رامانوجن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
رامانوجن
Srinivasa Ramanujan - OPC - 2.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 22 دسمبر 1887[1][2][3]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
اروڑ[4]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 26 اپریل 1920 (33 سال)[1][2][3]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
کومبھکونم[5]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
وجۂ وفات سل[6]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وجۂ وفات (P509) ویکی ڈیٹا پر
طرز وفات طبعی موت[6]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
رہائش
شہریت British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
رکن رائل سوسائٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رکن (P463) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مقام_تدریس ٹرینیٹی کالج، کیمبرج
مقالات Highly Composite Numbers
مادر علمی جامعہ مدراس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
استاد
پیشہ ریاضی دان[7]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
شعبۂ عمل ریاضی دان
ملازمت ٹرینٹی کالج، کیمبرج  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں نوکری (P108) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
رائل سوسائٹی فیلو  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر
دستخط
Srinivasa Ramanujan signature

مشہور ریاضی دان۔ پورا نام سرینواسا آینگر رامانوجن تھا۔ ریاست تامل ناڈو میں 1887ء میں پیدا ہوئے۔ امانوجن کے بارے میں کہا گیا ہے کہ انہیں ’لامحدود کی سمجھ تھی‘۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ریاضی سے بے انتہا لگاؤ کی وجہ سے انہیں کالج پہنچ کر تعلیم چھوڑنا پڑی کیونکہ وہ دیگر مضامین کی طرف توجہ نہیں دے سکے۔ پیسوں کی کمی کی وجہ سے رامانوجن کا گزارا زیادہ تر خیرات پرتھا مگران کی ریاضی میں دلچسپی برقرار رہی۔ رامانوجن نے مدراس میں کلرک کی نوکری شروع کر دی لیکن ساتھ ساتھ انہوں نے لوگوں کو اپنے ریاضی کے علم سے متعارف کروانے کی کوششیں جاری رکھیں۔

کیمبرج آمد[ترمیم]

انہوں نے کیمبرج یونیورسٹی کے ریاضی کے ماہرین کو خط لکھنا شروع کر دیے۔ امانوجن کو تیسرے ہی خط کے بعد اس وقت کامیابی حاصل ہو گئی جب پروفیسر جی ایچ ہارڈی نے رامانوجن کے دس صفحات کے خط میں دیے گئے ریاضی کے مسئلوں پر غور کرنے کے بعد انہیں کیمبرج بلا لیا۔

انتقال[ترمیم]

رامانوجن پانچ سال کیمبرج میں گزارنے کے بعد 1919ء میں بھارت واپس آئے اور ایک سال کے بعد ان کا انتقال ہو گیا۔ رامانوجن کی برطانیہ کے سخت سرد موسم میں صحت بہت خراب ہو گئی تھی جہاں انہوں ہمیشہ صرف سبزیوں پر مشتمل خوراک کھائی۔ رامانوجن کی تحقیق نے جدید دور میں ڈیجیٹل انقلاب کے بیج بوئے۔ خودکار ٹیلر مشینیں جن سے پیسے نکلوائے جاتے ہیں رامانوجن کے نظریہ پارٹیشن کے تحت کام کرتی ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب خالق: John O'Connor اور Edmund Robertson
  2. ^ ا ب ایس این اے سی آرک آئی ڈی: http://snaccooperative.org/ark:/99166/w66x1fd4 — بنام: Srinivasa Ramanujan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  3. ^ ا ب فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/cgi-bin/fg.cgi?page=gr&GRid=21850 — بنام: Srinivasa Ramanujan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  4. Srinivasa Ramanujan Birthday, Age, Family & Biography — اخذ شدہ بتاریخ: 24 فروری 2018 — شائع شدہ از: سوانح
  5. Srinivasa Ramanujan Biography — اخذ شدہ بتاریخ: 24 فروری 2018 — شائع شدہ از: Biography.com
  6. ^ ا ب The Mystery of Srinivasa Ramanujan's Illness — اخذ شدہ بتاریخ: 24 فروری 2018
  7. SRINIVASA RAMANUJAN Mathematician — اخذ شدہ بتاریخ: 24 فروری 2018