مکھی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اضغط هنا للاطلاع على كيفية قراءة التصنيف
Bee
العصر: Early Cretaceous – Recent, 100–0 ملین سال
The sugarbag bee, Tetragonula carbonaria
The sugarbag bee, Tetragonula carbonaria

التصنيف العلمي  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں parent taxon (P171) ویکی ڈیٹا پر
superdomain  حیویات
عالم اعلی  حقیقی المرکزیہ
مملکت  جانور
عويلم  Bilateria
ذیلی عالم  protostome
شعبة عليا  Ecdysozoa
شعبة  مفصلی پایہ
شعيبة  Hexapoda
جماعت  حشرات
طويئفة  پردار حشرات
صُنيف فرعي  Neoptera
رتبة عليا  Endopterygota
رتبة  غشائی پردار حشرات
رتيبة  Apocrita
تحت رتبة  Aculeata
فصيلة عليا  Apoidea
سائنسی نام
Anthophila[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی نام (P225) ویکی ڈیٹا پر
Families
مرادفات
Apiformes

taxondisplay_parents

مکھی

مکھی ایک اُڑنے والا کیڑا ہے جو بھڑ اور چیونٹی سے قریبی تعلق رکھتا ہے۔

  1. مکھی کے ایک #پر میں #بیماری، #دوسرے میں #شفا :

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ” اگر تم میں سے کسی کے مشروب ( پانی، دودھ وغیرہ ) میں مکھی گر پڑے تو اسے چاہیے کہ اس کو مشروب میں ڈبکی دے، پھر اسے نکال پھینکے، کیوں کہ اس کے ایک پر میں بیماری ہے تو دوسرے میں شفا۔ “ ( صحیح البخاری، بدءالخلق، باب اذا وقع الذباب۔... حدیث : 3320 )

  1. ڈاکٹر محمد محسن خاں اس ضمن میں لکھتے ہیں : ” طبی طور پر اب یہ معروف بات ہے کہ مکھی اپنے جسم کے ساتھ کچھ #جراثیم اٹھائے پھرتی ہے ،

جیسا کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے 1400 سال پہلے بیان فرمایا جب انسان جدید طب کے متعلق بہت کم جانتے تھے۔ اسی طرح اللہ تعالیٰ نے کچھ عضوے ( Organisms ) اور دیگر ذرائع پیدا کیے جو ان جراثیم ( Pathogenes ) کو ہلاک کر دیتے ہیں، مثلاً پنسلین پھپھوندی اور سٹیفائلو کوسائی جیسے جراثیم کو مار ڈالتی ہے ۔

حالیہ تجربات سے ظاہر ہوتا ہے کہ ایک مکھی بیماری ( جراثیم ) کے ساتھ ساتھ ان جراثیم کا تریاق بھی اٹھائے پھرتی ہے۔ عام طور پر جب مکھی کسی مائع غذا کو چھوتی ہے تو وہ اسے اپنے جراثیم سے آلودہ کر دیتی ہے لہٰذا اسے مائع میں ڈبکی دینی چاہیے تا کہ وہ ان جراثیم کا تریاق بھی اس میں شامل کر دے جو جراثیم کامداوا کرے گا ۔

میں نے اپنے ایک دوست کے ذریعے اس موضوع پر #جامعۃالازہرقاہرہ ( #مصر ) کے عمید قسم الحدیث ( شعبہ حدیث کے سربراہ ) محمد السمحی کو خط بھی لکھا جنہوں نے اس حدیث اور اس کے طبی پہلوؤں پر ایک مضمون تحریر کیا ہے ۔

اس میں انہوں نے بیان کیا ہے کہ ماہرین خرد حیاتیات ( Microbiologists ) نے ثابت کیا ہے کہ مکھی کے پیٹ میں خامراتی خلیات ( Yeast Cells ) طفیلیوں ( Parasites ) کے طور پر رہتے ہیں اور یہ خامراتی خلیات اپنی تعداد بڑھانے کے لیے مکھی کی تنفس کی نالیوں ( Repiratory Tubules ) میں گھسے ہوتے ہیں اور جب مکھی مائع میں ڈبوئی جائے تو وہ خلیات نکل کر مائع میں شامل ہو جاتے ہیں اور ان خلیات کا مواد ان جراثیم کا تریاق ہوتا ہے جنہیں مکھی اٹھائے پھرتی ہے ۔ ( مختصر #صحیح #البخاری ) ( انگریزی ) مترجم ڈاکٹر محمد حسن خاں، ص : 656 حاشیہ : 3 Peer Sayed Abdul Hakeem Baba Ge

==مزید دیکھیے==* شہد مکھی

  1.   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں دائرۃ المعارف حیات آئی ڈی (P830) ویکی ڈیٹا پر"معرف Anthophila دائراۃ المعارف لائف سے ماخوذ"۔ eol.org۔ اخذ کردہ بتاریخ 21 جون 2018۔