1926ء کی بالی ووڈ فلموں کی فہرست

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

بالی ووڈ فلمی صنعت کی جانب سے 1926 میں ممبئی میں بنائی گئی فلموں کی فہرست۔[1][2][3][4]

ہندوستانی سنیما میں 1926ء[ترمیم]

  • 1926ء میں 106 فلمیں بنائی گئیں۔ 1926ء تک تقریباً 300 سنیما تھیٹر پورے ہندوستان میں موجود تھے، اس کے ساتھ کئی "ٹریولنگ بائیو اسکوپس" بھی تھے۔ امیتابھ بچن نے ہندوستان ٹائمز میں اپنے مضمون میں لکھا تھا کہ "دکھائی جانے والی تقریباً 90 فیصد فلمیں ہالی وڈ سے درآمد کی گئیں، خصوصی طور پر یونیورسل سٹوڈیوز سے۔
  • فاطمہ بیگم ہندوستانی سنیما کی پہلی خاتون ہدایت کار بنیں جب انہوں نے بلبلے پرستان کی پروڈکشن اور ہدایت کاری کی۔ [5]
  • پہلی سنیما تجارتی تنظیم جسے بمبئی سنیما اور تھیٹر ٹریڈ آرگنائزیشن کہا جاتا ہے 1926ء میں ہندوستان میں قائم ہوئی۔
  • فلموں کا اپنا مرکزی عنوان انگریزی میں تھا جس کے بعد علاقائی ہندوستانی زبان کا عنوان تھا۔ [6]
  • سولوچنا (روبی میئر) نے ٹیلی فون گرل سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا اور 1920ء اور 1930ء کی دہائی کے ابتدائی ستاروں میں سے ایک بن گئی۔ [7]
  • کانن دیوی جن کو کانن بالا کو بھی کہا جاتا ہے، جیوتی اسٹوڈیوز کے لیے جیوتیش بینرجی کی ہدایت کاری میں بننے والی فلم جوی دیو میں اپنے اداکاری کے دور کا آغاز دس سال کی عمر میں کیا۔ وہ ہندی اور بنگالی سنیما کی ابتدائی گلوکارہ اداکار بن گئیں۔
  • زیبونیسا، جسے زیبو کے نام سے بھی جانا جاتا ہے، نے اپنے اداکاری کے دور کا آغاز 1926ء میں رائل آرٹ اسٹوڈیو سے کیا، اور 1940ء میں بند ہونے تک کمپنی کے ساتھ رہی۔ [8]

فلمیں[ترمیم]

  • بلبلے پرستان پہلی ہندوستانی سنیما فلم تھی جس کی ہدایت کاری خاتون ہدایت کار فاطمہ بیگم نے کی۔ یہ فلم اس کی حال ہی میں بنائے گئے فاطمہ فلمز کے تحت بنائی گئی تھی اور اس میں خود اور اس کی تین بیٹیاں زبیدہ، سلطانہ اور شہزادی نے اداکاری کی تھی۔ [9]
  • ٹیلی فون گرل ایک ایسی فلم کے طور پر مشہور ہوئی جس نے "حقیقی جگہوں کا معیاری استعمال کیا"، [10] اسے کوہ نور فلم کمپنی کے لیے ہومی ماسٹر نے ڈائریکٹ کیا تھا اور یہ حقیقی زندگی کے ٹیلی فون آپریٹر سولوچنا ( روبی مائرز ) کی پہلی فلم تھی۔
  • ٹائپسٹ گرل کوہ نور فلم کمپنی کے لیے چندولال شاہ نے فلم کی ہدایت کاری کی تھی اور اس میں سولوچنا، راجہ سیندو اور گوہر نے اداکاری کی تھی۔ یہ ایک سماجی فلم تھی، یہ تجارتی طور پر اتنی کامیاب تھی جتنی کہ اس زمانے میں بننے والی افسانہ فلمیں۔
  • شاردا فلم کمپنی کے لیے نیول گاندھی کی ہدایت کردہ ویمپ اور مس یقبال نے اداکاری کے ساتھ ٹیلی فون گرل کے ساتھ ایک "ماڈرن گرل" فلم کا حوالہ دیا ہے۔ [11]

فلم کمپنیاں[ترمیم]

