ڈین براؤن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
ڈین براؤن

ڈین براؤن ( پیدائش: 22 جون، 1964ء ) ایک امریکی مصنف ہیں ، جو جاسوسی، سنسنی خیز فکشن ناول نگار ہیں، اور سال 2003ء میں لکھے گئے بیسٹ سیلر ناول ڈاونچی کوڈ سے پہچانے جاتے ہیں۔ ڈان براؤن کے ناول زیادہ تر کھوج پر مشتمل ہوتے ہیں ، جس میں خفیہ علامات نگاری ، چابیاں، پہیلیاں، علامات، کوڈ اور سازشی نظریات کی آمیزش ہوتی ہے۔ ان کی کتابیں 52 زبانوں میں ترجمہ ہوچکی ہیں اور 2012ء تک 2 کروڑ کاپیاں فروخت ہوچکی ہیں ۔ ان میں سے دو ناول ، ڈاونچی کوڈ اور اینجلز اینڈ ڈیمنز پر ہالی وڈ میں فلم بنائی جاچکی ہے۔ اس وقت ڈان براؤن محض چھ ناول لکھنے کے باوجود بیسٹ سیلر مصنفین کی لسٹ میں بارہویں نمبر پر ہیں۔ وکی پیڈیا کے 2008 کے اعداد و شمار کے مطابق دنیا کے 20 بااثر ترین افراد میں بیسویں نمبر پر شہرہ آفاق امریکی ناول نگار ڈین براؤن ہیں۔[1]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ڈین براؤن، ایکسیٹر نیو ہیمپشائر ، امریکہ میں پیدا ہوئے، جہاں ان کے والد رچرڈ جی براؤن ، فلپس ایکسیٹر اکیڈمی میں الجبرا کے استاد اور والدہ ،مقامی چرچ میں موسیقار کی خدمت انجام دیتی تھیں، یوں ڈان براؤن کو وراثت میں ہی مذہب اور سائنس سے لگاؤ ملا۔ بچپن سے ہی ڈان براؤن پہیلیاں ، کوڈ اور پزلز گیم اس کے علاوہ ریاضی، موسیقی اور زبانوں کے علم سے دلچسپی رہی ہے۔ فلپس ایکسیٹر سے گریجویشن کرنے کے بعد، براؤن ایمہرسٹ کالج سے گریجویشن کیا۔ اور پھر بطور گیتکار اور پاپ گلوکارہ اپنے کیرئیر کی ابتداء کی۔ شادی کے بعد ڈان براؤن نیو ہمپشائر منتقل ہوگئے اور فی الحال وہاں کے فلپس ایکسیٹر اکیڈمی میں انگریزی کے معلم ہیں۔


شخصیت و افکار[ترمیم]

