جنید خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
جنید خان ٹیسٹ کیپ نمبر 208
Junaid Khan (cricketer).jpg
ذاتی معلومات
مکمل ناممحمد جنید خان
پیدائش24 دسمبر 1989ء (عمر 33 سال)
صوابی، خیبر پختونخواہ، پاکستان
عرفجونی
قد6 فٹ 1 انچ (185 سینٹی میٹر)[1]
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیبائیں ہاتھ کا میڈیم پیس گیند باز
حیثیتگیند باز
تعلقاتیاسر شاہ (کزن)
فواد احمد (کزن)
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 208)1 ستمبر 2011  بمقابلہ  زمبابوے
آخری ٹیسٹ20 جنوری 2014  بمقابلہ  سری لنکا
پہلا ایک روزہ (کیپ 181)23 اپریل 2011  بمقابلہ  ویسٹ انڈیز
آخری ایک روزہ17 مئی 2019  بمقابلہ  انگلینڈ
ایک روزہ شرٹ نمبر.83
پہلا ٹی20 (کیپ 40)21 اپریل 2011  بمقابلہ  ویسٹ انڈیز
آخری ٹی2021 مارچ 2014  بمقابلہ  بھارت
ٹی20 شرٹ نمبر.83
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
2008/09ایبٹ آباد فالکنز
2011, 2014, 2017لنکا شائر
2015مڈل سیکس
2016–2017پشاور زلمی (اسکواڈ نمبر. 83)
2016–2017کھلنا ٹائٹنز (اسکواڈ نمبر. 83)
2018بارباڈوس ٹرائیڈنٹس (اسکواڈ نمبر. 12)
2018– تاحالملتان سلطانز (اسکواڈ نمبر. 83)
2019/20– تاحالخیبر پختونخوا
2019/20رنگپور رینجرز
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ ٹوئنٹی20آئی فرسٹ کلاس
میچ 22 76 9 89
رنز بنائے 122 68 3 791
بیٹنگ اوسط 7.17 4.85 9.76
100s/50s 0/0 0/0 0/0 0/2
ٹاپ اسکور 17 25 3* 71
گیندیں کرائیں 4,605 3,601 162 16,967
وکٹ 71 110 8 350
بالنگ اوسط 31.73 29.23 29.50 24.51
اننگز میں 5 وکٹ 5 0 0 21
میچ میں 10 وکٹ 0 0 0 3
بہترین بولنگ 5/38 4/12 3/24 7/46
کیچ/سٹمپ 4/– 7/– 0/– 17/–
ماخذ: ESPN Crickinfo، 21 اگست 2021ء

محمد جنید خان ( پشتو: جنید خان‎  ; پیدائش 24 دسمبر 1989ء) ایک پاکستانی بین الاقوامی کرکٹ کھلاڑی ہے جو بائیں بازو سے تیز گیند بازی کرتا ہے۔ وہ صوابی کے پہلے کھلاڑی ہیں جنہوں نے پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم کے لیے کوالیفائی کیا۔ [2] اس کے کزن، لیگ اسپنر یاسر شاہ نے بعد میں اس کا راستہ اختیار کیا۔ [3] 2011ء کے ورلڈ کپ کے موقع پر سہیل تنویر کے زخمی ہونے کے بعد، خان کو ان کے متبادل کے طور پر بلایا گیا تھا، ان کا بین الاقوامی کرکٹ کا کوئی تجربہ نہیں تھا۔ خان ٹورنامنٹ میں نہیں کھیلے، اور بعد میں اپریل 2011ء میں ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ میں ڈیبیو کیا۔ اسی سال جون میں خان نے انگلش ڈومیسٹک کرکٹ میں لنکاشائر کاؤنٹی کرکٹ کلب کی نمائندگی کی۔ اگست 2018ء میں، وہ ان 33 کھلاڑیوں میں سے ایک تھے جنہیں پاکستان کرکٹ بورڈ نے 2018-19ء کے سیزن کے لیے سینٹرل کنٹریکٹ سے نوازا تھا۔ [4] [5] ستمبر 2019ء میں، انہیں 2019-20ء قائد اعظم ٹرافی ٹورنامنٹ کے لیے خیبر پختونخوا کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [6] [7]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Junaid Khan's profile on Sportskeeda
  2. "Pak bowler Junaid's action questionable: Basit Ali – Rediff.com Cricket". Rediff.com. 2011-02-16. اخذ شدہ بتاریخ 02 جون 2016. 
  3. Ali، Liaqat (15 October 2014). "Rookie spinner Yasir Shah in preliminary squad". Khaleej Times. اخذ شدہ بتاریخ 29 ستمبر 2022. Yasir, a cousin to fast-bowler Junaid, is a fast-emerging spinner on domestic level. 
  4. "PCB Central Contracts 2018–19". Pakistan Cricket Board. اخذ شدہ بتاریخ 06 اگست 2018. 
  5. "New central contracts guarantee earnings boost for Pakistan players". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 06 اگست 2018. 
  6. "PCB announces squads for 2019-20 domestic season". Pakistan Cricket Board. اخذ شدہ بتاریخ 04 ستمبر 2019. 
  7. "Sarfaraz Ahmed and Babar Azam to take charge of Pakistan domestic sides". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 04 ستمبر 2019.