الشفاء بتعریف حقوق المصطفی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کتاب الشفاء کا عکس

سیرت نبوی کے موضوع پر قاضی عیاض (15 شعبان 476ھ۔ 544ھ / 28 دسمبر 1083ء۔ 1149ء ) کی یہ کتاب مختصراً الشفاء یا شفاء شریف کے نام سے بھی مشہور ہے۔ یہ سیرت کی معروف اور مقبول عام کتاب ہے۔ مصنف نے کتاب میں رسول پاک کے فضائل، محاسن اور معجزات کو ایسے مؤثر اور دل پزیر پیرائے میں بیان کیا ہے کہ ان کے ایک ایک لفظ سے آنحضرت کے ساتھ انتہائی عقیدت اور محبت ٹپکتی ہے۔ قاضی عیاض کی یہ کتاب ایسی بے نظیر ہے جو بے تحاشا فائدے کی حامل ہے لاغر کر دینے والی بیماریوں سے شفا اور مصائب و پریشانیوں سے نجات پانے کے لیے اس کی قرأت و تلاوت مجرب ہے، [1]

ترتیب و حصص[ترمیم]

علامہ قاضی عیاضؒ نے کتاب الشفاء کی ترتیب کچھ اس طرح رکھی ہے کہ اس کو چار حصوں میں تقسیم کیا ہے:

قسم اول[ترمیم]

ان ارشادات الٰہیہ کے بیان میں جن میں اللہ تعالیٰ نے اپنے قول و فعل میں اپنے نبی (ﷺ) کی تعظیم و توقیر کی ہے اس میں چار باب ہیں:

باب اول[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ اللہ تعالیٰ نے آپ (ﷺ) کی تعریف کی ہے اور آپ (ﷺ) کی قدر و منزلت جواس کی بارگاہ میں ہے اس کا اظہار کیا ہے-

باب دوم[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ اللہ تعالیٰ نے آپ (ﷺ) کی پیدائش اور اخلاق کے بارے میں مناقب بیان کیے ہیں اور آپ میں تمام دینی اور دنیاوی فضائل جمع کردیے ہیں-

باب سوم[ترمیم]

اس میں وہ صحیح اور مشہور حدیثیں ہیں جن میں آپ (ﷺ) کی قدر و منزلت جو بارگاہ الٰہی میں پائی جاتی ہے ان کا ذکر ہے اور آپ کو دارین کے فضائل میں جو خصوصیات مرحمت فرمائیں ان کا بیان ہے-

باب چہارم[ترمیم]

اس میں اللہ تعالیٰ نے آپ کے ہاتھ سے جو معجزات اور نشانیاں ظاہر فرمائیں اور جو آپ کو خاص طور پر بزرگیاں عنایت فرمائیں ان میں ان کا بیان ہے-

قسم دوم[ترمیم]

اس میں آپ (ﷺ) کے ان حقوق کا بیان ہے جن کی بجاآوری ہر ایک پر واجب ہے اس میں چار باب ہیں:

باب اول[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ آپ پر ایمان لانا فرض ہے اور آپ (ﷺ) کی اطاعت اور آپ (ﷺ) کی سنت کا اتباع لازم ہے اس میں چار فصلیں ہیں-

باب دوم[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ آپ (ﷺ) کی محبت لازم ہے-

باب سوم[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ آپ (ﷺ) کی تعظیم و توقیر لازم ہے اس میں چھ فصلیں ہیں-

باب چہارم[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ نبی اکرم (ﷺ) پر صلوٰۃ و سلام کا حکم کیا ہے-

قسم ثالث[ترمیم]

اس میں ان امور کا بیان ہے جو نبی اکرم (ﷺ) کے لئے جائز ہیں اور جو امور ممتنع ہیں اور وہ امور بشریہ جن کی نسبت کرنا آپ کی طرف کرنا صحیح ہے یہ قسم کتاب کی جان اور پہلے ابواب کا نتیجہ ہے اور پہلے ابواب تمہید کی حیثیت رکھتے ہیں-

اس قسم میں دو باب ہیں:

باب اول[ترمیم]

امور دینیہ میں

باب دوم[ترمیم]

امورِ دنیاویہ میں

قسم رابع[ترمیم]

اس میں بیان ہے کہ آپ (ﷺ) کی شان میں تنقیص کرنے اور گالی بکنے والے کا حکم کیا ہےا س قسم میں تین باب ہیں:

باب اول[ترمیم]

وہ امور جو نبی اکرم (ﷺ) کے حق میں نقص اور گالی ہیں-

باب دوم[ترمیم]

بارگاہِ اقدس کے گستاخ کا حکم اور اس کی سزا پر مشتمل ہے-

باب سوم[ترمیم]

بارگاہِ الٰہی، رسولانِ گرامی، ملائکہ، کتب سماویہ اہل بیت کی شان میں گالی بکنے والے کے حکم پر مشتمل ہے-

طباعت و اشاعت[ترمیم]

اس کتاب کے متعدد ایڈیشن استنبول، قاہرہ، ہندوستان اور پاکستان سے شائع ہو چکے ہیں۔

شروحات[ترمیم]

  • نسیم الریاض فی شرح شفاء القاضی عیاض(اس کے شارح علامہ احمد شہاب الدین خفاجی متوفی 1069ھ / 1659ء نے اس کی ایک مبسوط شرح لکھی جو چار ضخیم جلدوں میں استنبول اور قاہرہ سے شائع ہو چکی ہے۔
  • شرح الشفاء علامہ ملا علی قاری
  • المدد الفیاض(اس کے شارح الشیخ حسن العدوی الحمزاوی)
  • کتاب مزیل الخفا عن الفاظ الشفا (تالیف از علامہ تقی الدین احمد بن محمد بن حسن التمیمی)
  • کتاب المقنفی فی حل الفاظ الشفاء (تالیف: علامہ برہان الدین ابراہیم بن محمد بن خلیل الحلبی)
  • مناہل الصفافی تخریج احادیث الشفاء (تالیف علامہ جلال الدین سیوطی)
  • اس کی ایک شرح محمد علی القادری نے بھی لکھی جو نسیم الریاض کے مصری ایڈیشن کے حاشیہ پر چھپی ہے۔

تراجم[ترمیم]

اردو تراجم[ترمیم]

الشفاء کے دو اردو تراجم لاہور سے شائع ہو چکے ہیں۔ 1) الشفاء، مترجم : علامہ احمد شاہ بٹالوی رحمتہ اللہ علیہ، ناشر : فرید بک اسٹال لاہور پاکستان۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. الرسالہ المستطرفہ، مؤلف: ابو عبد اللہ جعفر الكتانی، ناشر: دار البشائر الإسلامیہ