پائیتھن (پروگرامنگ زبان)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پائیتھن (پروگرامنگ زبان)
Python logo and wordmark.svg
پیراڈائم اوبجیکٹ اوریئنٹڈ پروگرامنگ، imperative، functional، procedural، reflective
اشاعت 1990؛ 29 برس قبل (1990)
ڈیزائنر Guido van Rossum
ترقی دہندہ پائیتھن سافٹ ویئر فاؤنڈیشن
مستحکم اشاعت 3.7.0 / 27 جون 2018؛ 14 مہینہ قبل (2018-06-27)
2.7.15 / 1 مئی 2018؛ 16 مہینہ قبل (2018-05-01)
شعبہ تحریر

Duck، dynamic، strong since version 3.5:

Gradual
اہم اطلاقات CPython، IronPython، Jython، MicroPython، Numba، PyPy، Stackless Python
بولیاں Cython، RPython
متاثر ABC، ALGOL 68، سی، سی++، CLU، Dylan، Haskell، Icon، Java، Lisp، Modula-3، پرل
موثر Boo، Cobra، CoffeeScript، D، F#، Falcon، Genie،[1] گو (پروگرامنگ زبان)، Apache Groovy، جاوا اسکرپٹ،[2][3] Julia، روبی (پروگرامنگ زبان)،
اجازت نامہ Python Software Foundation License
فائل کی توسیع .py, .pyc, .pyd, .pyo (prior to 3.5),[4] .pyw, .pyz (since 3.5)[5]
ویب سائٹ www.python.org
Wikibooks logo Python Programming بر ویکی کتب

پائیتھن وسیع پیمانے پر استعمال کی جانے والی ایک اعلیٰ سطحی، عام مقصد (general-purpose)، تشریح شدہ (interpreted) اور متحرک (dynamic) پروگرامنگ زبان ہے۔[6][7] اس کے ڈیزائن کا فلسفہ کوڈ کو  پڑھنے کی اہلیت پر  زرو دیتا ہے اور اس کی نحو پروگرامرز کو  اجازت دیتی ہے کہ وہ ++C یا جاوا کے مقابلے میں اپنے تصورات کا اظہار کوڈ کی کم سطروں میں کرسکتے ہیں۔[8][9] یہ زبان چھوٹے اور بڑے پیمانے پر پروگرام تشکیل دینے کی سہولت فراہم کرتی ہے۔[10]

پائیتھن زبان پروگرامنگ کے متعدد نمونوں  کی حمایت کرتی ہے جس میں متعین مقصد (object-oriented)، ضروری (imperative) اور فعال پروگرامنگ (functional programming) یا باضابطہ (procedural) انداز  شامل ہیں۔ اس میں ایک متحرک قسم کے نظام اور خود کار طریقے سے  یاداشتوں کو منظم کرنے کی خصوصیات ہیں اور ایک بڑی اور جامع معیاری لائبریری بھی موجود ہے۔ [11]

پائیتھن کے ترجمان (interpreters) بہت سے  آپریٹنگ سسٹم کے لیے دستیاب ہیں جو پائیتھن کوڈ کو وسیع اقسام کے سسٹمز پر چلانے کی اجازت دیتا ہے۔

تاریخ[ترمیم]

 Guido van Rossum  پائیتھن کا خالق

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "{{نقل:PAGENAME}}"۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 دسمبر 2015۔
  2. "Perl and Python influences in JavaScript"۔ www.2ality.com۔ 24 فروری 2013۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2015۔
  3. Axel Rauschmayer۔ "Chapter 3: The Nature of JavaScript; Influences"۔ O'Reilly, Speaking JavaScript۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2015۔
  4. File extension .pyo was removed in Python 3.5. See PEP 0488
  5. Moore Holth (30 مارچ 2014)۔ "PEP 0441 -- Improving Python ZIP Application Support"۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 12 نومبر 2015۔
  6. TIOBE Software Index (2015)۔
  7. "The RedMonk Programming Language Rankings: جون 2015 – tecosystems"۔ Redmonk.com۔ 1 جولائی 2015۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 ستمبر 2015۔
  8. Mark Summerfield۔ Rapid GUI Programming with Python and Qt۔ Python is a very expressive language, which means that we can usually write far fewer lines of Python code than would be required for an equivalent application written in, say, C++ or Java
  9. Steve McConnell (30 نومبر 2009)۔ Code Complete, p. 100۔ آئی ایس بی این 978-0-7356-3697-2۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  10. Kuhlman, Dave.
  11. "About Python"۔