صابر رحمان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
صابر رحمان
Sabbir Rahman 2016 (cropped).jpg
ذاتی معلومات
مکمل ناممحمد صابر رحمان
پیدائش22 نومبر 1991ء (عمر 31 سال)
راجشاہی، بنگلہ دیش
عرفرمن[1]
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا لیگ بریک، گوگلی گیند باز
حیثیتآل راؤنڈر
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 81)20 اکتوبر 2016  بمقابلہ  انگلینڈ
آخری ٹیسٹ8 فروری 2018  بمقابلہ  سری لنکا
پہلا ایک روزہ (کیپ 113)21 نومبر 2014  بمقابلہ  زمبابوے
آخری ایک روزہ31 جولائی 2019  بمقابلہ  سری لنکا
ایک روزہ شرٹ نمبر.1
پہلا ٹی20 (کیپ 42)14 فروری 2014  بمقابلہ  سری لنکا
آخری ٹی2021 ستمبر 2019  بمقابلہ  افغانستان
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
2008– تاحالراجشاہی ڈویژن
2010باریسال ڈویژن
2012دورنتو راجشاہی
2013باریسل برنرز
2015باریسل بیلز
2016راجشاہی کنگز
2017کابل ایگلز
2017– تاحالسلہٹ سکسرز
2018پشاور زلمی
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ ٹوئنٹی20آئی
میچ 11 66 43
رنز بنائے 481 1,333 945
بیٹنگ اوسط 26.05 27.63 27.64
سنچریاں/ففٹیاں 0/4 1/6 0/4
ٹاپ اسکور 66 102 80
گیندیں کرائیں 144 306 67
وکٹیں 0 3 6
بولنگ اوسط 115.00 11.66
اننگز میں 5 وکٹ 0 0
میچ میں 10 وکٹ 0 0
بہترین بولنگ 1/12 3/11
کیچ/سٹمپ 3/– 37/– 25/–
ماخذ: ESPNcricinfo، 21 ستمبر 2019ء

محمد صابر رحمان (بنگالی: মোহাম্মদ সাব্বির রহমান)‏ (پیدائش: 22 نومبر 1989ء) ایک بنگلہ دیشی کرکٹر ہے ان کا تعلق راجشاہی سے ہے اور قومی ٹیم کے علاوہ وہ راجشاہی ڈویژن اور بی پی ایل کے لیے بھی کھیلتے ہیں۔ وہ ایک آل راؤنڈر ہے: دائیں ہاتھ کا بلے باز اور لیگ بریک بولر ۔ [2] انہوں نے بنگلہ دیش کی انڈر 19 ٹیم کی کپتانی کی ۔ انہوں نے فروری 2014ء میں بنگلہ دیش کے لیے بین الاقوامی کریئر کا آغاز کیا [3]

ایک روزہ بین الاقوامی[ترمیم]

صابر نے 21 نومبر 2014ء کو زمبابوے کے خلاف بنگلہ دیش کے لیے اپنا ایک روزہ بین الاقوامی ڈیبیو کیا [4] 23 فروری 2019ء کو، نیوزی لینڈ کے خلاف، صابر نے اپنی پہلی ون ڈے سنچری بنائی جو بین الاقوامی کرکٹ میں ان کی پہلی سنچری بھی تھی۔ [5]

ایشیا کپ 2016ء[ترمیم]

صابر 2016ء کے ایشیا کپ میں بنگلہ دیش کے لیے سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑی تھے۔ صابر بیٹنگ کے ساتھ شاندار تھے کیونکہ انہوں نے 44.00 کی اوسط اور 123.94 کے اسٹرائیک ریٹ کے ساتھ 174 رنز بنائے، اور بنگلہ دیشی بیٹنگ یونٹ کا بڑا حصہ ادا کیا اور اسے 'پلیئر آف دی سیریز' منتخب کیا گیا۔ [6] انہوں نے سری لنکا کے خلاف میچ میں ففٹی اسکور کی، جہاں یہ پہلا موقع تھا جب بنگلہ دیش نے سری لنکا کو T20I میں شکست دی۔ [7]

ٹیسٹ کرکٹ[ترمیم]

20 اکتوبر 2016 ءکو، صابر نے انگلینڈ کے خلاف اپنا ٹیسٹ ڈیبیو کیا۔ انہوں نے صرف 11 ٹیسٹ میچ کھیلے۔

