گنجائشدار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Capacitor
Photo-SMDcapacitors.jpg
Modern capacitors, by a cm rule
قسم Passive
ایجاد Ewald Georg von Kleist (October 1745)
Electronic symbol
Capacitor Symbol alternative.svg

گنجائشدار (capacitor) (جسے پہلے مکثف کہاجاتا تھا) ایک ایسی اختراع ہے جو برقی بار ذخیرہ (store) کرنے کیلئے استعمال کیا جاتا ہے. آج کل کئی اشکال کے گنجائشدار مستعمل ہیں تاہم یہ سب ایک غیرموصل کے ذریعے الگ کئے گئے کم از کم دو موصلات پر مشتمل ہوتے ہیں. گنجائش دار (کیپیسٹر capacitor) ایک ایسے برقی آلہ component ہوتا ہے جس میں دو موصل conductor ایک حاجز dielectric/insulator سے جدا کیئے ہوئے ہوتے ہیں.



مختلف کپیسٹر
‎کمپوٹر کپیسٹر‎
‎کپیسٹر کی ڈایاگرام‎


مختلف طرح کے کیپیسٹر


اگر دو دھاتی پلیٹوں کو کچھ فاصلے پر آمنے سامنے رکھ دیا جائے تو یہ ایک سادہ کیپیسٹر (capacitor) بن جاتا ہے۔ یہاں ڈائ الیکٹرک (dielectric) کا کام پلیٹوں کے درمیان موجود ہوا کرتی ہے۔چونکہ سیدھی پلیٹوں کی وجہ سے کیپیسٹر (capacitor) کی جسامت بہت بڑھ جاتی ہے اس لیئے عام طور پر سیدھی پلیٹوں کی بجائے کاغذ ( بطور ڈائ الیکٹرک) میں لپٹی ہوئی دھاتی پتریاں استعمال کی جاتی ہیں تا کہ سائز چھوٹی رہے۔

دو پلیٹوں پر مشتمل ایک سادہ کیپیسٹر
اوپر اور نیچے دو دھاتی پلیٹوں کے درمیان نیلے رنگ کا ڈائ الیکٹرک ہے۔


پلیٹوں کا رقبہ جتنا زیادہ ہوتا ہے کیپیسٹر (capacitor) کی گنجائش (capacitance) اتنی ہی زیادہ ہوتی ہے۔ اسی طرح پلیٹوں کے درمیان فاصلہ جتنا کم ہوتا ہے کیپیسٹر (capacitor) کی گنجائش (capacitance) اتنی زیادہ ہوتی ہے۔ کیپیسٹر (capacitor) کی گنجائش (capacitance) کو فیراڈ Farad میں ناپتے ہیں۔ اگر کسی کیپیسٹر (capacitor) کی پلیٹوں پر ایک کولمب چارج Q کی وجہ سے ایک وولٹ کی وولٹیج V بن جائے تو اس کیپیسٹر (capacitor) کی گنجائش C ایک فیراڈ Farad کہلائے گی۔
پہلے زمانے میں کیپیسٹر (capacitor) کی گنجائش (capacitance) جار jars میں ناپی جاتی تھی۔


C= \frac{Q}{V}

جب کیپیسٹر capacitor پر DC وولٹیج لگائ جاتی ہے تو حاجز dielectric میں برقی میدان electric field بن جاتا ہے جس میں توانائ ذخیرہ ہو جاتی ہے۔ یہ برقی میدان بیٹری ہٹانے کے بعد بھی کچھ عرصہ تک قائم رہتا ہے۔ اس طرح کیپیسٹر capacitor برقی توانائ کو ذخیرہ کر سکتا ہے۔
جب کیپیسٹر capacitor چارج شدہ حالت میں ہوتا ہے تو اسکی پلیٹوں کے درمیان کشش کی میکانکی قوت mechanical force موجود ہوتی ہے جبکہ پلیٹوں پر وولٹیج موجود ہوتی ہے۔

