باب:پنجاب (پاکستان)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پنجاب کا نقشہ

پنجاب پاکستان کا ایک صوبہ ہے جو آبادی کے لحاظ سے پاکستان کا سب سے بڑا صوبہ ہے۔ پنجاب میں رہنے والے لوگ پنجابی کہلاتے ہیں۔ پنجاب جنوب کی طرف سندھ، مغرب کی طرف سرحد اور بلوچستان،‎‎‎شمال کی طرف کشمیر اور اسلام آباد اور مشرق کی طرف ہندوستانی پنجاب اور راجستھان سے ملتا ہے۔ پنجاب میں بولی جانے والی زبان بھی پنجابی کہلاتی ہے۔ پنجابی کے علاوہ وہاں اردو اور سرائیکی بھی بولی جاتی ہے۔ پنجاب کا دارالحکومت لاہور ہے۔ پنجاب فارسى زبان كے دو لفظوں پنج بمعنی پانچ(5) اور آب بمعنی پانی سے مل کر بنا ہے۔اسی وجہ سے نہ ہی پنجابی کوئی قوم ہے اور نہ ہی پنجابی کوئی زبان ہے
ان پانچ درياؤں كے نام دریائے سندھ، دریائے جہلم، دریائے چناب، دریائے راوی اور دریائے ستلج ہيں۔

تاریخی اعتبار سے پنجاب کے تین حصے ہیں ایک یعنی مشرقی حصہ جو کہ بھارت میں ہے اور ایک مغربی حصہ جو پاکستان میں ہے۔ تیسرا جنوبی حصہ پنجاب پاکستان کا سب سے بڑا صو بہ ہے اسی وجہ سے اس کی تقسیم ضروری ہے جبکہ پاکستان کے 35% لوگ سرائیکی زبان سمجھتے اور بولتے بھی ہیں۔جبکہ پنجابی پوٹو ھاری زبانیں بولی اور سمجھی جاتیں ہیں


منتخب مضمون

یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور یا جامعہ ہندسیات و طرزیات، لاہور جس کو عرف عام میں یو ای ٹی، لاہور بھی کہا جاتا ہے، پاکستان کی سب سے پرانی انجینئرنگ یونیورسٹی ہے۔ یہ یونیورسٹی ایک سرکاری جامعہ ہے جسکا سربراہ یعنی چانسلر گورنر پنجاب ہوتا ہے۔ جبکہ انتظامی سربراہ وائس چانسلر ہوتا ہے۔ اس جامعہ میں فی الوقت 6 فیکلٹیز ہیں جن کے تحت 23 ڈیپاٹمنٹس کام کر رہے ہیں۔ ہائیر ایجوکیشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق، یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور ملک کی چند بہترین انجینئرنگ یونیورسٹوں میں سے ایک ہے۔ QS World University Rankings کی جانب سے 2010ء میں یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور کو دنیا میں 281ویں نمبر پر قرار دیا گیا۔

ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) نے معیار اور تحقیق کی بنیاد پر پاکستانی جامعات کی درجہ بندی 2013 کا اعلان کیا ہے۔ جس کے مطابق یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور ہندسیات و طرزیات کے زمرے میں دوسرے نمبر پر ہے۔

منتخب تصویر

بادشاہی مسجد
Credit:

بادشاہی مسجد 1673 میں اورنگزیب عالمگیر نے لاہور میں بنوائی۔ یہ عظیم الشان مسجد مغلوں کے دور کی ایک شاندار مثال ہے اور لاہور شہر کی شناخت بن چکی ہے۔ یہ فیصل مسجد اسلام آباد کے بعد پورے پاکستان کی دوسری بڑی مسجد ہے، جس میں بیک وقت 60 ہزار لوگ نماز ادا کرسکتے ہیں۔ اس مسجد کا انداز تعمیر جامع مسجد دلی سے بہت ملتا جلتا ہے جو کہ اورنگزیب کے والد شاہجہان نے 1648 میں تعمیر کروائی تھی۔

متعلقہ ابواب

چیزیں جو آپ کر سکتے ہیں

Things you can do
  • {{باب:پنجاب (پاکستان)}} کا پنجاب (پاکستان) سے متعلق مضامین میں مزید دیکھیے میں اضافہ کریں
  • درخواست شدہ مضامین: پنجاب (پاکستان) پر ایک درخواست شدہ مضمون بنائیں
  • تصاویر کی ضرورت ہے: لوگ، مزید ...