کرکٹ ورلڈ کپ 2019[ترمیم]

اپریل 2019ء میں، صابر کو 2019 ءکرکٹ ورلڈ کپ کے لیے بنگلہ دیش کے 15 رکنی اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [8] [9] صابر رحمان نے سری لنکا کے خلاف 2014 ءمیں اپنا ٹی ٹوئنٹی بنایا، صابر رحمٰن نے 44 ٹی ٹوئنٹی کھیلے

بی پی ایل[ترمیم]

انہوں نے ایک بار بنگلہ دیش پریمیئر لیگ ( بی پی ایل ) کی تاریخ (122) میں اب تک کے سب سے زیادہ انفرادی اسکور کا ریکارڈ اپنے پاس رکھا تھا، جب تک کہ بی پی ایل کے 2017ء ایڈیشن میں کرس گیل کے ہاتھوں اس ریکارڈ کو شکست نہ دی گئی۔اکتوبر 2018ء میں، اسے 2018-19ء بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کے ڈرافٹ کے بعد سلہٹ سکسرز ٹیم کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [10] نومبر 2019ء میں، وہ 2019–20ء بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں کمیلا واریئرز کے لیے کھیلنے کے لیے منتخب ہوئے۔ [11]

تنازعات[ترمیم]

