خوشتر گرامی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
خوشتر گرامی
معلومات شخصیت
پیدائش 4 اکتوبر 1902  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
سیالکوٹ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 15 جنوری 1988 (86 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
نئی دہلی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ مصنف،  شاعر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان اردو  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر

خوشتر گرامی (ہندی: खुश्तर गिरामी) (پیدائش: 4 اکتوبر 1902ء— وفات: 15 جنوری 1988ء) اردو زبان کے شاعر تھے۔وہ بھارت کے مشہور ادبی جریدے بیسویں صدی کے مدیر بھی تھے۔

1965ء کی ایک تصویر جس میں ضیاء فتح آبادی کے مکان پر بائیں سے دائیں جانب مشاہیر یوں موجود ہیں: نریش کمار شاد، کیلاش چندر ناز، طالب دہلوی، خوشتر گرامی، بلراج حیرت، ساغر نظامی، طالب چکوالی، منور لکھنؤی، مالک رام، جینیندرا کمار، ضیاء فتح آبادی، رشی پٹیالوی، بہار برنی، جوگندر پال، عنوان چشتی اور کرشن موہن۔

سوانح[ترمیم]

خوشتر گرامی کا پیدائشی نام رام رکھا مل تھا۔ خوشتر 4 اکتوبر 1902ء کو رنگپورہ، سیالکوٹ میں پیدا ہوئے۔1937ء میں لاہور سے ادبی جریدے بیسویں صدی کا آغاز کیا جو برطانوی ہندوستان میں بہت جلد ہی ادبی حلقوں میں مشہور ہوا۔بعد ازاں تقسیم ہند کے وقت خوشتر کے بھارت منتقل ہوجانے پر یہ ادارہ دہلی منتقل ہوا۔ خوشتر کو بھارت کے ممتاز ترین شعرا، مصنفین اور ناقدینِ اردو زبان کو متعارف کروانے کا اعزاز حاصل ہے۔ ادبی جریدہ ماہنامہ کے توسط سے برصغیر کے 1940ء کے عشرے کے بڑے بڑے اردو شعرا نے اپنا مقام بنایا۔ اردو زبان کی خدمات میں خوشتر گرامی کی خدمات کو رد کرنا نافراموش ہے۔ 1977ء میں خوشتر نے یہ ماہنامہ رحمن نئیر کو فروخت کر دیا اور خود اِس کی اِدارت سے الگ ہو گئے۔ 1980ء میں اپنی تصنیف صحت اور زندگی شائع کی جو 2005ء تک شائع ہونے والی اردو زبان کی بڑی کتابوں میں سے ایک تھی۔

وفات[ترمیم]

خوشتر گرامی کا انتقال عارضہ قلب کے باعث 15 جنوری 1988ء کو 86 سال کی عمر میں دہلی میں ہوا۔ 16 جنوری 1988ء کو دہلی میں لودھی ہوٹل کے سامنے شمشان میں نذر آتش کیا گیا۔[1][2]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مالک رام: تذکرہ ماہ و سال، صفحہ 147، مطبوعہ دہلی، 2011ء۔
  2. خبرنامہ مغربی بنگال، اردو اکادمی، صفحہ 8، مارچ 1988ء۔