ادارہ فروغ قومی زبان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(مقتدرہ قومی زبان سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search
ادارہ فروغ قومی زبان
National Language Promotion Department
Muqtadra.jpg
ادارہ فروغ قومی زبان
مخففNLPD
قیاماکتوبر 4، 1979؛ 41 سال قبل (1979-10-04)
بانیڈاکٹر اشیاق حسین قریشی
قسمعلمی و ادبی ادارہ
قانونی حیثیتفعال
نصب العیناردو کابطور قومی زبان فروغ، ترویج اور اشاعت
صدر دفاترایوان ِ اُردو، ادارہ فروغِ قومی زبان، پطرس بخاری روڈ، سیکٹر ایچ ایٹ/فور، اسلام آباد
مقام
خطہserved
پاکستان
باضابطہ زبان
اردو
ڈائریکٹر جنرل
ڈاکٹر رؤف پاریکھ
اشاعتکتابیں، لغات، فرہنگ، آن لائن لغات،
منبع تنظیمیں
قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن، حکومت پاکستان
ویب سائٹhttp://www.nlpd.gov.pk

ادارہ فروغ قومی زبان (مقتدرہ قومی زبان)، حکومت پاکستان کی قومی ورثہ و ثقافت ڈویژن، وفاقی وزارت تعلیم، پیشہ ورانہ تربیت، قومی ورثہ اور ثقافت کے ماتحت ادارہ ہے جس کا نصب العین ملک میں اردو زبان کی ترویج ہے۔ اس ادارہ کا قیام 4 اکتوبر 1979ء کو آئین پاکستان 1973ء کے آرٹیکل 251 کے تحت عمل میں آیا تاکہ قومی زبان 'اردو' کے بحیثیث سرکاری زبان نفاذ کے سلسلے میں مشکلات کو دور کرے اور اس کے استعمال کو عمل میں لانے کے لیے حکومت کو سفارشات پیش کرے، نیز مختلف علمی، تحقیقی اور تعلیمی اداروں کے مابین اشتراک و تعاون کو فروغ دے کر اردو کے نفاذ کو ممکن بنائے۔ ادارے نے اپنے مقاصد کی بجاآوری کے لیے اب تک سات سو کے قریب عنوانات کے کتابیں شائع کی ہیں جس میں ایک سو زائد لغات، فراہنگ اور کشاف شامل ہیں۔ قومی انگریزی اردو لغت، قانونی انگریزی اردو لغت، فرہنگ تلفظ، اردو چینی لغت وغیرہ قابل ذکر مذکورہ لغات کے علاوہ چار درجن سے زائد کتابیں ادارے کی ویب سائٹ پر آن لائن موجود ہیں۔ 16 دسمبر 2020ء کو ڈاکٹر رؤف پاریکھ اس ادارے کے ڈاسئریکٹر جنرل مقرر ہوئے۔

اغراض و مقاصد[ترمیم]

ادارہ کے ویب سائٹ کے مطابق اس کے اغراض و مقاصد یہ ہیں :

  1. پاکستان کی قومی زبان کی حیثیت سے اردو کو فروغ دینے کے ذرائع و وسائل پر غور کرنا؛ نفاذ کے سلسلے میں تمام ضروری انتظامات کرنا اور سرکاری سطح پر قومی زبان کے جلد از جلد نفاذ کے لیے حکومت کو سفارشات پیش کرنا۔
  2. سرکاری/ نیم سرکاری دفاتر، عدلیہ اور دوسرے شعبوں میں کام کرنے والے ملازمین کی دوران ملازمت تربیت کی غرض سے لغات اور دوسرے پیشہ وارانہ مطالعاتی مواد کی ترتیب و تدوین کے لیے انتظامات کر کے اردو کو پورے ملک میں دفتری زبان کی حیثیث سے رائج کرنے کے عمل کو سہل بنانا۔
  3. اردو کی ترقی کے تمام اداروں کے مابین ارتباط قائم کرنا۔
  4. سرکاری ملازمتوں کے وفاقی اور صوبائی کمیشنوں کے تعاون سے اردو کو مقابلے کے امتحانات کی زبان کے طور پر اختیار کرنے میں آسانیاں پیدا کرنا۔
  5. دیگر ایسی ذمہ داریوں سے عہدہ برآ ہونا جو قومی زبان سے متعلق وفاقی حکومت ادارےکے سپرد کریں۔

