نشان حیدر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
نشان حیدر
Nishan-e-haider.jpg
کس کی طرف سے عطا ہوا پاکستان
قسم انعام شجاعت
اہلیت فوجی فقط (تمام رینکوں کے لیے)
وجوہات عطا  "... to those who have performed acts of greatest heroism or most conspicuous courage in circumstances of extreme danger and have shown bravery of the highest order or devotion to the country, in the presence of the enemy on land, at sea or in the air ..."[1]
موجودہ فی الوقت
احصاء (شماریات)
آغاز 16 مارچ 1957[2]
پہلا اعزاز کیپٹن محمد سرور شہید, 1948
آخری اعزاز حوالدار لالک جان شہید, 1999
مجموعہ 11
بعد از وفات
اعزازات
تمام
پیشروی
آئندہ (اعلیٰ) کوئی نہیں
آئندہ  (کمتر) (2) ہلال جرأت
(3) ستارہ جرات
(4) تمغہ جرات

نشانِ حیدر پاکستان کا سب سے بڑا فوجی اعزاز ہے جو کہ اب تک پاک فوج کے دس شہداء کو مل چکا ہے۔ پاکستان کی فضائیہ کی تاریخ اور پاکستان کی بری فوج کے مطابق نشانِ حیدر حضرت علی رضی اللہ عنہ کے نام پر دیا جاتا ہے کیونکہ ان کا لقب حیدر تھا اور ان کی بہادری ضرب المثل ہے۔ یہ نشان صرف ان لوگوں کو دیا جاتا ہے، جو وطن کے لئے انتہائی بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے شہید ہو چکے ہوں۔ آج تک پاکستان میں صرف دس افراد کو نشانِ حیدر دیا گیا ہے جن کے نام درج ذیل ہیں۔

  1. کیپٹن محمد سرور شہید
  2. میجر طفیل محمد شہید
  3. میجر راجہ عزیز بھٹی شہید
  4. میجر محمد اکرم شہید
  5. پائیلٹ آفیسر راشد منہاس شہید
  6. میجر شبیر شریف شہید
  7. جوان سوار محمد حسین شہید
  8. لانس نائیک محمد محفوظ شہید
  9. کیپٹن کرنل شیر خان شہید
  10. حوالدار لالک جان شہید


حوالہ جات[ترمیم]