ڈارون

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
چارلس ڈارون

چارلس ڈارون (1809-1882) ایک انگریز ماہر حیاتیات تھا۔ اسنے نے نظریہ ارتقا پیش کیا اور دنیا کی سوچ میں بہت بڑی تبدیلی لیکر آیا۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ڈارون 12 فروری 1809 کو شریوزبری انگلستان میں پیدا ہوا۔ 16 سال کی عمر میں اسنے ایڈنبرا یونیورسٹی میں طب کے شعبے میں داخلا لیا لیکن اسے یہ کچھ زیادہ پسند نہیں آیا وہ پھر کیمبرج میں دینیات کی تعلیم حاصل کرنے گیا۔ اسے پڑھائی کے بجاۓ گھڑ سواری اور بندوق چلانا زیادہ اچھا لگا اس کے باوجود اس کی دلچسپیوں کو دیکھتے ہوۓ اسے مطالعاتی بحری جہاز بیگل کے مہم جویانا سفر کے لیۓ منتحب کر لیا جاتاہے۔ ڈارون 1831 میں 22سال کی عمر میں بیگل پر دنیا کے گرد سفر پر روانہ ہوا اس لمبے سفر کے دوران ڈارون بہت قدیم قبیلوں سے ملا بہت سارے فوسل دریافت کیۓاور بہت زیادہ تعداد میں پودوں اور جانوروں کا مشاہدہ کیا ان مشاہدات کو اس نے بڑی تفصیل سے قلم بند کیا۔

ان مشاہدات کی بنیاد پر اسنے بے شمار کتابیں لکھیں جن میں سب سے مشہور اصل الانواع (Origin Of Species) ہے۔ڈارون کے نظریہ ارتقاء پر تاحال تحقیق جاری ہے لیکن اسے ابھی تک ثابت نہیں کیا جا سکا

اقتباسات[ترمیم]

" میں نے ارتقائی تبدیلیوں کے متعلق لکھا ہے کہ وہ یوں ہی اتفاقیہ وجود میں آ گئیں ۔یہ الفاظ مغالطہ پیدا کرنے والے ہیں ۔ ان سے مفہوم صرف اس قدر ہے کہ ہم ان تبدیلیوں کے اسباب و علل معلوم کرنے سے قاصر ہیں ۔ "ORIGIN OF SPECIES" دوسری جگہ لکھتا ہے ۔

"اس تصور میں کتنی بڑی عظمت پوشیدہ ہے کہ خالق کائنات نے زندگی کے اندر اس قدر گوناگوں توانائیاں مضمر رکھ دیں ۔ خواہ یہ زندگی ابتداءً کسی ایک پیکر میں پھونکی گئی تھی یا زیادہ پیکروں میں ، اور اس کے بعد اس طویل المعیاد عرصہ میں جب کہ یہ کرہ قوانین ثقل و کشش کے مطابق مصروف گردش رہا ہے ۔ زندگی اس قدر متنوع پیکروں میں بایں حسن و رعنائی جلوہ بار ہوتی رہی ہے اور ہوتی رہے گی ۔

" LAST CHAPTER ,ORIGIN OF SPECIES"