مندرجات کا رخ کریں

حارث ہمدانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
حارث ہمدانی
معلومات شخصیت
عملی زندگی
پیشہ محدث   ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حارث الحمدانی آپ کبائر تابعین میں سے تھے، حضرت علی بن ابی طالب اور ان کے اشراف کے ساتھیوں میں سے تھے۔آپ عالم ، مفتی اور حدیث نبوی کے راوی ہیں۔آپ نے حضرت علی اور ابن مسعود سے علم حاصل کیا اور ابو اسحاق السبیعی آپ کے تلامذہ خواص میں سے ایک ہے ۔[1]

نام و نسب

[ترمیم]

ابو زہیر، حارث الاعور بن عبد اللہ بن کعب بن اسد بن خالد بن ہوت بن سبا بن صاب بن معاویہ بن کثیر بن مالک بن جشم بن حشد بن خیران بن نوف بن حمدان الکوفی ہیں۔ جسے حارث الاعور کے نام سے جانا جاتا ہے اور اس کے نسب حارث بن عبید کے بارے میں کہا جاتا ہے اور آپ کوفہ میں رہنے والے ہمدان قبیلے کی ایک بیلی وہیل کے حوالے سے خارفی بھی کہا جاتا ہے، وہ پہلی صدی ہجری کے قابل ذکر افراد میں سے ایک تھا، آپ حضرت علی اور امام حسن بن علی رضی اللہ تعالیٰ عنہما کے ہم عصر تھے۔ [2]

روایت حدیث

[ترمیم]

حارث نے علی بن ابی طالب، ابن مسعود، زید بن ثابت اور سلمان کی بیوی بقیرہ سے روایت کی ہے۔ امام شعبی، ابو اسحاق السبیعی، ابو بختری الطائی، عطاء بن ابی رباح، عبد اللہ بن مرہ، ابو الصفر الحمدانی اور ایک جماعت نے ان سے روایت کی ہے۔

جراح اور تعدیل

[ترمیم]

حافظ ابن حجر عسقلانی نے کہا" لا بہ : اس میں کوئی حرج نہیں۔ امام نسائی نے کہا:لا باس بہ "اس میں کوئی حرج نہیں اور یہ بھی کہا کہ وہ قوی نہیں ہے۔ ابو حاتم نے کہا: اسے بطور حجت استعمال نہیں کیا جائے گا، پھر امام نسائی اور سنن کے مصنفین نے الحارث کو بطور حجت پیش کیا ہے۔ جریر بن عبد الحمید نے کہا: یہ جھوٹا تھا۔ ابن معین نے کہا: ضعیف الدارقطنی نے کہا: ضعیف ہے۔ [3]

اولاد

[ترمیم]

نافع بن الحارث ہمدانی۔ عمرو بن الحارث ہمدانی۔ عبد اللہ بن الحارث الحمدانی شریک بن الحارث الحمدانی

وفات

[ترمیم]

آپ نے 65ھ میں وفات پائی ۔

حوالہ جات

[ترمیم]
  1. أعيان الشيعة - السيد محسن الأمين -المجلد 4 - صفحة 367
  2. سير أعلام النبلاء - الحافظ الذهبي - الصفحة: 152 - مجلد: 4 "نسخة مؤرشفة"۔ 22 مايو 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 مايو 2013 
  3. سير أعلام النبلاء - الحافظ الذهبي - الصفحة: 152 - مجلد: 4 "نسخة مؤرشفة"۔ 22 مايو 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 مايو 2013