پنجاب، پاکستان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دیگر استعمالات کے لیے، دیکھیے پنجاب۔
پنجاب
صوبہ
Nighttime Badshahi Mosque.jpg
Darawar Fort.jpgFront Elevation of Noor Mahal.jpg
Splendid Shrine of Hazrat Baha-ud-din Zakariya.jpgTome of Shah Rukn-e-Alam.jpg
Naulakha Pavilion in Lahore Fort.jpg
پنجاب
پرچم
پنجاب
مہر
پنجاب، پاکستان کا محل وقوع
پنجاب، پاکستان کا محل وقوع
متناسقات: 31°N 72°E / 31°N 72°E / 31; 72متناسقات: 31°N 72°E / 31°N 72°E / 31; 72
ملک پاکستان Flag of پاکستان
قیام 1 جولائی 1970ء
پایہ تخت لاہور
سب سے بڑا شہر لاہور
حکومت
 • قسم صوبائی
 • فہرست گورنران پاکستان چودھری پرویز الٰہی قائم مقام
 • وزیر اعلیٰ سردار عثمان بزدار
 • چیف سیکریٹری زاہد سعید
 • مقننہ پنجاب صوبائی اسمبلی
 • عدالت عدلیہ عدالت عالیہ لاہور
رقبہ
 • کل 205,344 کلو میٹر2 (79,284 مربع میل)
آبادی (2017)
 • کل 110,012,442
 • کثافت 540/کلو میٹر2 (1,400/مربع میل)
منطقۂ وقت پاکستان کا معیاری وقت (UTC+5)
آیزو 3166 رمز PK-PB
پاکستان کی زبانیں

دیگر زبانیں: پشتو زبان، بلوچی زبان، سندھی زبان، سرائیکی زبان
کھیلوں کی اہم ٹیمیں لاہور قلندرز
ملتان سلطانز
لاہور لائینز
راولپنڈی ریمز
سیالکوٹ سٹالینز
بہاولپور سٹیگز
ملتان ٹائیگرز
فیصل آباد وولوز
اسمبلی 183
پنجاب اسمبلی 371
ڈویژن 10
اضلاع 36
تحصیلیں 146
یونین کونسلیں 7602
ویب سائٹ www.punjab.gov.pk
پنجاب
پنجاب
Punjab-Map.PNG

پنجاب پاکستان کا ایک صوبہ ہے جو آبادی کے لحاظ سے پاکستان کا سب سے بڑا صوبہ ہے۔ پنجاب میں رہنے والے لوگ پنجابی کہلاتے ہیں۔ پنجاب جنوب کی طرف سندھ، مغرب کی طرف خیبرپختونخواہ اور بلوچستان،‎شمال کی طرف کشمیر اور اسلام آباد اور مشرق کی طرف ہندوستانی پنجاب اور راجستھان سے ملتا ہے۔ پنجاب میں بولی جانے والی زبان بھی پنجابی کہلاتی ہے۔ پنجابی کے علاوہ وہاں اردو، سرائیکی اور رانگڑی بھی بولی جاتی ہے۔ پنجاب کا دار الحکومت لاہور ہے۔


پنجاب فارسى زبان كے دو لفظوں پنج بمعنی پانچ(5) اور آب بمعنی پانی سے مل کر بنا ہے۔
ان پانچ درياؤں كے نام ہيں:

پنجاب کا صوبائی دار الحکومت لاہور، پاکستان کا ایک ثقافتی، تاریخی اور اقتصادی مرکز ہے جہاں ملک کی سنیما صنعت اور اس کے فیشن کی صنعت ہے۔

تہوار[ترمیم]

عید الفطر، عید الاضحی، شبِ برات اور عید میلاد النبی پنجاب کے علاوہ پورے پاکستان میں خاص تہوار ہیں اور پورے جوش و خروش سے منائے جاتے ہیں۔ ان تہواروں کے علاوہ رمضان کا پورا مہینہ بھی خاص اہمیت رکھتا ہے۔ مگر بسنت ایک ایسا تہوار ہے جو پنجاب سے منسلک ہے۔ یہ تہوار بہار کے موسم کو خوش آمدید کہنے کا ایک خاص طریقہ ہے۔ جس میں لوگ پتنگ اڑا کر اور پنجاب کے خاص کھانے بن ا کر اور کھا کراس تہوار کو مناتے ہیں۔ مگر بہت سے لوگ بسنت منانے کے خلاف ہیں کیونکہ اس کی وجہ سے کئی معصوم لوگ اپنی قیمتی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔

جغرافیہ[ترمیم]

پنجاب رقبے کے لحاظ سے پاکستان کا دوسرا بڑا صوبہ ہے جبکہ آبادی کے لحاظ سے پہلا۔ پنجاب کی صوبائی سرحد گلگت بلتستان کے سوا تمام دیگر پاکستانی علاقوں اور صوبوں سے ملتی ہے۔ پنجاب کے شمال میں وفاقی دارالحکومت،اسلام آباد، شمال مغرب میں صوبہ خیبر پختونخوا ہے ،مغرب میں قبائلی علاقوں کا چھوٹا سا حصہ،جنوب میں صوبہ سندھ، جنوب مغرب میں بلوچستان ہے۔ پنجاب کا صوبائی دار الحکومت لاہور ہے جو برطانوی دور کے بڑے پنجاب کا بھی دار الحکومت رہا ہے۔ پنجاب کی جغرافیہ میں سب سے خاص بات یہ ہے کہ پاکستان کے پانچوں بڑے دریاؤں کا گھر ہے۔ وہ پانچ دریا یہ ہیں:

