ کے بعد درستگی کی جا سکتی ہے۔ --Urdutext (تبادلۂ خیال) 15:22, 14 جون 2013 (م ع و)
  • مثلا یہ لکھنے کی کیا ضرورت تھی "ساڑھے تین سال کی مدت میں 5600 میل کا سفر طے کر کے جب مئی 1275 میں" مارکو پولو پہلی دفعہ چین پہنچا الکاتب (تبادلۂ خیال) 19:14, 16 جون 2013 (م ع و)
  • میرے خیال میں اس سے قاری کو یہ باور کرانا ہے کہ قدیم زمانہ میں لوگوں کے لیے یہ انوکھا تھا کہ کاغذ کی کرنسی ہو، صرف چین جو باقی دنیا سے دور تھا میں یہ دیکھنے میں آیا۔ --Urdutext (تبادلۂ خیال) 19:47, 16 جون 2013 (م ع و)


اضافہ حوالہ[ترمیم]

اردو ٹیکسٹ صاحب سے گذارش ہے کہ اس درج ذیل حوالے کا ربط مضمون کاغذی کرنسی میں شامل کر دیں۔

[1]

  1. An Empire of Fraud and Deception

Shahab (تبادلۂ خیال) 16:23, 12 اگست 2013 (م ع و)

یہ مضمون کیا ہے؟[ترمیم]

اس مضمون کا عنوان زرکاغذ ہے۔ اور اسکا ربط Banknote سے تھا۔ اس وقت Urdutext صاحب نے اس مضمون کو منتخب مقالہ کے لیے تجویز کیا۔ اور درخواست کی کہ مضمون پر خاص توجہ دی جائے۔ میں نے جسارت کی کہ زرکاغذ کے لیے استعمال مواد اس میں درج کیا جائے جو کہ انگریزی مضمون کا حصہ ہے۔ Urdutext صاحب کو یہ پسند نہ آیا اور اسے باہر نکال مارا۔ دیکھیے رقعہ مصرف۔ کیونکہ وہ منتظم ہیں۔

اور پھر صفحہ کا ربط Banknote سے Currency پر تبدیل کر دیا۔ Currency کا اردو متبادل شاید زرکاغذ ہو گا جبھی تو منتظم صاحب نے ایسا کیا۔

  • افراط زر کی تشریح زرکاغذ کے تحت ہی آتی ہو گی۔
  • امریکی ڈالر اور فیڈرل ریزرو بھی اسی کا حصہ ہو گا؟
  • دھاتی سکے بھی یہاں زرکاغذ میں زیر بحث ہیں۔ جی ہاں بالکل ہو سکتے ہیں۔ زرکاغذ کے لیے استعمال مواد درج کرنا منع ہے۔ منتظم صاحب کا حکم ہے۔

یہ منتخب مقالہ ہے۔ چوں چوں کا مربہ نہیں ہے۔ --طاھر محمود (تبادلۂ خیال) 06:55, 11 نومبر 2013 (م ع و)


یہاں ایک شخص ویکیپیڈیا کو اپنی ملکیت سمجھ رہا ہے۔ ان کے خیال میں یہاں وہ کچھ بھی کر سکتے ہیں، کسی اور کی رائے درکار نہیں۔ اگر مضمون پر میری تنقید کی وجہ سے ایسا کیا جا رہا ہے تو تنقید تو میں نے صفحہ کے منتخب مقالہ بننے سے پہلے کی تھی۔ تب اسے منتخب مقالہ کیوں بنایا گیا۔ دیکھیے۔ جب یہ مضمون رائے شماری سے منتخب مقالہ بنا ہے تو اب اسے رائے شماری کے بغیر منتخب مقالہ سے خارج کیسے کیا جا سکتا۔ --طاھر محمود (تبادلۂ خیال) 06:31, 19 نومبر 2013 (م ع و)
  • آپ کے پیغام سے اوپر ہی آپ سے رائے مانگی گئی، مگر آپ نے خاموشی اختیار کی اور اب شکایت کرنے آ گئے ہیں۔ اگر اب آپ کے خیال میں یہ منتخب مقالہ ہو گیا ہے (اوپر ساری تنقید کرنے کے بعد 11 نومبر 2013ء) تو اپنی تنقید واپس لیں اور مضمون میں منتخب کا سانچہ ڈال دیں- --Urdutext (تبادلۂ خیال) 15:16, 19 نومبر 2013 (م ع و)
  • Urdutext صاحب غصے میں عقل ساتھ چھوڑ دیتی ہے۔ میری تنقید منتخب مقالہ بننے سے پہلے بھی تھی اور بعد میں بھی ہے۔ جب مضمون رائے شماری سے منتخب مقالہ بنا ہے تو آپ کو کوئی اختیار نہیں کہ آپ اسے منتخب مقالہ سے نکال دیں۔ اگر آپ کو یہ مقصود ہے تو اس کی تنزلی کے لیے رائے شماری کرائیں۔ یہ مضمون اصولاً اب بھی منتخب مقالہ ہے۔ --طاھر محمود (تبادلۂ خیال) 05:32, 20 نومبر 2013 (م ع و)


"root of all evil" is paper money[ترمیم]

Identity doctrine asserts that the "root of all evil" is paper money (in particular Federal Reserve Notes), and that usury and banking systems are controlled by Jews.[34]:87 The creation of the Federal Reserve System in 1913 shifted control of money from Congress to private institutions and violated the Constitution. The money system encourages the Federal Reserve to take out loans, creating trillions of dollars of government debt and allowing international bankers to control America. Credit/debit cards and computerised bills are seen as the fulfillment of the Biblical scripture warning against "the beast" دجال (i.e. banking ) as quoted in Rev 13:15-18. Identity preacher Sheldon Emry claims "Most of the owners of the largest banks in America are of Eastern European (Jewish) ancestry and connected with the (Jewish) Rothschild European banks", thus, in Identity doctrine, the global banking conspiracy is led and controlled by Jewish interests.[34]:91

حوالہ[ترمیم]

Billions for Bankers--Debts for the People
Shahab (تبادلۂ خیالشراکتیں) 02:29, 30 جون 2014 (م ع و) شہاب (تبادلۂ خیالشراکتیں) 19:07, 15 اگست 2015 (م ع و)

بہت خوب[ترمیم]

مضمون اچھا ہے، مصنفین کو مبارکباد۔ دوسری بات یہ ہے کہ یہ مضمون کافی لمبا ہے، لمبے مضامین دلچسپ نہیں ہوتے۔ اس مضمون میں، زر، کرینسی، کاغزی کرینسی، بنک نوٹ، سکے وغیرہ پر لکھا گیا ہے، جو کہ مختلف عنوانا ہیں۔ خیر، کیا “سکے“ کے حصہ نکال کر اس کے لیے نیا مضمون لکھا جائے تو بہتر ہوسکتا ہے؟ اگر بہتر لگے تو “سکے“ کے لیے ایک نیا مضمون بنائیں۔ అహ్మద్ నిసార్ (تبادلۂ خیالشراکتیں) 04:41, 28 اکتوبر 2014 (م ع و)

یہ مضمون ایک بہترین مضمون ہے لیکن حد سے زیادہ لمبی ہوتی جارہی ہے۔-- 17:26, 7 مارچ 2017 (م ع و)