ابو سعید میرزا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
وسط ایشیا کے مغل حکمران
Genghis Khan.jpg
چنگیز خان
چنگیز خان 
جوجی خان 
تولی خان 
اوکتائی خان 
چغتائی خان 
ہلاکو خان
قراچار نوئیاں
امیر تیمور
امیر تیمور 
امیر جلال الدین میراں شاہ 
امیر زادہ عمر شیخ 
شاہ رخ تیموری 
پیر محمد بن جہانگیر بن امیر تیمور 
خلیل سلطان 
الغ بیگ 
مرزا ابو سعید بن سلطان محمد بن میران شاہ بن امیر تیمور 

ابو سعید میرزا بن محمد بن میران شاہ بن تیمور (1424ء تا 1469ء) تیموری سلطنت کے ایک حکمران تھے جو موجودہ قازقستان، ازبکستان، ایران اور افغانستان پر مشتمل تھی۔ ابو سعید امیر تیمور کا پڑ پوتا، میران شاہ کا پوتا اور الغ بیگ کا بھتیجا تھا۔ وہ ہندوستان کی سلطنت مغلیہ کے بانی ظہیر الدین بابر کا دادا تھا۔ ابتدا میں ابو سعید نے فوجی لشکر تشکیل دیا لیکن سمرقند و بخارا میں قدم جمانے میں ناکام ہوا اور بالآخر یاسی میں اپنا اڈہ قائم کیا۔ 1450ء تک ترکستان کا بیشتر علاقہ فتح کر لیا۔ 1451ء میں اس نے ابو الخیر خان کی زیر قیادت ازبک کی مدد سے سمرقند پر بھی قبضہ کر لیا اس طرح تیموری سلطنت کا تمام مشرقی حصہ اس کے زیر نگیں آ گیا۔ اس نے 1458ء میں فتح ہرات کے ساتھ ثابت کر دیا کہ وہ وسط ایشیا میں سب سے طاقتور تیموری شہزادہ ہے۔ 1459ء میں اس نے تین تیموری شہزادوں کی افواج کو ایک جنگ میں شکست دی اور 1461ء تک مشرقی ایران اور افغانستان کا بیشتر حصہ حاصل کر لیا۔ 1469ء میں آذربائیجان کے پہاڑوں میں آق قویونلو ترکمانوں کے خلاف ایک مہم کے دوران وہ گرفتار ہو گیا اور اوزون حسن کے ہاتھوں مار دیا گیا۔ ابو سعید صوفیوں سے خاص عقیدت رکھتا تھا اور نقشبندی سلسلے کے شیخ خواجہ عبید اللہ احرار سے بہت قریبی تعلق رکھتا تھا۔