اس کے علاوہ اس خطے میں ریگستان بھی موجود ہیں جو پاک بھارت سرحد کے قریب ہیں خاص طور پر بھارتی صوبے راجستھان کے پاس۔ دیگر ریگستانوں میں صحرائے تھل اور صحرائے چولستان شامل ہیں۔

موسم[ترمیم]

فروری سے پہلے پنجاب میں بہت سردی ہوتی ہے اور پھر اس مہینے سے موسم میں تبدیلی آنا شروع ہو جاتی ہے اور موسم خوشگوار ہونے لگتا ہے۔ فروری سے اپریل تک بہار کا موسم رہتا ہے اور پھر گرمی شروع ہونے لگتی ہے۔

گرمی کا موسم مئی سے شروع ہوتا ہے تو اکتوبر کے آخر تک رہتا ہے۔ جون اور جولائی سب سے زیادہ گرم مہینے ہیں۔ سرکاری معلومات کے مطابق پنجاب میں C° 46 تک درجہ حرارت ہوتا ہے مگر اخبارات کی معلومات کے مطابق پنجاب میںC°51 تک درجہ حرارت پہنچ جاتا ہے۔ سب سے زیادہ گرمی کا ریکارڈ ملتان میں جون کے مہینے میں قلمبند کیا گیا جب عطارد کا درجہ حرارت nbsp; C°54 سے بھی آگے بڑھ گیا تھا۔ اگست میں گرمی کا زور تھوڑا ٹوٹ جاتا ہے اور پھر اکتوبر کے بعد پنجاب میں شدید سردی کا موسم شروع ہوجاتا ہے۔

اضلاع[ترمیم]

ضلع رقبہ مربع کلومیٹر آبادی بمطابق 1998ء آبادی کثافت افراد فی مربع کلومیٹر
اٹک 6,857 1,274,935 186
اوکاڑا 4,377 2,232,992 510
بہاول نگر 8,878 2,061,447 232
بہاول پور 24,830 2,433,091 98
بھکر 8,153 1,051,456 129
پاک پتن 2,724 1,286,680 472
ٹوبہ ٹیک سنگھ 3,252 1,621,593 499
جھنگ 8,809 2,834,545 322
جہلم 3,587 936,957 261
چکوال 6,524 1,083,725 166
چنیوٹ - - -
حافظ آباد 2,367 832,980 352
خانیوال 4,349 2,068,490 476
خوشاب 6,511 905,711 139
ڈیرہ غازی خان 11,922 1,643,118 138
راجن پور 12,319 1,103,618 90
راول پنڈی 5,286 3,363,911 636
رحیم یار خان 11,880 3,141,053 264
ساہی وال 3,201 1,843,194 576
سرگودھا 5,854 2,665,979 455
سیال کوٹ 3,016 2,723,481 903
شیخو پورہ 5,960 3,321,029 557
فیصل آباد 5,856 5,429,547 927
قصور 3,995 2,375,875 595
گجرات 3,192 2,048,008 642
گوجرانوالہ 3,622 3,400,940 939
لاہور 1,772 6,318,745 3,566
لودھراں 2,778 1,171,800 422
لیہ 6,291 1,120,951 178
مظفر گڑھ 8,249 2,635,903 320
ملتان 3,720 3,116,851 838
منڈی بہاؤ الدین 2,673 1,160,552 434
میاں والی 5,840 1,056,620 181
نارووال 2,337 1,265,097 541
ننکانہ صاحب --- --- ---
وہاڑی 4,364 2,090,416 479
صوبہ پنجاب 205,345 73,621,290 359

صوبائی حکومت[ترمیم]

Provincial symbols of Punjab (unofficial)
صوبائی جانور جنگلی بھیڑ Ovis vignei bochariensis.jpg
صوبائی پرندہ طاوس( مور) Peacock front02 - melbourne zoo.jpg
صوبائی درخت Tamarix aphylla Tamaris3.jpg
صوبائی پھول Datura Metel DaturaMetel-plant.jpg
صوبائی کھیل Kushti Indo Pak Kushti Championship .jpg

آبادیات اور معاشرہ[ترمیم]

آبادیات
مردم شماری آبادی شہری دیہی

1951ء 20,540,762 3,568,076 16,972,686
1961ء 25,463,974 5,475,922 19,988,052
1972ء 37,607,423 9,182,695 28,424,728
1981ء 47,292,441 13,051,646 34,240,795
1998ء 73,621,290[1] 23,019,025 50,602,265
2012ء 91,379,615[2] 45,978,451 45,401,164


ایوان عکس[ترمیم]


مزید دیکھیے[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]