شدھ بہار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
راگ موسیقی
Dhrupad.jpg
فہرست ٹھاٹھ
کلیان ٹھاٹھ
ایمن کلیانبھوپالی
بھیرویں ٹھاٹھ
بھیرویںگن کلیللت
ٹوڈی ٹھاٹھ
میاں کی ٹوڈیملتانی
کھلچ ٹھاٹھ
راگیشریتلنگتلک کا مودجھنجھوٹی
بھیرویں ٹھاٹھ
بھیرویںمالکونس
ماروا ٹھاٹھ
مارواپوریا
آساوری ٹھاٹھ
آساوریدرباری
بلاول ٹھاٹھ
کیداراپہاڑیبہاگ
پوربی ٹھاٹھ
پوریا دھناسریبسنت
کافی ٹھاٹھ
شدھ بہارپیلوبھیم پلاس

یہ کافی ٹھاٹھ کا وکر کھاڈو راگ ہے یعنی اس راگ میں آروہی امروہی کو چھ سروں پر مشتمل روپ میں پیش کیا گیا ہے۔

تاریخ[ترمیم]

راگ شدھ بہار حضرت امیر خسرو کی ایجاد ہے۔ روایت ہے کہ زمانہ سلف میں بڑے بڑے گائک جن میں میاں تان سین، بیجوباورا اور سوامی ہری داس شامل ہیں، اس کو گایا کرتے تو موسم چزاں دیکھتے ہی دیکھتے موسم بہار میں تبدیل ہو جاتا اور واقعہ یہ ہے کہ راگ بہار کے سروں کے امتزاج اور تکرار سے بھی موسم بہتر کی رنگینی اور اور دلکشی نمایاں ہوتی ہے۔

تاثر[ترمیم]

اس راگ کو موسم بہار کا راگ کہتے ہیں۔ اس راگ میں بندش کیے ہوئے خیال اور ااستھائیاں اور دھرپد وغیرہ بھی موسم بہار کا روح ہرور اور نظر نواز منظر پیش کرتے ہیں۔ اس راگ کو مختلف راگوں سے ملا کر گئی ایک بہاریہ انگ کے راگ بنائے گئے ہیں، جن میں بھیروں بہار، ہنڈول بہار، بسنت بہار، جوگ بہار وغیرہ مشہور ہیں۔

آروہی آمروہی[ترمیم]

اس راگ کی آروہی امروہی درج ذیل ہیں:

آروہی: سا - ما - پا - گا - ما - نی - دھا - نی - سا
امروہی: سا نی پا ما پا گا ما رے سا

حوالہ جات[ترمیم]

کنور خالد محمود، عنایت الہی ٹک، سرسنگیت۔ الجدید، لاہور؛ المنار مارکیٹ، چوک انارکلی۔ 1969ء صفہ ۔200