دیوناگری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دیوناگری
Devanagari
Chandas typeface specimen.svg
دیوناگری رسمِ خط (مصوتے اوپر، مصمتے نیچے) چھنداس نویسہ میں
قِسم ابوگیدا
زبانیں ہندی، مراٹھی، نیپالی، پالی، کونکنی، بوڈو، میتھلی، سندھی اور سنسکرت۔ پنجابی اور گجراتی کے لیے پہلے مستعمل تھا۔
مدّتِ وقت پہلی صدی عیسوی تا حال[1][2][3]
بنیادی نظام
براہمی
طفلی نظام گجراتی
موڈی
متعلقہ نظام گرومکھی، نندی ناگری
آیزو 15924 Deva, 315
سمت بائیں سے دائیں طرف
یونیکوڈ عرف Devanagari
یونیکوڈ رینج U+0900–U+097F دیوناگری,
U+A8E0–U+A8FF دیوناگری Extended,
U+1CD0–U+1CFF Vedic Extensions
نوٹ: اس صفحہ پر بین الاقوامی اصواتی ابجدیہ صوتی علامات شامل ہو سکتی ہیں۔
دیوناگری

دیوناگری (دیوناگری: देवनागरी، لاطینی: Devanagari) دراصل دیو (देव) اور ناگری (नागरी) کا مرکب ہے۔ اسے ناگری (नागरी) بھی کہا جاتا ہے۔ یہ ایک خطاط یا حروف تہجی کی ایک قسم ہے جس میں دنیا کی بہت سے زبانیں (مثلاً ہندی، مراٹھی، نیپالی وغیرہ) لکھی جاتی ہیں۔ یہ دنیا کے پانچ بڑے رسم الخط میں سے ایک ہے۔

اکشر مالا (حروف تہجی)[ترمیم]

ہمخوان[ترمیم]

درج ذیل ٹیبل میں دیوناگری کے حروف اردو حروف کے ساتھ اور بین الاقوامی حروف کے ساتھ دیے گئے ہیں:

sparśa
(Plosive)
anunāsika
(Nasal)
antastha
(Approximant)
ūṣma/saṃghaṣhrī
(Fricative)
Voicing aghoṣa ghoṣa aghoṣa ghoṣa
Aspiration alpaprāṇa mahāprāṇa alpaprāṇa mahāprāṇa alpaprāṇa mahāprāṇa
kaṇṭhya
(Guttural)
ka
/k/
کَ
kha
/kʰ/
کھَ
ga
/ɡ/
گَ
gha
/ɡʱ/
گھَ
ṅa
/ŋ/
اَنگَ
دیوناگری ha
/ɦ/
هَ، حَ
tālavya
(حنکی حروف صحیح)
ca
/c, t͡ʃ/
چَ
cha
/cʰ, t͡ʃʰ/
چھَ
ja
/ɟ, d͡ʒ/
جَ
jha
/ɟʱ, d͡ʒʱ/
جھَ
ña
/ɲ/
نِیاں
ya
/j/
ی
śa
/ɕ, ʃ/
ش
mūrdhanya
(Retroflex)
ṭa
/ʈ/
ٹ
ṭha
/ʈʰ/
ٹھ
ḍa
/ɖ/
ڈ
ḍha
/ɖʱ/
ڈھ
ṇa
/ɳ/
ڻ، ݨ، ڼ، نڑ
ra
/r/
ر
ṣa
/ʂ/
س، ش
dantya
(Dental)
ta
/t̪/
ت، ط
tha
/t̪ʰ/
تھ
da
/d̪/
د
dha
/d̪ʱ/
دھ
na
/n/
ن
la
/l/
ل
sa
/s/
س، ص، ث
oṣṭhya
(Labial)
pa
/p/
پ
pha
/pʰ/
پھ
ba
/b/
ب
bha
/bʱ/
بھ
ma
/m/
م
va
/w, ʋ/
و

حروف علت[ترمیم]

آزاد شکل رومن / اردو प اعراب کے ساتھ آزاد شکل رومن / اردو प اعراب کے ساتھ
kaṇṭhya
(حلقی)
a / اَ ā / آ पा
tālavya
(حنکی)
i / اِ पि ī / اِ یْ पी
oṣṭhya
(لب)
u / اُ पु ū / اُوْ पू
mūrḍhanya
(خمیدہ)
पृ पॄ
dantya
(سنویہ)
पॢ पॣ
kaṇṭhatālavya
(حنکی-حلقی)
e / اے पे ai / اَے पै
kaṇṭhoṣṭhya
(لب-حلقی)
o / او पो au / اَوْ पौ

حروف صامت[ترمیم]

sparśa
(سانس خارج)
anunāsika
(انفی)
antastha
(متصل)
ūṣma/saṃghashrī
(سانس کی رگڑ)
صدا → aghoṣa ghoṣa aghoṣa ghoṣa
سانس کھینچ → alpaprāṇa mahāprāṇa alpaprāṇa mahāprāṇa alpaprāṇa mahāprāṇa
kaṇṭhya
(حلقی)
ka
/k/
ک
kha
/kʰ/
کھ
ga
/ɡ/
گ
gha
/ɡʱ/
گھ
ṅa
/ŋ/
ن
ha
/ɦ/
ه، ح
tālavya
(حنکی)
ca
/c, t͡ʃ/
چ
cha
/cʰ, t͡ʃʰ/
چھ
ja
/ɟ, d͡ʒ/
ج
jha
/ɟʱ, d͡ʒʱ/
جھ
ña
/ɲ/
ن
ya
/j/
ی
śa
/ɕ, ʃ/
ش
mūrdhanya
(خمیدہ)
ṭa
/ʈ/
ٹ
ṭha
/ʈʰ/
ٹھ
ḍa
/ɖ/
ڈ
ḍha
/ɖʱ/
ڈھ
ṇa
/ɳ/
ن
ra
/r/
ر
ṣa
/ʂ/
dantya
(سنویہ)
ta
/t̪/
ت، ط
tha
/t̪ʰ/
تھ
da
/d̪/
د
dha
/d̪ʱ/
دھ
na
/n/
ن
la
/l/
ل
sa
/s/
س، ص، ث
oṣṭhya
(لب)
pa
/p/
پ
pha
/pʰ/
پھ
ba
/b/
ب
bha
/bʱ/
بھ
ma
/m/
م
va
/ʋ/
و

دیوناگری کے ہندسے (گنتی)[ترمیم]

دیوناگری گنتی
0 (عدد) 1 (عدد) 2 (عدد) 3 (عدد) 4 (عدد) 5 (عدد) 6 (عدد) 7 (عدد) 8 (عدد) 9 (عدد)
0 1 2 3 4 5 6 7 8 9

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Isaac Taylor (1883)، History of the Alphabet: Aryan Alphabets, Part 2، Kegan Paul, Trench & Co، صفحہ 333، آئی ایس بی این 978-0-7661-5847-4، "... In the Kutila this develops into a short horizontal bar, which, in the Devanagari, becomes a continuous horizontal line ... three cardinal inscriptions of this epoch, namely, the Kutila or Bareli inscription of 992, the Chalukya or Kistna inscription of 945, and a Kawi inscription of 919 ... the Kutila inscription is of great importance in Indian epigraphy, not only from its precise date, but from its offering a definite early form of the standard Indian alphabet, the Devanagari ..." 
  2. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ gazett نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  3. Richard Salomon (2014), Indian Epigraphy, Oxford University Press, ISBN 978-0-19-535666-3, pages 33-47