  • امپیریل فلم کمپنی اردشیر ایرانی نے قائم کی، جو بعد میں پہلی ٹاکی فلم عالم آرا (1931) بنانے والی تھی۔ [12]
  • فاطمہ فلمز کی بنیاد فاطمہ بیگم نے رکھی تھی اور اس کا نام بعد میں 1928 ء میں بدل کر وکٹوریہ فاطمہ فلمز رکھ دیا گیا۔
  • پنجاب فلم کارپوریشن لاہور میں قائم کی گئی۔ [10]

اے سی[ترمیم]

عنوان ہدایت کار کردار قسم سینما گرافری معلومات
ابالا رانی عرف ملکہ جو نہیں بولتی ایس این پٹنکر زبیدہ ابالا پائنیر فلم کمپنی ڈی او پی: شری ناتھ پٹنکر
آ کراؤن فار ٹو ڈے دو دن کا بادشاہ ہرشدرائی مہتا گلاب، نندرم، ارمیلین، ہمت لال، وشنو۔ سماجی کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: چمن لال لوہار
عجب کماری منی لال جوشی مس مریم، موہن لالہ، داجی۔ باس کی وضع قطع شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ۔
امر آشا عرف لافانی امید ہرشدرائی مہتا ارمیلین، گلاب، ناندرم تاریخی کرشنا فلم کمپنی ڈی او پی: چمن لال لوہار
آشا عرف امید آندھلی پھول والی راما ایس چودھری ناگیندر مجمدار، پٹلی، غوری، بابا ویاس، کے بی اتھاولے۔ سماجی لکشمی پکچرز کمپنی ڈی او پی: پانڈورنگ ایس نائک۔
بالاجی نمبلکر دادا صاحب پھالکے وسنت شنڈے، بھوراؤ داتار، دتوپنت سکتے، کرشنا چوہان۔ تاریخی ہندوستانی سنیما فلم کمپنی، ناسک۔ ڈی او پی: تلنگ۔
بھگوا زندا عرف نارنجی پرچم، اورنج فلیگ کے پی بھاوے الیزر، مدنرائی وکیل، اسوجی، بابراؤ سنسارے۔ تاریخی رائل آرٹ سٹوڈیو ڈی وا پی: رستم ایرانی۔
بھکت پرہلاد عرف دیندار پرہلاد دادا صاحب پھالکے۔ بھوراؤ داتار، بچو، جمنا گولے، گنگارام۔ عقیدت مندی ہندوستانی سنیما فلم کمپنی، ناسک۔ ڈی او پی: انا سالونکے۔
بھسماسور ودھ عرف پرتھوی پتر جی ایس دیوارے راجہ سینڈو، گوہر سماجی کوہ نور فلم کمپنی
بولتی بلبل عرف ٹاکنگ نائٹنگیل عرف شاہی فقیر دھیرو بھائی دیسائی۔ زیبونیسا، انیل کمار، ممتاز بیگم۔ فنطاسیہ وشنو جنت۔ ڈی او پی: کے سی ورما
بریف لیس بیرسٹر ہومی ماسٹر گوہر، موتی، پوٹلی، صدیق سماجی کوہ نور فلم کمپنی
بلبل پرستان فاطمہ بیگم فاطمہ بیگم، مدنرائی وکیل، میڈم ٹوسکا، زبیدہ، سلطانہ، پتلی، کے بی اتھاولے، مس فیسکے فنطاسیہ فاطمہ فلم کمپنی ڈی او پی: پانڈورنگ نائک، رستم ایرانی۔
برقع والی عرف پردہ دار دشمن کانجی بھائی راٹھور ارمیلین، نندرم، حیدر شاہ۔ کرشنا فلم کمپنی ڈی او پی: چتور بھائی پٹیل۔
چتر بکاولی ایس این پٹنکر فنطاسیہ پائنیر فلمز کمپنی
سنیما کوئین عرف محبت کی قربانی ایم ڈی بھوانی سولوچنا، پوٹلی، خلیل۔ سماجی۔ کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: وی بی جوشی

ڈی جے۔[ترمیم]