انگوٹھے کے ناخن کے برابر ایک الیکٹرولائیٹک (electrolytic) کیپیسٹر


کیپیسٹر capacitor کو پہلے کنڈنسر condenser بھی کہتے تھے۔
کیپیسٹر capacitor کی یہ خوبی ہوتی ہے کہ اس میں سے ڈائرکٹ کرنٹ DC نہیں گزر سکتی جبکہ آلٹرنیٹنگ کرنٹ AC گزر جاتی ہے اور اس وجہ سے کیپیسٹر capacitor الیکٹرانک سرکٹ میں بہت استعمال ہوتے ہیں

متوازی پلیٹوں والے ایک چارج شدہ کیپیسٹر کا خاکہ۔ ایک پلیٹ پر جتنا مثبت چارج ہوتا ہے دوسری پلیٹ پر اتنا ہی منفی چارج ہوتا ہے

کیپیسٹر خاص طور پر سرامک ceramic کیپیسٹر مائکروفونکا کام بھی انجام دیتے ہیں اور الٹرا ساونڈ ultrasound پیدا کرنے کے بھی کام آتے ہیں۔
ریڈیو اور TV کے ٹیوننگ سرکٹ tunning circuit میں کیپیسٹر کا وجود لازمی ہے۔

تمام سنگل فیز AC موٹروں کو اسٹارٹ کرتے وقت دو فیز phase کی ضرورت ہوتی ہے۔ ایک دفعہ اسٹارٹ ہو جائے تو پھر وہ موٹر ایک فیز پر چلتی رہتی ہے۔ اس لیئے ایسی موٹروں میں ایک کیپیسٹر (capacitor) موجود ہوتا ہے جو اسٹارٹنگ کے وقت ایک ہی فیز سے دو فیز بنا دیتا ہے تاکہ موٹر چل پڑے۔ اگر چھت پہ نصب پنکھے کا کیپیسٹر (capacitor) نکال دیا جائے تو وہ اسٹارٹ نہیں ہو سکے گا۔ لیکن ہاتھ سے تھوڑا سا گھمانے پر ایسا پنکھا چل پڑے گا۔

