کرنی ماتا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کرنی
Incarnation of درگا
La statue de la déesse entourée des rats sacrés (Temple de Karni Mata) (8423510937).jpg
دیگر نامردھو ماں
ملحقہCharans and راجپوتs
مسکنWestern Rajasthan(مارواڑ and بیکانیر)
ہتھیارTrident
سواریببر شیر and flanked by عقاب


کرنی ماتا یا کرنی بائی یا ناری بائی (2 اکتوبر 1387ء تا 23 مارچ 1538ء)[1] چرن قبیلہ کی ایک جنگجو عورت تھی جس کا مذہب ہندو تھا۔ وہ اپنے زمانہ میں بہت مشہور تھی۔ اسے شری کرنی جی مہاراج بھی کہا جاتا ہے۔ اس کے ماننے والے اسے درگا کا اوتار کہتے ہیں اس کی پوجا کرتے ہیں۔ وہ بیکانیر اور جودھ پور شاہی خاندانوں کی دیوی بھی ہے۔ اس کی زندگی بہت خوشحال تھی اور تا عمر لوگ اکی عزت کرتے اور اس سے مشورہ کیا کرتے تھے۔ جودھ پور اور بیکانیر کے مہاراجاوں کی درخواست پت اس نے بیکانیر قلعہ اور مہیندر گڑھ قلعہ کی بنیاد رکھی۔ یہ دونوں علاقہ کے دو سب سے اہم قلعے تھے۔ اس کا سب سے مشہور مندر راجستھان کے بیکانیر کے قریب ایک گاوں میں ہے۔ یہ مندر اس وقت بنایا گیا جب وہ پر اسرار طریقے سے اپنے گھر سے غائب ہو گئی۔ یہ مندر سفید چوہوں کے لیے بھی مشہور ہے۔ اس مندر سے سفید چوہوں کو مقدس مانا جاتا ہے اوت مندر کے اندر ان کی حفاظت کا انتطام بھی کہا گیا ہے۔ اس کے علاوہ اس کا ایک اور مندر ہے جو اس کی زندگی میں ہی بن گیا تھا مگر وہاں اس کا مجسمہ، بت یا کوئی تصویر نہیں ہے۔ کرنی ماتا کو داڑھی والی ڈوکری بھی کہا جاتا ہے۔

حالات زندگی[ترمیم]

روایات کے مطابق کرنی ماتا ستیکھا گاوں کے دیپوجی چرن کی اہلیہ تھی۔ بعد میں اس نے کہا کہ اسے اپنے شوہر یا ازدواجی زندگی میں کوئی دلچسپی نہیں ہے، شوہر نے ابتدا میں اس کی بات کو ہلکے میں لیا یہ سوچ کر کہ وقت آنے پر وہ سمجھ جائے گی اور سب ٹھیک ہو جائے گا مگر مرنی نے اپنی چھوٹی بہن گلاب سے اپنے شوہر کی شادی کردی اور خود تنہا ہرنے لگی مگر زندگی بھر اسے شوہر کا تعاون حاصل رہا۔ اس کا شوہر 1454ء کو وفات پا گیا۔



حوالہ جات[ترمیم]

  1. Gahlot، Sukhvir Singh۔ Rajasthan directory & who's who۔ Hindi Sahitya Mandir۔ صفحہ 20۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)