ڈین براؤن خود کو ایک محتاط اور ہجوم سے گریزاں شخص قرار دیتے ہیں۔ وہ کہتے ہیں کہ اُن کی کتابوں کا اولین مقصد قاری کو تفریح فراہم کرنا ہوتا ہے، لیکن اُن کی کوشش یہ ہوتی ہے کہ وہ اپنے ناولوں کے لیے کسی اہم موضوع کا انتخاب کریں۔ ڈین براؤن کے مطابق ’’جب لوگ ناولوں میں بیان کیے گئے مقامات اور فنی شاہکاروں میں دلچسپی لیتے ہیں ،تو اُنھیں اور بھی زیادہ خوشی ملتی ہے‘‘۔ امریکی ادیب ڈین براؤن کا کہنا ہے ’’اُن کی کتابوں کو ملنے والی بے پناہ کامیابی سے اُن کی زندگی میں کوئی زیادہ تبدیلی نہیں آئی ہے، ہاں اتنا ضرور ہوا ہے کہ اُنھوں نے اپنی اہلیہ کے ساتھ مل کر شہر سے دُور دیہی علاقے میں ایک خوبصورت گھر ضرور بنایا ہے‘‘۔ وہ کہتے ہیں کہ اپنی کتاب ’’ ڈا ونچی کوڈ‘‘ کی اشاعت کے برسوں بعد بھی وہ اپنی پرانی کار ہی استعمال کر رہے ہیں: ’’مَیں اور میری بیوی، ہم دو ایسے انسان ہیں، جنھیں آرٹ اور فن تعمیر سے دلچسپی ہے، ہمیں کاروں، زیورات اور اس طرح کی چیزوں کا کوئی شوق نہیں‘‘۔واضح رہے کہ ڈین براؤن کی کتاب ’’ ڈا ونچی کوڈ‘‘ نے پوری دنیا میں زبردست شہرت حاصل کی ہے، اس ناول پر فلم بھی بنائی گئی ہے۔ کولون میں اپنے تازہ ناول کے حوالے سے ڈین براؤن کا کہنا تھا: ’’اس کتاب کو تحریر کرنے میں تین سال سے کچھ زیادہ عرصہ لگا ہے تاہم ’ ڈاونچی کوڈ‘ کی کامیابی کے بعد مجھے ایسے بہت سے خفیہ مقامات کا پتا چلا ہے، جن کا مجھے پہلے علم نہیں تھا‘‘۔اپنی کتابوں میں ڈین براؤن نے جس انداز سے مسیحیت کو پیش کیا ہے، اُس پر ویٹی کن کے نمایندے اُن سے کافی ناراض ہیں۔ خود براؤن ہرگز نہیں سمجھتے کہ مذہب اور سائنس کے درمیان کوئی تضاد پایا جاتا ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ جتنا زیادہ اُنھوں نے الجبرا یا طبیعیات پر غور کیا ہے، اتنا زیادہ اُن پر مذہبی جہات کے دَر وَا ہوتے چلے گئے ہیں۔ وہ کہتے ہیں ’’ آج کل اُنھیں اس بات کا یقین ہے کہ سائنس اور مذہب در حقیقت دو مختلف زبانیں ہیں، جو ایک ہی کہانی بیان کرتی ہیں، یہ دونوں ایک دوسرے کے ساتھی ہیں۔[2]


بطور مصنف[ترمیم]

1993ء میں سڈنی شیلڈن کے ناول ڈومز ڈے کانسپائریسی پڑھنے کے بعد ڈان براؤن کو ایک مصنف بننے کی خواہش ہوئی اور انہوں ایک ناول ڈیجیٹل فوٹریس پر کام شروع کیا۔ اس دوران انہوں نے اپنی بیوی بلیتھ کے ساتھ دو مزاحیہ کتب بھی تحریر کیں۔ ڈان براؤن کا پہلا ناول ڈیجیٹل فوٹریس 1998ء میں شائع ہوا ، اس کے بعد ڈان براؤن نے یک بعد دیگرے دو ناول مزید اینجلز اینڈ ڈیمنز اور ڈیسپشن پوائنٹ بالترتیب سال 2000 اور 2001 کو شایع کیے، ان میں سے ہر ایک کی دس ہزار کاپیاں ہی فروخت ہوسکیں۔ اپنے چوتھے ناول ڈاونچی کوڈ سے انہیں سب سے زیادہ کامیابی ملی، جو سال 2003 میں شایع ہوا اور سال 2009 تک اس کی 81 ملین کاپیاں فروخت ہوئیں۔ اس ناول کی کامیابی سے براؤن کی گذشتہ کتابوں کی فروخت میں مدد ملی ہے. 2004 میں ان کے چاروں ناول نیویارک ٹائمز کی بیسٹ سیلر فہرست میں شامل تھے، اور 2005 میں انہیں ٹائم میگزین نے سال کے 100 سب سے زیادہ بااثر لوگوں فہرست اور فوربس میگزین نے "100مشہورشخصیت" کی فہرست میں بارہویں نمبر پر رکھا۔ 2009ء میں ان کا اگلا ناول دی لوسٹ سمبل پہلے روز ہی امریکہ ، برطانیہ اور کینیڈا میں میں دس لاکھ کی تعداد میں فروخت ہوا۔ 2013 میں شایع ہونے والا ڈان براؤن کا ناول انفرنو پہلے ہی دن بیسٹ سیلر کی لسٹ میں شامل ہوگیا۔

ڈین براؤن کے ناول[ترمیم]

ڈین براؤن کے ناول

اقتباسات[ترمیم]

ڈین براؤن کی کتابوں سے منتخب اقتباسات وکی اقتباس پر ملاحظہ کیجیے ڈین براؤن ۔ وکی اقتباسات


حوالہ جات[ترمیم]


بیرونی روابط[ترمیم]

مصنف ڈین براؤن کی آفیشل ویب سائٹ

مصنف ڈین براؤن کی آفیشل برطانوی ویب سائٹ