انتظامی ڈھانچہ[ترمیم]

ادارہ ایک ملحقہ محکمہ ہے جو قومی ورثہ و ثقافت ڈویژن، وزارت وفاقی تعلیم ، پیشہ ورانہ تربیت، قومی ورثہ و ثقافت کے قومی ورثہ و ثقافت ڈویژن کے تحت کام کرتا ہے۔

مطبوعات ادارہ فروغ قومی زبان (مقتدرہ قومی زبان)[ترمیم]

ادارے نے مختلف موضوعات پر 700سے زائد کتب شائع کی ہیں۔ جس میں ایک سو کے قریب مختلف لغات و فرہنگ شامل ہیں۔ مذکورہ لغات میں قومی انگریزی اُردو لغت، قانونی انگریزی اُردو لغت اور فرہنگ تلفظ قابل ذکر ہیں۔ یہ لغات ادارے کی ویب سائٹ پر آن لائن استفادہ کے لیے بھی دستیاب ہیں۔

ادارہ فروغ قومی زبان کا کتب خانہ[ترمیم]

ادارے کا کتب خانہ 52000سے زائد ذخیرہ کتب پر مشتمل ہے۔ اس میں ادارے کے مقاصد کے حوالے سے جدید تر موضوعات پر کتابیں اور کتب نادرہ کے علاوہ 18000سے زائد رسائل و جرائد کا وسیع ذخیرہ بھی موجود ہے۔ اس کتب خانے کا ایک بڑا حصہ حوالہ جاتی کتابوں اور مواد پر مشتمل ہے جس میں تقریباً ہر اہم مضمون کی انسائیکلوپیڈیا، لغات اور ببلو گرافی موجود ہیں۔ کتب خانے میں مختلف موضوعات کی لغات و اصطلاحات کا وسیع ذخیرہ موجوہ ہے۔ سمعی و بصری مواد کا کچھ حصہ بھی موجود ہے۔ مطبوعات جامعہ عثمانیہ حیدر آباد دکن کا بھی بڑا حصہ نہایت محنت اور کوشش سے حاصل کیا گیا ہے۔ بہت سی پرانی اور نایاب کتب کے حوالہ سے اس کتب خانے میں ایک الگ شعبہ "کتب نادرہ" کے نام سے قائم کیا گیا ہے جس میں سترہویں اٹھارویں اور انیسویس صدی کی بعض نایاب کتب و لغات شامل ہیں۔ اس کتب خانہ میں کتابوں کے علاوہ ایک بڑی تعداد نئے اور پرانے رسائل کی بھی ہے۔ اس کے علاوہ ادارے کے کتب خانے میں گوشہ افتخار عارف، بشیر سیفی، اعجاز راہی اور شان الحق حقی بھی قائم ہیں۔ یہ گوشے صاحب گوشہ یا ان کے ورثہ کی طرف سے عطیہ کردہ کتابوں کے سبب قائم کیے گئے ہیں۔

اخبار اردو کی اشاعت[ترمیم]

یہ ادارہ 1981 ءسے ایک جریدہ اخبار اردو کے نام سے شائع کرتا ہے جس کا مقصد قومی زبان کے مسائل، لسانی مباحث اور دیگر تحقیقی موضوعات پر تحریریں شائع کرنا ہے۔ جون 2011ءسے اخبار اردو کے تمام شمارے ادارے کی ویب سائٹ آن لائن بھی موجود ہیں۔

سہولیات[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]