یہ اختراع ﻣﻮﺟﺪ ﻣﺎﺋﯿﮑﻞ ﻓﯿﺮﺍﮈﮮ ﻧﮯ ﺍﯾﺠﺎﺩ ﮐﯿﺎ. ﺍﺱﯼ ﮐﮯ ﻧﺎﻡ ﭘﺮ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮐﯽ ﮔﻨﺠﺎﺉ ﺵ ﮐﺎ ﯾﻮﻧﭧ ﻓﯿﺮﺍﮈ ﺭﮐﮭﺎ ﮔﯿﺎ ﮨﮯ- .ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﺍﻗﺴﺎﻡ ﺍﻭﺭ ﺷﮑﻠﻮﮞ ﮐﮯ ﮨﻮﺗﮯﮨﯿﮟ. - ﺳﺎﺩﮦ ﺍﻭﺭ ﮐﻢ ﻃﺎﻗﺘﻮﺭ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﮐﯿﻠﺌﮯ ﺩﻭ ﺩﮬﺎﺗﯽ ﭘﻠﯿﭩﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﮐﮯ ﻣﺘﻮﺍﺯﯼ ﺭﮐﮫ ﺩﯼ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﯿﮟ- .ﺍﻥ ﭘﻠﯿﭩﻮﮞ ﮐﮯ ﺩﺭﻣﯿﺎﻥ ﮐﻮﺋﯽ ﻏﯿﺮ ﻣﻮﺻﻞ ﺭﮐﮭﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ.ﺝﺱ ﮐﻮ ﮈﺍﺋﯽ ﺍﻟﯿﮑﭩﺮﮎ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ- .ﺟﺐ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮐﯽ ﺗﺎﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺑﯿﭩﺮﯼ ﺳﮯ ﺟﻮﮌﺍ ﺟﺎﮰ.ﺗﻮ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﭘﻠﯿﭩﻮﮞ ﭘﺮ ﺑﺎﻟﺘﺮﺗﯿﺐ ﻣﺜﺒﺖ ﺍﻭﺭ ﻣﻨﻔﯽ ﭼﺎﺭﺝ ﻣﺤﻔﻮ ﻅ ﮨﻮﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ- . ﭼﺎﺭﺝ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﺗﮏ ﻣﺤﻔﻮ ﻅ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ.ﺟﺐ ﺗﮏ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮐﯽ ﺗﺎﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺁﭘﺲ ﻣﯿﮟ ﻣﻼﯾﺎ ﻧﮧ ﺟﺎﮰ- .ﺟﺐ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮐﻮ ﮐﺴﯽ ﺑﺮﻗﯽ ﺁﻟﮯ ﺟﯿﺴﮯ[[ﻣﻮﭨﺮ ]]ﻭﻏﯿﺮﮦ ﮐﯽ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﺗﺎﺭﻭﮞ ﺳﮯ ﺟﻮﮌ ﺩﯾﺎ ﺟﺎﮰ ﺗﻮ ﻣﻮﭨﺮ ﺍﯾﮏ ﺟﮭﭩﮑﮯ ﺳﮯ ﭼﻞ ﮐﺮ ﺩﻭﺑﺎﺭﮦ ﺑﻨﺪ ﮨﻮﺟﺎﮰ ﮔﯽ- .ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﭘﮭﺮ ﻣﺤﻔﻮ ﻅ ﮐﺮﺩﮦ ﭼﺎﺭﺝ ﺧﺘﻢ ﮨﻮﺟﺎﮰ ﮔﺎ- .ﺍﺳﯽ ﻟﯿﮯ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮐﻮﮈﺍﺋﯿﺮ ﯼﮐﭧ ﮐﺮﻧﭧﺍﻭﺭ[[ ﺁﻟﭩﺮﻧﯽ ﭨﻨﮓ ﮐﺮﻧﭧ]]ﺳﮯ ﭼﻠﻨﮯ ﻭﺍﻟﯽ ﻣﻮﭨﺮﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎ ﻝ ﮐﯿﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ.ﺟﺐ ﮐﺮﻧﭧ[[ﻣﻮﭨﺮ ]]ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ- .ﺗﻮ ﭘﮩﻠﮯ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﮔﺰﺭﺗﺎ ﮨﮯ.ﺟﺐ ﺁﮔﮯ ﺑﮍﮬﺘﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮈﺳﭽﺎﺭ ﺝ ﮨﻮﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ- .ﺍﻭﺭ[[ﺳﺮﮎﭦ ]]ﻣﯿﮟﮐﺮﻧﭧﮐﯽ ﻣﻘﺪﺍﺭ ﺑﮍﮪ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ﺟﺲ ﺳﮯ ﻣﻮﭨﺮ ﺁﺳﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﺳﭩﺎﺭﭦ ﮨﻮﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ. -ﮐﭙﯿﺴﭩﺮ ﮐﯽ ﮐﺮﻧﭧ ﮐﻮ ﻣﺤﻔﻮ ﻅ ﺭﮐﮭﻨﮯ ﮐﯽ ﮔﻨﺠﺎﺉ ﺵ ﮐﺎ ﯾﻮﻧﭧ ﻓﯿﺮﺍﮈ ﮨﮯ- .ﻓﯿﺮﺍﮈ ﺑﮩﺖ ﺑﮍﺍ ﯾﻮﻧﭧ ﮨﮯ ﻋﺎﻡ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﻣﺎﺋﯿﮑﺮﻭ ﻓﯿﺮﺍﮈ ﺑﻄﻮﺭ ﭼﮭﻮﭨﺎ ﯾﻮﻧﭧ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎ ﻝ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ


مزید دیکیئے[ترمیم]