پنجابی میں ویکیپیڈیا

Wikipedia-logo-v2.svg
ایک گرمکھی پنجابی میں ویکیپیڈیا, موجود ہے۔
ایک شاہ مکھی پنجابی میں ویکیپیڈیا, موجود ہے۔
Punjabi example.svg

منتخب سوانح حیات

قائد اعظم محمد علی جناح (25 دسمبر 1876ء - 11 ستمبر 1948ء) ایک پاکستانی سیاستدان اور آل انڈیا مسلم لیگ کے لیڈر تھے جن کی قیادت میں مسلمانوں نے برطانیہ سے آزادی حاصل کی، یوں پاکستان کا قیام عمل میں آیا اور آپ پاکستان کے پہلے گورنر جنرل بنے۔ سرکاری طور پر پاکستان میں آپ کو قائدِ اعظم یعنی سب سے عظیم رہبر اور بابائے قوم یعنی “قوم کا باپ“ بھی کہا جاتا ہے۔ جناح کا یومِ پیدائش پاکستان میں قومی سطح پر منایا جاتا ہے، اس دن پاکستان میں عام تعطیل ہوتی ہے۔
آغاز میں آپ انڈین نیشنل کانگرس میں شامل ہوئے اور مسلم ہندو اتحاد کے حامی تھے۔ آپ ہی کی کوششوں سے 1916ء میں آل انڈیا مسلم لیگ اور انڈین نیشنل کانگرس میں معاہدہ ہوا۔ کانگرس سے اختلافات کی وجہ سے آپ نے کانگرس پارٹی چھوڑ دی اور مسلم لیگ کی قیادت میں شامل ہو گئے۔ آپ نے خودمختار ہندوستان میں مسلمانوں کے سیاسی حقوق کے تحفظ کی خاطر مشہور چودہ نکات پیش کئے۔ مسلم لیڈروں کے درمیان اختلافات کی وجہ سے آپ انڈیا چھوڑ کر برطانیہ چلے کئے۔ بہت سے مسلمان رہنماؤں خصوصا علامہ اقبال کی کوششوں کی وجہ سے آپ واپس آئے اور مسلم لیگ کی قیادت سنبھالی۔جناح عقائد کی نقطہء نظر سے ایک معتدل مزاج شیعہ مسلمان تھے۔[1][2][3][4][5]
کئی مسلمان رہنماؤں نے جناح کو 1934ء ہندوستان واپسی اور مسلم لیگ کی تنظیمِ نو کے لئے راضی کیا۔ جناح 1940ء کی قراردادِ پاکستان (قرار دادِ لاہور) کی روشنی میں مسلمانوں کے لئے ایک علیحدہ ریاست بنام پاکستان بنانے کے لئے مصروفِ عمل ہوگئے۔1946ء کے انتخابات میں مسلم لیگ نے مسلمانوں کی بیشتر نشستوں میں کامیابی حاصل کی اور جناح نے پاکستان کے قیام کے لئے براہ راست جدوجہد کی مہم کا آغاز کردیا، جس کے ردِ عمل کے طور پر کانگریس کے حامیوں نے جنوبی ایشیاء میں گروہی فسادات کروادئیے۔ مسلم لیگ اور کانگریس کے اتحاد کی تمام تر کوششوں کی ناکامی کے بعد آخر کار برطانیہ کو پاکستان اور بھارت کی آزادی کے مطالبے کو تسلیم کرنا پڑا۔ بحیثیت گورنرجنرل پاکستان، جناح نے لاکھوں پناہ گزینوں کی آبادکاری، ملک کی داخلی و خارجی پالیسی، تحفظ اور معاشی ترقی کے لئے جدوجہد کی۔

(مزید...)

پنجاب (پاکستان) خبریں

زمرہ جات

ویکی منصوبے


موضوعات


  1. ولی نصر مسلمانوں کے آپس کے اختلافات مستقبل میں کیا شکل اختیار کرینگے۔ (ڈبلیو، ڈبلیو، نارٹن، 2006ء)، صفحہ نمبر88-90 ISBN 0-393-32968-2
  2. گلیز کیپل (14 اگست، 2006)۔ "شیعہ طاقت اور مغرب"۔ امریکن پراسپیکٹس۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-09-28۔ 
  3. پاکستان پر لٹکتی مذہبی تلوار موتمر برائے خارجی تعلقات
  4. "غیر مذہب سے شادی، اسلام میں تفرقات, حسین حقانی
  5. پاکستان اور اسرائیل کی حیرت انگیز مطابقت, سہ ماہی مشرق وسطیٰ