غلام حیدر وائیں

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
غلام حیدر وائیں
تفصیل=

وزیر اعلیٰ پنجاب
مدت منصب
8 نومبر 1990 – 25 اپریل 1993
صدر غلام اسحاق خان
وزیر اعظم نواز شریف
ووٹ اسلامی جمہوری اتحاد
رکن صوبائی اسمبلی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1950  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
امرتسر  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 29 ستمبر 1993 (42–43 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مياں چنوں  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش مياں چنوں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
جماعت اسلامی جمہوری اتحاد  ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان اردو  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان اردو  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

غلام حیدر وائیں پنجاب کے سابق وزیراعلیٰ ہیں جو نوازشریف کے دوسرے دور میں 1990–1993 تک پنجاب کے وزیر اعلیٰ ہیں۔ 1988ء میں ممبرقومی اسمبلی بن کر قائدحزب اختلاف بنے۔1990ء میں نگران وزیراعلیٰ پنجاب بنایاگیااور1990ء کے الیکشن میں ہی فتح حاصل کرنے کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب بن گئے ۔آپ میاں چنوں کے مشہور جاگیر دار مہر صلابت سنپال کے دست راست تھے جن کی آبائی نشست پر آپ پنجاب کے صوبائی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔ ایک علاقائی تنازعے پر جس میں پنجاب کی ملوکا ذات سے تعلق رکھنے والے دو با اثر افراد پولیس مقابلے میں مارے گئے تو آپ کو میاں چنوں میں 29 ستمبر 1993 کوفائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا۔ غلام حیدروائیں کے قابل رشک رتبے اورمقام کو وڈیرے اورجاگیردار برداشت نہ کرسکے ۔ بالآخر 1993ء کی ایک انتخابی مہم کے دوران 29ستمبر کے دن وڈیروں نے کرائے کے قاتلوں کے ذریعے اس عظیم فرشتہ صفت درویش کوشہیدکروا دیاجس نے وزیراعلیٰ بن کر بھی زندگی کرائے کے گھرمیں بسرکردی اوراپنے لئے ایک گھربھی نہ بنایا۔