حیدر العبادی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
حیدر العبادی
حيدر العبادي
Haider al-Abadi January 2015.jpg
پچہترویں وزیر اعظم عراق
دفتر سنبھالا
8 ستمبر 2014ء
صدر Fuad Masum
پیشرو نوری المالکی
قائد حزب الدعوۃ الاسلامیۃ
دفتر سنبھالا
8 September 2014
پیشرو نوری المالکی
نائب قائد حزب الدعوۃ الاسلامیۃ
عہدہ سنبھالا
15 جنوری 2007ء – 8 ستمبر 2014ء
پیشرو نوری المالکی
جانشین Baha Araji
وزیر مواصلات
عہدہ سنبھالا
1 ستمبر 2003ء – 1 جون 2004ء
پیشرو Muhammad Saeed al-Sahhaf
جانشین محمد علی حکیم
ذاتی تفصیلات
پیدائش حیدر جواد کاظم العبادی
1952 (عمر 65–66 سال)[1]
بغداد، مملکت عراق
قومیت عراقی
سیاسی جماعت حزب الدعوۃ الاسلامیۃ
دیگر سیاسی
وابستگیاں
State of Law Coalition
اولاد 3
مادر علمی University of Technology
University of Manchester
مذہب شیعہ
ویب سائٹ www.h-alabadi.net

حیدر جواد العبادی (پیدائش: 25 اپریل) ایک عراقی سیاستدان جو 2014ء سے عراق کے وزیر اعظم ہیں، اس سے قبل وہ صدام حسین کے بعد وجود میں آنے والی پہلی حکومت میں 2003ء سے 2004ء تک وزیر مواصلات بھی رہے۔ حزب الدعوۃ الاسلامیۃ کے نمایاں اراکین میں ان کا شمار ہوتا ہے، داعش کے مقابلہ میں ناکامی کی وجہ سے نوری المالکی کو ہٹا کر صدر فواد معصوم نے 11 اگست 2014ء کو انھیں عراق کی وزارت عظمی سپرد کی،[2] جسے 8 ستمبر 2014ء کو عراقی پارلیمان نے منظوری دے دی۔[3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Harding، Luke (11 August 2014)۔ "Haider al-Abadi: from exile in Britain to Iraq's next prime ministerدی گارجین۔ http://www.theguardian.com/world/2014/aug/11/haider-al-abadi-profile-iraqs-next-prime-minister۔ اخذ کردہ بتاریخ 22 January 2015۔ 
  2. Pearson، Mike؛ Yan، Holly؛ Coren، Anna۔ "Iraq's Nuri al-Maliki digs in as President nominates new Prime Minister"۔ CNN۔ اخذ کردہ بتاریخ 8 September 2014۔ 
  3. "Iraqi Parliament approves the new government of Abadi and the =8 September 2014"۔