صائمہ سلیم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

صائمہ سلیم پاکستان کی پہلی نابینا سفارتکار ہیں ۔

مختصر تعارف[ترمیم]

صائمہ سلیم 1987 میں پیدا ہوئیں۔ اور انگریزی ادب میں ایم اے، ایم فل کی ڈگری پانے کے بعد وہ پاکستان کی پہلی سی ایس ایس نابینا لڑکی قرار پائیں انہوں نے سی ایس ایس کے امتحان میں چھٹی پوزیشن حاصل کی تھی۔2008 میں انہیں وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف نے معذور افراد کے عالمی دن کے موقع پر منعقدہ ایک تقریب میں اپنا معاون خصوصی مقرر کرنے کا حکم جاری کر دیا۔[1] لیکن اصائمہ سلیم نے یہ پیشکش شکریے کے ساتھ رد کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ وزارت خارجہ میں جا کر پاکستان کا نام دنیا بھر میں روشن کرنا چاہتی ہے۔ اور پھر جلد ہی 2009 میں وہ 32 سال کی عمر میں وزرات خارجہ میں خدمات سر انجام دینے لگیں ۔[2] صائمہ ملک کی پہلی نابینا سفارتکار ہیں جو2013ء سے جنیوا میں اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مشن میں کام کر رہی ہیں۔[3] وہ انسانی حقوق سے متعلق سیکنڈ سیکرٹری کے عہدہ پر فائز ہیں۔ اور معذوری ان کے سرکاری فرائض کی ادائیگی میں کبھی حائل نہیں ہوئی۔

حوالہ جات[ترمیم]