کامران مرزا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کامران مرزا
Humayun finally defeated his rebellious brother Kamran in Kabul in 1553.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1512  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
کابل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 5 اکتوبر 1557 (44–45 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
مکہ،  وایالت حبش،  وسلطنت عثمانیہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
والد ظہیر الدین محمد بابر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں والد (P22) ویکی ڈیٹا پر
بہن/بھائی
گلبدن بیگم،  وگل چہرہ بیگم،  وفخر النسا،  والتون بشیک،  وعسکری مرزا،  ونصیر الدین محمد ہمایوں،  ومرزا ہندال  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں بہن/بھائی (P3373) ویکی ڈیٹا پر
خاندان تیموری خاندان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں خاندان (P53) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان فارسی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر

کامران مرزا (Kamran Mirza) مغلیہ سلطنت کے بانی مغل شہنشاہ ظہیرالدین بابر کا دوسرا بیٹا تھا۔ کامران مرزا بابر کی بیوی گل رخ بیگم کے ہاں کابل میں پیدا ہوا۔ وہ مغل تخت کے وارث نصیرالدین ہمایوں کا سوتیلا بھائی تھا، جبکہ بابر کا تیسرا بیٹا عسکری مرزا اس کا سگا بھائی تھا۔

کامران بارہ دری[ترمیم]

کامران مرزا کے 1540ء میں تعمیر کردہ اہم تعمیراتی ڈھانچہ دریائے راوی، لاہور، پاکستان میں آج بھی موجود ہے جسے کامران کی بارہ دری کہا جاتا ہے۔

جلاوطنی اور موت[ترمیم]

اگرچہ ہمایوں پر اپنے باغی بھائی کو سزائے موت دینے پر دباؤ تھا، لیکن وہ اس بات پر قائل ہو گیا کہ اسے کچھ سزا دی جائے جس پر اسے اندھا کر دیا گیا۔ اس کے بعد ہمایوں نے حج کے لیے کامران کو مکہ روانہ کر دیا جہاں 1557ء میں وہ انتقال کر گیا۔