اعزاز چیمہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اعزاز چیمہ
ذاتی معلومات
مکمل ناماعزاز بن الیاس چیمہ
پیدائش5 ستمبر 1979ء (عمر 42 سال)
سرگودھا, پنجاب، پاکستان
عرفچیمہ
قد6 فٹ 0 انچ (1.83 میٹر)
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا میڈیم فاسٹ گیند باز
حیثیتگیند باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 205)1 ستمبر 2011  بمقابلہ  زمبابوے
آخری ٹیسٹ30 جون 2012  بمقابلہ  سری لنکا
پہلا ایک روزہ (کیپ 187)8 ستمبر 2011  بمقابلہ  زمبابوے
آخری ایک روزہ28 اگست 2012  بمقابلہ  آسٹریلیا
پہلا ٹی20 (کیپ 42)16 ستمبر 2011  بمقابلہ  آسٹریلیا
آخری ٹی2028 اگست 2012  بمقابلہ  انگلینڈ
قومی کرکٹ
سالٹیم
2001/02-2014/15پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز کی کرکٹ ٹیم
2003/04لاہور
2004/05لاہور وائٹس
2005/06-2015/16لاہور ایگلز
2005-2013لاہور شالیمار
2009-2015لاہور لائینز
2015لاہور بلیوز
2016-تاحالکوئٹہ گلیڈی ایٹرز
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ بین الاقوامی فرسٹ کلاس کرکٹ لسٹ اے کرکٹ
میچ 7 14 93 60
رنز بنائے 1 26 2,449 105
بیٹنگ اوسط 8.66 8.04 9.54
100s/50s 0/0 0/0 0/0
ٹاپ اسکور 1* 9* 33 13*
گیندیں کرائیں 1200 658 14,341 2,745
وکٹ 20 23 352 90
بالنگ اوسط 31.90 25.78 21.48 27.21
اننگز میں 5 وکٹ 0 0 19 2
میچ میں 10 وکٹ 0 0 5
بہترین بولنگ 4/24 4/43 7/24 5/37
کیچ/سٹمپ 1/– 2/- 18/– 10/–
ماخذ: CricketArchive، 11 December 2013
اعزاز چیمہ
میڈل ریکارڈ
Men's کرکٹ
نمائندگی Flag of Pakistan.svg پاکستان
ایشیائی کھیل
Bronze medal – third place ایشیائی کھیل 2010 Team

اعزاز بن الیاس چیمہ (پیدائش 5 ستمبر 1979 سرگودھا، پنجاب) ایک پاکستانی سابق کرکٹر ہے جس نے سات ٹیسٹ میچ کھیلے، پانچ اننگز میں آؤٹ ہوئے بغیر ایک بھی رن بنایا۔

کیرئیر

نومبر میں، چیمہ گوانگزو، چین میں ہونے والے ایشین گیمز میں اس ٹیم کا حصہ تھے جس نے سری لنکا کو تیسری پوزیشن کے پلے آف میں شکست دے کر کانسی کا تمغہ جیتا تھا۔

بین الاقوامی پیش رفت

جب پاکستان نے ستمبر میں زمبابوے کا ایک ٹیسٹ تین ون ڈے اور دو ٹی ٹوئنٹی میچوں کے لیے دورہ کیا تو قومی سلیکٹرز نے ناتجربہ کار کھلاڑیوں کو موقع دینے کا فائدہ اٹھایا۔ فرنٹ لائن بولرز وہاب ریاض اور عمر گل کو آرام دیا گیا اور چیمہ کو اسکواڈ کا حصہ منتخب کیا گیا۔ 1 ستمبر کو اس نے زمبابوے کے خلاف اپنا ٹیسٹ ڈیبیو کیا۔ میچ میں پاکستان کے تیز گیند باز بین الاقوامی سطح پر ناتجربہ کار تھے، ان کے درمیان صرف ایک ٹیسٹ کیپ تھی۔ پاکستان نے میچ جیت لیا اور کوچ وقار یونس نے چیمہ کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ انہوں نے "آگ اور جارحیت کے ساتھ گیند بازی کی"۔ ان کی پہلی وکٹ بولر رے پرائس کی تھی۔ چیمہ نے میچ میں 103 رنز دے کر آٹھ وکٹیں حاصل کیں، جو کہ ٹیسٹ ڈیبیو پر پاکستانی کھلاڑی کی دوسری بہترین باؤلنگ ہے۔ پاکستان نے بعد کی ون ڈے سیریز 3-0 سے جیت لی۔ چیمہ نے سیریز میں اپنا ڈیبیو کیا اور ان کے 3/36 کے اعداد و شمار اپنے پہلے ون ڈے میں پاکستانی باؤلر کی طرف سے مشترکہ چوتھے بہترین تھے۔ چیمہ سیریز میں 4/43 کے بہترین اعداد و شمار کے ساتھ آٹھ آؤٹ کے ساتھ سب سے زیادہ وکٹ لینے والے بولر تھے۔ تین میچوں کی دور سیریز میں کسی پاکستانی باؤلر کے لیے سیریز کے لیے ان کا دوسرا سب سے زیادہ وکٹ تھا۔

ایشیا کپ 2012

2012 کے ایشیا کپ میں اعزاز نے بین الاقوامی کرکٹ کے اپنے بہترین دن دیکھے۔ چیمہ نے ایشیا کپ کے فائنل میں آخری اوور کیا اور کامیابی سے 9 رنز کا دفاع کیا جو اس اوور میں درکار تھے۔ انہوں نے میچ سے قبل شکیب الحسن کی اہم وکٹ بھی حاصل کی تھی۔

گھریلو کیریئر

وہ 2017-18 قائد اعظم ٹرافی میں نو میچوں میں مجموعی طور پر 60 وکٹیں لینے والے سب سے زیادہ وکٹ لینے والے بولر تھے۔ وہ 2018-19 قائداعظم ون ڈے کپ میں لاہور بلیوز کے لیے سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے کھلاڑی بھی تھے، سات میچوں میں دس آؤٹ ہوئے۔ وہ 2018-19 قائد اعظم ٹرافی میں دس میچوں میں 59 وکٹیں لے کر سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے بولر تھے۔

حوالہ جات[ترمیم]