جیف کینی (مصنف)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
جیف کینی
جیف کینی نومبر 2011ء میں کتب پر دستخط کی تقریب کے موقع پر
جیف کینی نومبر 2011ء میں کتب پر دستخط کی تقریب کے موقع پر

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (عبرانی میں: ג'פרי פטריק קיני ویکی ڈیٹا پر پیدائشی نام (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 19 فروری 1971ء (عمر 48 سال)
فورٹ واشنگٹن، میری لینڈ[1]  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش فورٹ واشنگٹن، میری لینڈ  ویکی ڈیٹا پر رہائش (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the United States (1795-1818).svg ریاستہائے متحدہ امریکا[1]  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
زوجہ جولی کینی
اولاد 2
عملی زندگی
مادر علمی یونیورسٹی آف میری لینڈ، کالج پارک  ویکی ڈیٹا پر تعلیم از (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ مصنف، گیم ساز، اداکار
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[2]  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں ڈائری آف آ ومپی کڈ  ویکی ڈیٹا پر کارہائے نمایاں (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ویب سائٹ
ویب سائٹ www.wimpykid.com
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  ویکی ڈیٹا پر آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

جیفری پیٹرک ’’جیف‘‘ کینی (پیدائش: 19 فروری 1971ء) ایک امریکی گیم ساز، کارٹون نگار، تخلیق کار، اداکار اور بچّوں کی کئی کتب کے مصنف ہیں۔ اُن کی مقبول ترین تصانیف میں ڈائری آف آ ومپی کڈ کتابی سلسلہ شامل ہے۔ وہ بچّوں کی ایک ویب سائٹ پوپ ٹروپیکا کے خالق بھی ہیں۔

ذاتی زندگی[ترمیم]

جیف فورٹ واشنگٹن، میری لینڈ، ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں پیدا ہوئے اور وہیں پرورش پائی۔ ایک بہن اور تین بھائیوں میں وہ تیسرے نمبر پر ہیں، ایک بھائی اُن سے چھوٹا جب کہ ایک بھائی اور بہن اُن سے بڑے ہیں۔[3] اُنھوں نے ابتدائی تعلیم فورسٹویل، میری لینڈ میں بشپ میک نمارا ہائی اسکول سے حاصل کی۔ 1990ء کی دہائی کے اوائل میں جیف نے جامعہ میری لینڈ میں داخلہ لیا۔ کالج میں اپنی طالبِ علمی کے زمانے ہی میں جیف نے ایک بیانیہ کارٹون (کامک اسٹرپ) ’’اگڈوف‘‘ (انگریزی: igdoof) تخلیق کیا جس نے شہرت حاصل کی۔

’’دی ڈائری آف آ ومپی کڈ‘‘ کتب سلسلہ[ترمیم]

2004ء میں، فن برین اور جیف کینی نے ’’ڈائری آف آ ومپی کڈ‘‘ کا آن لائن نسخہ جاری کیا۔ جون 2005ء تک اس ویب سائٹ پر روزانہ کی بنیاد پر نئی تحاریر پیش کی جاتی رہیں۔[4] کتاب نے دیکھتے ہی دیکھتے شہرت حاصل کرلی اور 2007ء تک 20 ملین صارفین اس کے آن لائن نسخے کا مطالعہ کرچکے تھے۔ متعدد آن لائن قارئین کی جانب سے کتاب کے مطبوعہ نسخے کے اصرار پر جیف راضی ہو گئے اور 2007ء میں ڈائری آف آ ومپی کڈ شائع ہوئی۔[4] تا دمِ تحریر، ومپی کڈ سلسلے کی گیارہ کتب شائع ہوچکی ہیں، جن میں ڈو اٹ یوور سیلف بک اور ایک مووی ڈائری بھی شامل ہے۔ 2009ء میں، ٹائم میگزین نے جیف کو دنیا کے 100 ’’با اثر ترین افراد‘‘ میں شمار کیا۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب http://web.archive.org/web/20160401151733/http://jeugdliteratuur.org/auteurs/jeff-kinney
  2. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb15798077f — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. نک مک گراتھ (30 نومبر 2012ء)۔ "Jeff Kinney: 'People ask me, is Greg really you?'" (انگریزی زبان میں)۔ دی گارجین۔ Unknown parameter |trans_title= ignored (معاونت)
  4. ^ ا ب "Diary of a Wimpy Kid" (انگریزی زبان میں)۔ فن برین۔ Unknown parameter |trans_title= ignored (معاونت)
  5. فورسٹ سمپسن (30 اپریل 2009ء)۔ "The 2009 TIME 100: Jeff Kinney" (انگریزی زبان میں)۔ ٹائمز۔ Unknown parameter |trans_title= ignored (معاونت)