عنوان۔ ڈائریکٹر کاسٹ نوع نوٹس سینما گرافر۔
دہلی نہیں ٹھگ عرف۔ دہلی کا چور ہومی ماسٹر۔ گوہر، خلیل۔ کپڑے کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: نارائن دیوارے، کے جی گوکھلے۔
دھا چا ما عرف نارائن راؤ پیشوا کا قتل این ڈی سروپتدار۔ ڈینشا بلیموریا، بندوپنت سوہونی، درگا بائی کورےگاونکر، سندر راؤ نڈکرنی، پی این ورنے، ومن راؤ کلکرنی، جےارامپنت، داتوبا راجواڈے تاریخی۔ یونائیٹڈ پکچرز سنڈیکیٹ ڈی او پی: پانڈورنگ تیلیگیری
دھرم پتنی عرف۔ بیوی جیوتیش بینرجی۔ صبر کوپر، درگادس بنرجی، کارتیک ڈی۔ سماجی۔ مدن تھیئٹرز لمیٹڈ
دھنوربھنگا عرف جانکی عرف کی شادی۔ جانکی سوئمواڑہ دادا صاحب پھالکے۔ افسانہ۔ ہندوستانی سنیما فلم کمپنی، ناسک۔
دل ارم۔ نانو بھائی دیسائی۔ اے پی کپور، دوارکی، مس میری، پربھا شنکر، جانی بابو۔ تاریخی۔ شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ
دلاری۔ منی لال جوشی الیزر، بابراؤ سنسارے، پوٹلی، مدنرائی وکیل، ایم اڈوادیا، جلو بائی، یوسف تاریخی۔ سرسوتی فلم کمپنی ڈی او پی: اے پی کاراندیکر۔
دگاباز دنیا عرف۔ دنیا کا راستہ۔ ہریہار دیوانہ۔ یاقبال، امیربانو، جونز۔ سماجی۔ شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: چمن لال لوہار
بے خوف پریت عرف۔ اندھیر نگری عرف۔ دہلی نہیں دوڈھ چیل۔ گنگارام، دوارکی، باپو۔ کپڑے شری وجے فلم ڈی او پی: نیول بھٹ۔
ملک کی خاطر۔ ہریہار دیوانہ۔ تارا، مس مریم۔ کپڑے شاردہ فلم کمپنی
گج گوری۔ بی یادو افسانہ۔ مہاراشٹر فلم کمپنی
جنٹلمین لوفر عرف۔ بھدرواشی گونڈا۔ گلاب، مدنرائی وکیل، جلو بائی، درمد۔ سماجی۔ رائل آرٹ سٹوڈیو
گولڈن لوٹس عرف سوورنا کمال۔ کے پی بھاوے ماسٹر وٹھل، مس مریم، ہیرا، شیراز علی حکیم، جانی بابو، مس روزی۔ افسانہ۔ شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ
اندراج عرف۔ کنگن غائب ہے۔ بھگوتی مشرا۔ فاطمہ بیگم، زبیدہ، الیزر، جلو بائی۔ افسانہ۔ رائل آرٹ سٹوڈیو ڈی او پی: اردشیر ایرانی۔
جے دیو عرف۔ جوئی دیب۔ صبر کوپر۔ عقیدت مند۔ مدن تھیئٹرز لمیٹڈ
جنگل نی جادیبوتی عرف۔ محبت سے نوازا گیا۔ منی لال جوشی تارا، بچو، بالا بھائی۔ سماجی۔ شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ

KM[ترمیم]

