بخت خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
جنگ آزادی ہند 1857ء
Indian Rebellion of 1857.jpg
1912 کا ایک نقشہِ ہندوستان جو جنگ آزادی کو بیاں کرتا ہے۔اس خطے میں دلی ،جھانسی،میرٹھ، گوالیار مشارکین ظاہر ہے.
تاریخ 10 مئی 1857ء–1859ء
مقام ہندوستان (cf. 1857)[1]
نتیجہ ہندوستانی افواج کو کچلا گیا،

ایسٹ انڈیا کمپنی کے سارے طاقتیں براہ راست برطانوی تاج کے سپرد کیا گیا (برطانوی سلطنت میں شامل کیا گیا)،مغل سلطنت کا خاتمہ ہوگیا۔

علاقائی
تبدیلیاں
برطانوی راج نے کچھ علاقوں کو ان کے اپنے باشندوں کو سونپا جبکہ زیادہ تر علاقوں کو برطانوی تاج میں شامل کردیا۔
متحارب گروہ
Flag of the Mughal Empire.svg سلطنت مغلیہ
Flag of the British East India Company (1801).svg ایسٹ انڈیا کمپنی کے سپاہی جو انگریزوں کے خلاف تھے
سات ہندوستانی نوابی ریاستیں
Flag of برطانیہ برطانوی فوج
Flag of the British East India Company (1801).svg ایسٹ انڈیا کمپنی وفادار سپاہی
Native irregulars
East India Company British regulars

Flag of برطانیہ British and European civilian volunteers raised in the Bengal Presidency
21 نوابی ریاستیں


Pre 1962 Flag of Nepal.png نیپال کی بادشاہت

سالار ورہنما
Flag of سلطنت مغلیہ بہادر شاہ ظفر
Flag of the Maratha Empire.svg نانا صاحب پیشوا
Flag of the British East India Company (1801).svg بخت خان
Flag of the Maratha Empire.svg جھانسی کی رانی
Flag of the Maratha Empire.svg تانتیا توپی
अवध ध्वज.gif بیگم حضرت محل
House_of_Tulsipur#44th_Ruler_-_راجہ درگ نارائن سنگھ، اشوری کماری دیوی, تلسی پور کی رانی
کمانڈر ان چیف، انڈیا:
Flag of برطانیہ جارج انسن (to May 1857)
Flag of برطانیہ Sir پیٹرک گرانٹ
Flag of برطانیہ سر کولن کیمبل ( اگست1857)
Pre 1962 Flag of Nepal.png جنگ بہادر[2]

بخت خان روہیلہ 1857ء کی جنگ آزادی کے ایک اہم کردار ہیں۔ مغلیہ خاندان کے شہنشاہ بہادر شاہ ظفر کے زمانے میں انگریزی فوج میں‌ صوبیدار تھے۔ انگریزوں کے خلاف جنگ آزادی میں اپنے فوجی دستے سمیت شرکت کی اور کارہائے نمایاں انجام دیے۔ جنگ آزادی کی ناکامی کے بعد روپوش ہوگئے۔

نام و نسب[ترمیم]

ابتدائی حالات[ترمیم]

بخت خان، 1793 بریلی میں پیدا ہوئے۔

جنگ آزادی اور بخت خان[ترمیم]

انگریز مخالف باغی فوج کے سپہ سالار (١٨٥٨ تا ١٨٥٩)۔1856 میں برطانوی حکومت نے فوج سے معزول کر دیا گیا تھا ۔ بخت خان نے برطانوی وسطی بھارت کمپنی کی فوج میں ایک پیادہ دستے کمانڈر کے طور پر خدمات انجام دیں. بخت خان نے بہادر شاہ ظفر کو فرنگیوں کے خلاف باغی فوج بنانے اور اسے منظم کرنے کا مشورہ دیا جسکو بہادر شاہ ظفر نے مسترد کردیا۔ مگر انگریزوں کے خلاف بخت خان نے علم بغاوت پلند کیا۔. تاریخ دان کہتے ہیں کہ ستمبر ١٨٥٩ میں برطانوی فوج نے بخت خان کو دلی سے باہر رکنے پر مجبور کر دیا تھا کچھ لوگوں کا کہنا تھا کہ وہ کچھ دن نیپال کی پہاریوں میں روپوش ھوگئے تھے۔

بخت خان اور جنگ دہلی[ترمیم]

پہلا دور، عروج[ترمیم]

دوسرا دور، زوال[ترمیم]

تیسرا دور، شکست[ترمیم]

بخت خان کی دیگر جنگیں[ترمیم]

آخری عمر کے حالات[ترمیم]

13 مئی 1859 میں زخمی ہوکر ترائی کے جنگلات میںشہید ہوئے۔ جسم "سر"کے قبرستان میں دفن کیا گیا ۔ جو اب پاکستان میں ہے جس کو اب “ جوزینہ“ کہا جاتا ہے۔

ناکامی کے اسباب[ترمیم]

تنقید و الزامات[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ File:Indian revolt of 1857 states map.svg
  2. ^ The Gurkhas by W. Brook Northey, John Morris. ISBN 81-206-1577-8. Page 58