کلدیپ یادو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کلدیپ یادو
ذاتی معلومات
پیدائش14 دسمبر 1994ء (عمر 25 سال)
کانپور، اتر پردیش، بھارت
بلے بازیبایاں ہاتھ
گیند بازیبائیں ہاتھ کے آرتھوڈوکس اسپن
حیثیتگیند بازی
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 288)25 مارچ 2017  بمقابلہ  Australia
آخری ٹیسٹ3 جنوری 2019  بمقابلہ  آسٹریلیا
پہلا ایک روزہ (کیپ 217)23 جون 2017  بمقابلہ  ویسٹ انڈیز
آخری ایک روزہ11 اگست 2019  بمقابلہ  ویسٹ انڈیز
ایک روزہ شرٹ نمبر.23
پہلا ٹی20 (کیپ 69)9 جولائی 2017  بمقابلہ  ویسٹ انڈیز
آخری ٹی2010 فروری 2019  بمقابلہ  نیوزی لینڈ
ٹی20 شرٹ نمبر.23
قومی کرکٹ
سالٹیم
2012ممبئی انڈینس
2014–presentکولکاتا نائٹ رائیڈرز (اسکواڈ نمبر. 23)
2014–presentاتر پردیش کرکٹ ٹیم
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ کرکٹ ایک روزہ بین الاقوامی ٹوئنٹی20 بین الاقوامی فرسٹ کلاس کرکٹ
میچ 6 43 18 30
رنز بنائے 51 92 20 846
بیٹنگ اوسط 8.50 13.14 20.00 24.88
100s/50s 0/0 0/0 0/0 1/6
ٹاپ اسکور 26 19 16 117
گیندیں کرائیں 989 2,238 405 5,774
وکٹ 24 96 35 117
بالنگ اوسط 24.12 21.14 12.97 30.01
اننگز میں 5 وکٹ 2 1 1 6
میچ میں 10 وکٹ 0 0 0 0
بہترین بولنگ 5/57 5/57 5/24 6/79
کیچ/سٹمپ 3/– 5/– 7/– 13–
ماخذ: ESPNcricinfo، 11 اگست 2019

کلدیپ یادو بھارت کے کرکٹر ہیں۔ ان کی ولادت 14دسمبر 1994ء کو کانپور اتر پردیش میں ہوئی۔ وہ بھارت قومی کرکٹ ٹیم اور اتر پردیش کرکٹ ٹیم کے لیے کھیلتے ہیں۔ انڈین پریمیئر لیگ میں وہ کولکاتا نائٹ رائیڈرز کا حصہ ہیں۔ بنیادی طور انہوں نے بحیثیت تیز گیندباز کھیلنا شروع کیا مگر بعد میں وہ بائی ہاتھ کے آرتھوڈوکس اسپن گیند باز بن گئے۔ انہوں نے 2014 انڈر 19 کرکٹ عاملی کپ میں بھارت قومی انڈر۔19 کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کی اور اسکاٹ لینڈ کرکٹ ٹیم کے خلاف ہیٹرک بنائی۔ تب ہی سے وہ لوگوں کی توجہ کا مرکز بن گئے۔ وہ بھونیشور کمار کے بعد دوسرے بھالر گیند باز اور عمران طاہر اور اجنتا مینڈس کے بعد تیسرے اسپن گیند باز ہیں جنہوں کرکٹ کے تینوں فارمیٹ میں ایک ہی میچ میں 5 وکٹ لیے ہیں۔[1]

گھریلو کرکٹ[ترمیم]

کلدیپ یادو کی ولادت کانپور، اتر پردیش، بھارت میں ہوئی۔ ان کے والد اینٹ کی چمنی کے مالک ہیں۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے انکشاف کیا کہ ان کے والد نے ہی انہیں کرکٹ کھیلنے پر ابھارا اور انہیں کوچ (کپل پانڈے) کی شاگردی میں دے دیا۔ کرکٹ کی دنیا میں وسیم اکرم اور ظہیر خان سے متاثر ہیں اور اسی وجہ سے بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز بننا چاہتے تھے۔ مگر ان کے کوچ نے انہیں مشورہ دیا کہ وہ اسپن گیند بازی میں کمال کرسکتے ہیں لہذا انہوں نے اسی کو اپنا لیا۔ اسپن گیند بازی کے لیے انہوں نے شین وارن کو دیکھنا شروع کیا اور ان کی کئی ویڈیو دیکھیں۔

میں شین وارن کی ویڈیو دیکھا کرتا تھا۔ وہ گیند کو کیسے پکڑتے ہیں، کتنی دور گیند پھینکتے ہیں۔ مگر ان کی ویڈیو سے بہت سیکھتا تھا

--کلدیپ یادو ایک انٹرویو میں

زندگی میں ایک وقت ایسا بھی آیا جب انہوں نے کرکٹ چھوڑے کا فیصلہ کر لیا تھا۔ واقعہ یہ تھا کہ انہیں اترپردیش انڈر 15 ٹیم میں ان کا انتخاب نہیں ہوا تھا۔ انہوں نے خود کشی جیسے اقدامات کے بارے میں سوچنا شروع کر دیا تھا۔[2][3][4] 2012ء میں انہیں ممبئی انڈینس نے خریدا اور 2014ء میں وہ کولکاتا نائٹ رائیڈرز کا حصہ ہو گئے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Kuldeep Yadav biography". Sportskeeda. اخذ شدہ بتاریخ 12 فروری 2019. 
  2. "Kuldeep wanted to become a pacer, says his coach Kapil Dev Pandey". xtratime.in. 25 مارچ 2017. 
  3. "Kuldeep wanted to be an Akram; nothing doing said coach Kapil Pandey". Mid Day. 26 مارچ 2017. 
  4. "When a young Kuldeep Yadav thought of suicide after cricket selection snub". HindustanTimes. 12 نومبر 2017. 

بیرونی روابط[ترمیم]