عنوان۔ ڈائریکٹر کاسٹ نوع نوٹس سینما گرافر۔
کچا دیوانی عرف۔ ودھیہارن۔ شری ناتھ پٹنکر۔ کے بی اتھاولے، ٹھٹے، بھونسلے۔ افسانوی۔ پائنیر فلم کمپنی ڈی او پی: شری ناتھ پٹنکر۔
کالاباز اسحاق عرف۔ آمادہ کرنے کی حکمت عملی۔ وی کے پٹانی۔ ڈوروتی، بٹوک بھائی، شانتا، الاراکھا میر نتھال سونی، مونگھبائی، گتو بھائی ویدیا، موجی مفلس سماجی۔ سوراشٹر کینی میٹوگراف کمپنی ڈی او پی: چمپک لال پٹانی۔
کشمیری عرف دشمن کی بیٹی۔ منی لال جوشی زبیدہ، مدنرائی وکیل، ڈبلیو ایم خان۔ کپڑے ایکسلسیئر فلم کمپنی۔ ڈی او پی: ڈی ڈی ڈبکے۔
کاتریو گیپ۔ ڈینشا زاویری۔ مدنرائی وکیل۔ سماجی۔ رائل آرٹ سٹوڈیو ڈی او پی: اے پی کاراندیکر۔
کیچک ودھ۔ جی وی سائیں بھوراؤ داتار، جمنا گولے، بچو۔ افسانہ۔ ہندوستانی سنیما فلم کمپنی، ناسک۔ DOP: انا سالونکے۔
لکھو ونجارو۔ ہومی ماسٹر۔ جمنا، گوہر، خلیل۔ لیجنڈ۔ کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: کے جی گوکھلے۔
شیر آف میوار عرف دیوان بھمنشا۔ ایم ڈی بھوانی الیزر، پوٹلی، جلو بائی، مدنرائی وکیل۔ تاریخی۔ امپیریل فلم کمپنی۔
محبت اندھی ہے۔ راجہ نی گامی تی رانی۔ کانجی بھائی راٹھڈ۔ ارمیلین، گلاب۔ سماجی۔ کرشنا فل کمپنی ڈی او پی: چمن لال لوہار
مدن کالا۔ ہریہار دیوانہ۔ ماسٹر وٹھل، تارا، جانی بابو، مس مریم، آشا۔ تصور شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ
مادھو کام کنڈالا۔ چندولال شاہ راجہ سینڈو، پٹلی، مس فیسکے، بلانچ ورنی۔ لیجنڈ۔ لکشمی تصویریں ڈی او پی: ڈی ڈی ڈبکے۔
منوجیا۔ شری ناتھ پٹنکر۔ کے بی اتھاولے، نرگس، تکلے۔ پائنیر فلم کمپنی شری ناتھ پٹنکر
میرج مارکیٹ عرف۔ لگن کے للم۔ بچو بابو۔ موتی، اوشا رانی، صدیقہ۔ سماجی۔ کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: کے جی گوکھلے۔
مینا کماری ایم ڈی بھوانی گوہر، راجہ سینڈو، ویدیا، گھنشیام۔ کپڑے کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: وشنو بی جوشی۔
آدھی رات سوار عرف۔ پہاڑی پنڈھارو۔ بھگوتی مشرا۔ مدنرائی وکیل، پٹلی، مس جین، جلو بائی، راج ہنس۔ کپڑے امپیریل فلم کمپنی۔ ڈی او پی: اے پی کاراندیکر۔
چاند لعنت گنپتی عرف چتورتیچرا۔ دادا صاحب پھالکے۔ بھراؤ داتار، افسانہ۔ ہندوستانی سنیما فلم کمپنی، ناسک۔ ڈی او پی: تلنگ۔
موہنی اوتار عرف۔ خدا کا موہنی اوتار عرف۔ سمندر مانتھن۔ رگھوپتی ایس پراکاسا۔ افسانہ۔ اسٹار آف دی ایسٹ فلم کمپنی، مدراس
ممتاز محل۔ ہومی ماسٹر۔ راجہ Sandow ، سلوچنا، گوہر، Siddimiya تاریخی۔ کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: نارائن دیوارے۔

TZ[ترمیم]

