ادارۂ ثقافت اسلامیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search


ادارۂ ثقافت اسلامیہ پاکستان میں واقع اسلامی علوم کاخود مختار غیر سرکاری اشاعتی ادارہ ہے۔ یہ ادارہ لاہور میں 1950ء میں اس غرض سے قائم کیا گیا کہ اسلامی تہذیب و ثقافت کے مختلف پہلوؤں کا علمی و تحقیقی مطالعہ کیا جائے۔ اس ادارے کے پہلے ناظم اعلیٰ خلیفہ عبدالحکیم تھے۔ ڈاکٹر صاحب مغربی و یورپی فلسفے کے ساتھ ساتھ اسلامی فلسفے پر بھی عبور رکھتے تھے۔ ادارے کے ارکان کے انتخاب میں اس وقت اس امر کا خیال رکھا گیا کہ وہ قدیم و جدید علوم پر قدرت کاملہ رکھتے ہوں۔ چنانچہ مولانا محمد حنیف ندوی، مولانا محمد جعفر شاہ پھلواری، مولان مظہر الدین صدیقی، ڈاکٹر محمد رفیع الدین، جناب بشیر احمد ڈار، پروفیسر محمد سرور، رئیس احمد جعفری اور شاہد حسین رزاقی جیسے جید علما کا انتخاب کیا گیا۔ خلیفہ عبدالحکیم کے بعد محمد شریف کو نظامت کے فرائض سونپے گئے اس کے بعد شیخ محمد اکرام نے اس ادارے کی صدارت سنبالی۔ 1973 میں پروفیسر محمد سعید اس ادارے کے ناظم مقرر ہوئے۔ جب کہ کچھ عرصہ ڈاکٹر وحید قریشی بھی اس ادارے کے ناظم رہے۔ اس ادارے کی جانب سے سینکڑوں کتابیں شائع ہو چکی ہیں۔ جن کا موضوع اسلامی و پاکستانی ثقافت و تہذیب اور تاریخ بر عظیم پاک و ہند ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