صابر رحمان متعدد تادیبی معاملات میں ملوث رہے ہیں۔ 29 نومبر 2016ء کو، رحمان، الامین حسین کے ساتھ، بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کی طرف سے "سنگین آف فیلڈ ڈسپلنری خلاف ورزیوں" کے لیے بالترتیب ان کے BPL معاہدوں کا 30% اور 50% جرمانہ عائد کیا گیا۔ [12] 1 جنوری 2018ء کو، رحمن سے ان کا سینٹرل کنٹریکٹ چھین لیا گیا، 6 ماہ کے لیے بین الاقوامی کرکٹ کھیلنے سے روک دیا گیا، اور راجشاہی ڈویژن کی فرسٹ کلاس کے دوران 21 دسمبر 2017ء کو پیش آنے والے واقعے کے لیے کی طرف سے 20 لاکھ روپے (25,000 امریکی ڈالر) جرمانہ عائد کیا گیا۔ ڈھاکہ میٹروپولیس کے خلاف میچ۔ اس واقعے کے دوران، رحمان بصری اسکرین کے پیچھے چلا گیا اور ایک نوجوان لڑکے پر حملہ کیا جس نے میچ کے دوسرے دن اننگز کے وقفے کے دوران اس کی طرف شور مچایا تھا۔ رحمان سے میچ ریفری نے تیسرے دن پوچھ گچھ کی، اس موقع پر رحمان "جسمانی طور پر جارحانہ" ہو گئے۔ [13] [14] 28 جولائی کو، BCB نے ویسٹ انڈیز کے خلاف ون ڈے میں شکست کے بعد رحمان نے مبینہ طور پر فیس بک پر دو مداحوں کو دھمکیاں دینے کے بعد تحقیقات شروع کیں۔ واقعہ اس وقت شروع ہوا جب ایک مداح نے "شبیر رحمان رومن" کے اکاؤنٹ پر رحمان کی شکل کے حوالے سے طنزیہ تبصرہ کیا، جس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ یہ رحمان کا ذاتی فیس بک اکاؤنٹ ہے۔ اس کے بعد رحمان نے مبینہ طور پر بد زبانی اور جسمانی نقصان کی دھمکیوں پر مشتمل پیغامات بھیج کر جواب دیا۔ [15] ستمبر 2018ء میں، بی سی بی نے بین الاقوامی کرکٹ سے چھ ماہ کی معطلی کی سفارش کی۔ [16] 16 جون 2021ء کو شیخ جمال دھانمنڈی کلب نے لیجنڈز آف روپ گنج کے لیے کھیلنے والے رحمن کے خلاف شکایت درج کرائی کہ شیخ جمال دھانمنڈی کے لیے کھیلنے والے الیاس سنی پر نسلی طور پر بدسلوکی اور پتھر پھینکنے کا الزام ہے۔ [17] مبینہ واقعہ بنگلہ دیش کریرا شکھا پروٹستان (بی کے ایس پی) گراؤنڈ نمبر پر ڈھاکہ پریمیئر ڈویژن ٹی 20 لیگ کے دوران شیخ جمال دھانمنڈی اور اولڈ ڈی او ایچ ایس اسپورٹس کلب کے درمیان ٹی 20 میچ کے دوران پیش آیا۔ ڈھاکہ میں 3 رحمان، جنہوں نے دن کے آخر میں بی کے ایس پی 4 گراؤنڈ میں پارٹیکس اسپورٹنگ کلب کے خلاف میچ کھیلا، اس وقت فیلڈنگ کر رہے سنی پر گالی گلوچ کی اور پتھراؤ کیا، جبکہ رحمان باؤنڈری کے باہر کھڑا تھا۔ اس واقعے کی وجہ سے گیم چند منٹوں کے لیے رک گئی۔ سنی نے الزام لگایا ہے کہ یہ کوئی الگ تھلگ واقعہ نہیں ہے اور یہ پچھلے واقعے کا تسلسل ہے جہاں رحمان نے سنی کے ساتھ نسلی طور پر بدسلوکی کی تھی جب کہ دونوں ایک دوسرے کے خلاف کھیل رہے تھے۔ کرکٹ کمیٹی آف ڈھاکہ میٹروپولیس (سی سی ڈی ایم) اس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے۔ [18] تحقیقات کے بعد، رحمان، شیخ جمال دھانمنڈی کے منیجر سلطان محمود کے ساتھ، 50,000 روپے (590 امریکی ڈالر) جرمانہ عائد کیا گیا۔ [19]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Sabbir Rahman profile and biography, stats, records, averages, photos and videos". ای ایس پی این کرک انفو (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 21 جولا‎ئی 2021. 
  2. "Sabbir Rahman". ای ایس پی این کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 17 دسمبر 2010. 
  3. "Sabbir Rahman profile and biography, stats, records, averages, photos and videos". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 21 جولا‎ئی 2021. 
  4. "Zimbabwe tour of Bangladesh, 1st ODI: Bangladesh v Zimbabwe at Chittagong, Nov 21, 2014". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 21 نومبر 2014. 
  5. "Welcome back, Sabbir Rahman - make the bat talk now". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 28 اپریل 2021. 
  6. "Asia Cup T20 2016: Sabbir Rahman, Bangladesh's new hope with the bat". cricketcountry.com. 5 March 2016. اخذ شدہ بتاریخ 07 مارچ 2016. 
  7. "Sabbir, bowlers earn Bangladesh first T20 win against Sri Lanka". bdnews24.com. اخذ شدہ بتاریخ 07 مارچ 2016. 
  8. "Bangladesh pick ODI newbie Abu Jayed for World Cup". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 28 اپریل 2021. 
  9. "Bangladesh pick uncapped Abu Jayed for World Cup". www.icc-cricket.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 28 اپریل 2021. 
  10. "Full players list of the teams following Players Draft of BPL T20 2018-19". Bangladesh Cricket Board. 28 مارچ 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018. 
  11. "BPL draft: Tamim Iqbal to team up with coach Mohammad Salahuddin for Dhaka". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 18 نومبر 2019. 
  12. "Sabbir, Al-Amin fined for "serious off-field disciplinary breach"". ESPNCricinfo. 29 November 2016. اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2018. 
  13. Isam، Mohammad (28 December 2017). "Sabbir Rahman being investigated for allegedly assaulting fan". ESPNCricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2018. 
  14. Isam، Mohammad (1 January 2018). "Sabbir Rahman loses BCB central contract, fined and suspended". ESPNCricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2018. 
  15. "Social-media fracas brings Sabbir Rahman under BCB scanner". ESPNCricinfo. 28 July 2018. اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2018. 
  16. Isam، Mohammad. "Sabbir Rahman faces six-month ban from international cricket". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 01 ستمبر 2018. 
  17. "Sabbir Rahman allegedly throws stone, racially abuses Elias Sunny during DPL match". The Indian Express (بزبان انگریزی). 2021-06-17. اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2021. 
  18. "DPL 2021: Complaint filed against Sabbir Rahman for alleged racial abuse and stone throwing". ESPN. 
  19. Isam، Mohammad (17 June 2021). "BCB fines Sabbir Rahman and Sheikh Jamal Dhanmondi Club manager BDT 50,000 each for DPL incident". ESPNCricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 17 جون 2021.