عنوان۔ ڈائریکٹر کاسٹ نوع نوٹس سینما گرافر۔
تائی ٹیلیین عرف۔ تائی ٹیلیین۔ این ڈی سروپتدار۔ ڈی بلیموریا، درگا، باپو گوکھلے، گنگو۔ تاریخی۔ یونائیٹڈ پکچرز سنڈیکیٹ ڈی او پی: پانڈورنگ تیلیگیری
ٹیلی فون گرل۔ ایم ڈی بھوانی
پریٹینڈر عرف۔ توتاچے بند۔ این ڈی سروپتدار۔ بندوپنت سوہونی، ومن راؤ کلکرنی، درگابائی کورےگاونکر، پی این ورنے، دتوبہ راجواڑے، ڈی این پوٹدار تاریخی۔ یونائیٹڈ پکچرز سنڈیکیٹ ڈی او پی: پانڈورنگ تیلیگیری
ٹیلی فون گرل عرف۔ ٹیلی فون نی ترونی۔ ہومی ماسٹر۔ سولوچنا ( روبی مائرز )، راجہ سینڈو، گوہر، خلیل، جمنا۔ سماجی۔ کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: نارائن دیوارے۔
ویمپ عرف۔ یوون چکر نیول گاندھی مس یاقبل۔ سماجی۔ شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ۔
شکار عرف۔ بھول نہیں بھوگ۔ ہرشدرائی مہتا ارمیلین، گلاب، نندرم، پربھوداس۔ سماجی کرشنا فلم کمپنی ڈی او پی: چمن لال لوہار
ٹائپسٹ لڑکی عرف۔ میں ایک عیسائی کیوں بن گیا؟ چندولال شاہ سولوچنا ( روبی مائرز )، راجہ سینڈو، گوہر۔ سماجی۔ کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: نارائن دیوارے۔
وانتیل ویشیا عرف۔ چھیڑچھاڑ بیوہ عرف۔ وانتھیل ودھوا۔ کے پی بھاوے مدنرائی وکیل، جلو بائی۔ ایکشن کاسٹیوم رائل آرٹ سٹوڈیو DOP: رستم ایرانی۔
وسنت بالا۔ نانو بھائی بی ڈیسائی مس جونز، ماسٹر وٹھل۔ کپڑے شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: نیول بھٹ۔
ویر کیسری عرف۔ بہادر کیسری۔ کانجی بھائی راٹھڈ۔ Ermeline ، گلاب، حیدر شاہ، نندرم، وشنو، جوشی۔ کپڑے کرشنا فلم کمپنی ڈی او پی: چتور بھائی پٹیل۔
آوارہ پریت عرف۔ بھمو بھوت۔ ایم ڈی بھوانی سولوچنا ( روبی مائرز )، خلیل، آر این ویدیا، بہرام وسانیہ۔ تصور کوہ نور فلم کمپنی ڈی او پی: نارائن دیوارے۔
دنیا کی راہ عرف۔ دگاباز دنیا۔ ہریہار دیوانہ۔ مس جونز، عامر بانو، یاقبال۔ سماجی۔ شاردہ فلم کمپنی۔ ڈی او پی: سیمان لال لوہار۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Year-1926". indiancine.ma. Indiancine.ma. اخذ شدہ بتاریخ 30 اپریل 2015. 
  2. "Database". citwf.com. Alan Goble. اخذ شدہ بتاریخ 30 اپریل 2015. 
  3. "SilentFilms 1926". gomolo.com. Gomolo. 23 دسمبر 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 اپریل 2015. 
  4. "Cinema History 1926". businessofcinema.com. Businessofcinema.com. اخذ شدہ بتاریخ 30 اپریل 2015. 
  5. S. B. Bhattacherje (1 مئی 2009). "1926". Encyclopaedia of Indian Events & Dates. Sterling Publishers Pvt. Ltd. صفحات 1–. ISBN 978-81-207-4074-7. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015. 
  6. "Silent Films of India". culturopedia.in. Culturopedia.in. 10 ستمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015. 
  7. John D. H. Downing؛ Denis McQuail؛ Philip Schlesinger؛ Ellen Wartella (8 ستمبر 2004). "Bollywood and Indian Cinema". The SAGE Handbook of Media Studies. SAGE Publications. صفحات 521–. ISBN 978-1-4522-0664-6. اخذ شدہ بتاریخ 10 مئی 2015. 
  8. Dharamsey، Virchand. "The advent of sound in Indian cinema theatre orientalism action magic" (PDF). jmionline.org. Jmionline. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015. 
  9. Gulazāra؛ Saibal Chatterjee (2003). Encyclopaedia of Hindi Cinema. Popular Prakashan. صفحات 61–. ISBN 978-81-7991-066-5. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015. 
  10. ^ ا ب Acharya، Sharmistha. "Significant Films" (PDF). dishumdishum.com/. DhishumDhishum.com. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015. 
  11. The Modern Girl around the World Research Group. ویکی نویس: Alys Eve Weinbaum؛ Lynn M. Thomas؛ Priti Ramamurthy؛ Uta G. Poiger؛ Madeleine Yue Dong؛ Tani E. Barlow. The Modern Girl Around the World: Consumption, Modernity, and Globalization. Duke University Press. صفحات 153–. ISBN 0-8223-8919-3. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015. 
  12. Tejaswini Ganti (2004). Bollywood: A Guidebook to Popular Hindi Cinema. Psychology Press. صفحات 207–. ISBN 978-0-415-28853-8. اخذ شدہ بتاریخ 11 مئی 2015.